امارات کی صومالیہ میں ہوائی جہاز روکے جانے کی شدید مذمت

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th April 2018, 4:56 PM | عالمی خبریں |

دبئی 11اپریل (ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا) متحدہ عرب امارات نے مملکت میں ایک ہوائی جہاز کو صومالیہ کے دارالحکومت موغادیشو میں روکے جانے، طیارے میں سوار اماراتی فوجیوں کو ہراساں کرنے اور اس میں رکھی رقم ضبط کرنے کی شدید مذمت کی ہے۔ذرائع کے مطابق اماراتی حکومت کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ امارات کا ایک ہوائی جہاز 8 اپریل کو موغادیشو کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر روک لیا گیا۔ طیارے پر 47 اماراتی سیکیورٹی اہلکار سوار تھے۔ نہ صرف ہوائی جہاز کو روکا گیا بلکہ اس میں صومالی فوج کے لیے لائی گئی رقم بھی قبضے میں لے لی گئی تھی۔بیان میں کہا گیا ہے کہ گن پوائنٹ پر اماراتی سیکیورٹی اہلکاروں کو روکنا اور ان سے رقم قبضے میں لینا دو طرفہ معاہدوں اور عالمی قوانین کی صریح خلاف ورزی ہے۔اماراتی سرکاری نیوز ایجنسی ’وام‘ کے مطابق موغادیشو ہوائی اڈے پر پیش آنے والے اس واقعے کے بعث ہوائی جہاز کئی گھنٹے تاخیر کا شکار ہوا ہے۔ اماراتی حکومت کا کہنا ہے کہ طیارے میں رکھی گئی رقم صومالیہ کی فوج کی مدد کے لیے بھیجی گئی تھی۔ سنہ 2014ء میں دونوں ملکوں کے درمیان طے پائے ایک معاہدے کے تحت دو طرفہ فوجی تعاون کے شعبے میں مدد کے لیے یہ رقم صومالیہ بھیجی گئی تھی۔اماراتی وزارت خارجہ و عالمی تعاون کی طرف سے جاری کردہ بیان میں صومالیہ میں طیارہ روکنے کو عالمی قوانین، بین الاقوامی ضابطوں اور ممالک کے درمیان پائے جانے والے سفارتی تعلقات کے منافی قرار دیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

نیویارک کے مرکزی علاقے میں زیر زمین بھاپ پائپ لائن پھٹنے سے دھماکے

نیویارک شہر کے فائر ڈپارٹمنٹ نے کہا ہے کہ مین ہیٹن کی گلیوں میں زیر زمین گزرنے والا ایک ہائی پریشر بھاپ کا پائپ پھٹ گیا جس کے نتیجے میں ففتھ ایونیو کے مرکز میں واقع ایک سوراخ سے بھاپ نکل کر ہوا میں پھیلنا شروع ہو گئی۔

ترک بچوں اور خواتین کا جنسی استحصال کرنے والا خود ساختہ مذہبی رہنما گرفتار

استنبول کی ایک عدالت نے بزعم خود ایک اسلامی فرقے کے رہنما اور ٹی وی پر تبلیغ کرنے والی شخصیت عدنان اوکتار کو 115 دیگر پیروکاروں سمیت مختلف الزامات کی مزید تفتیش کے لئے پولیس کے حوالے کر دیا ہے۔ عدنان اوکتار پر جرائم پیشہ گینگ قائم کرنے، دھوکادہی اور جنسی استحصال کے الزامات ہیں۔

مقتدیٰ الصدر نے مظاہرین کی حمایت کردی ،نئی حکومت کی تشکیل مُوَخَّر کرنے کا مطالبہ

عراق کے سرکردہ شیعہ لیڈر مقتدیٰ الصدر نے ملک کے جنوبی صوبوں میں احتجاج کرنے والے مظاہرین کی حمایت کردی ہے او ر تمام متعلقہ سیاست دانوں پر زور دیا ہے کہ وہ مظاہرین کے بہتری شہری خدما ت کی فراہمی کے مطالبات پورے ہونے تک نئی حکومت کی تشکیل کے لیے مذاکرات کا سلسلہ معطل کردیں ۔