دبئی اورسعودی سمیت دنیا کے کئی ملکوں میں پورے مذہبی جذبے کے ساتھ منائی گئی عید؛کروڑوں مسلمانوں نے ادا کی عید کی دوگانہ

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 2nd September 2017, 1:31 AM | خلیجی خبریں | عالمی خبریں |

دبئی یکم ستمبر (ایس او نیوز/ایجنسی) متحدہ عرب امارات اور سعودی عرب سمیت دیگر خلیجی ریاستوں کے ساتھ ساتھ امریکہ، آسٹریلیا اور دنیا کے دیگر ممالک میں مسلمانوں نے  آج جمعہ کوعیدالاضحیٰ کی نماز ادا کی۔ جس کے بعدفرزندانِ توحید نے سنت ابراہیمی کی پیروی کرتے ہوئے اللہ کی راہ میں جانوروں کی قربانی پیش کی۔

چار روز  تک چلنے والی اس عید کو سعودی عرب اور دیگر خلیجی ممالک سمیت افریقہ، امریکا، یورپ، آسٹریلیا اورمشرق بعید کی مختلف ریاستوں میں آباد کروڑوں مسلمان پورے مذہبی جوش و جذبے کے ساتھ  منارہے ہیں۔ اور سنت ابراہیمی پرعمل کرتے ہوئے اللہ کی رضا اورخوشنودی کے لیے جانوروں کی قربانی دے رہے  ہیں۔ قربانی کی ادائیگی کے بعد مسلمان اپنی اپنی مقامی روایات کے مطابق عید کی خوشیاں دوبالا کرنے کے لیے مختلف تقاریب کا اہتمام کررہے ہیں۔

سعودی عرب میں نماز عید کے سب سے بڑے اجتماعات مسجد الحرام اور مسجد نبوی میں ہوئے جس کے بعد مسلمانوں نے سنت ابراہیمی پر عمل کرتے ہوئے اللہ کی رضا کے لئے جانوروں کی قربانی کی۔ خانہ کعبہ میں عیدالاضحیٰ کی نماز شیخ ڈاکٹر سعود الشریم نے پڑھائی جس میں لاکھوں فرزندان توحید نے شرکت کی۔ عربی میں خطبہ پیش کرتے ہوئے شیخ شریم نے قربانی کی اہمیت پر روشنی ڈالی اور مسلمانوں کو اللہ کے رسول حضرت محمد ﷺ کے اسوہ حسنہ پر  عمل کرنے کی ہدایت کی۔

متحدہ عرب امارات، بحرین، کویت اور قطر میں شہریوں نے نماز عید ادا کی، عراق، لبنان، شام، مصر ، افغانستان، ملائشیا اور انڈونیشیا میں بھی آج سےعید قربان منائی جا رہی ہے۔ امریکا برطانیہ ، نیوزی لینڈ، کینیڈا سمیت مختلف ممالک میں مسلمان  عید کی خوشیاں سمیٹ رہےہیں۔ کینیڈا کے وزیراعظم جسٹن ٹروڈو نے مسلمانوں کو عید پر مبارکبادی کا پیغام بھی پیش کیا ہے۔روس کے دارالحکومت ماسکو میں بھی جمعہ کی صبح عید کی نماز ادا کی گئی اور ماسکو کی مرکزی مسجد میں ہزاروں لوگ جمع ہوئے۔

متحدہ عرب امارات میں  سب سے بڑا اجتماع ابوظہبی کی شیخ زائید مسجد میں ہوا، جہاں نماز عید کے بعد توپ کے دو گولے ڈاغ کر عیدقرباں کی سلامی دی گئی۔دبئی میں بھی ہزاروں مسلمانوں نے مختلف عیدگاہوں میں پہنچ کر عید کی دوگانہ ادا کی۔ مقبوضہ بیت المقدس میں بھی عیدالاضحیٰ روایتی جوش و جذبے کے ساتھ منائی گئی اور مسجد الاقصیٰ میں عید کا سب سے بڑا اجتماع ہوا۔

مکہ میں حجاج کرام نے مزدلفہ میں دعاؤں میں مصروف رہنے کے کچھ دیر بعد بڑے شیطان کو کنکریاں مارنے کا عمل شروع کیا  جس کے  بعد جانوروں کی قربانی دی گئی ، بتایا گیا ہے کہ  اس کے بعد سرمنڈوا کر احرام کھول دیا۔

خیال رہے کہ آج جمعہ سے  ہندوستان کے ساحلی  کرناٹکا اور کیرالہ میں بھی عیدالاضحیٰ منائی جارہی ہے، البتہ ملک کے دیگر شہروں اور ریاستوں میں کل سنیچر سے عید الاضحیٰ منائی جائے گی۔پاکستان اور بنگلہ دیش میں بھی کل سنیچر سے عید الاضحیٰ منائی جائے گی۔

ایک نظر اس پر بھی

شارجہ میں ابناء علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی خوبصورت تقریب؛ یونیورسٹی میں میڈیکل تعلیم صرف 60 ہزار میں ممکن!

علی گڈھ مسلم یونیورسٹی جسے بابائے قوم مرحوم سر سید احمد خان نے دو سو سال قبل قائم کیا تھا آج تناور درخت کی شکل میں ملک میں تعلیم کی روشنی عام کررہا ہے۔اس یونیورسٹی میں میڈیکل کے طلبا کے لئے پانچ سال کی تعلیمی فیس صرف 60,000 روپئے ہے، حالانکہ دوسری یونیورسیٹیوں میں میڈیکل کے طلبا ...

متحدہ عرب امارات میں حفظ قرآن جرم، حکومت کی منظوری کے بغیر کوئی شخص قرآن حفظ نہیں کرسکتا، مساجد میں مذہبی تعلیم اور اجتماع پر بھی پابندی

مشرقی وسطیٰ کے مختلف ممالک میں داخل اندازی اور عرب کی اسلامی تنظیموں کو دہشت گرد قرار دینے کے بعد متحدہ عرب امارات قانون کے ایسے مسودہ پر کام کررہا ہے جس کی رو سے حکومت کی منظوری کے بغیر قرآن شریف کا حفظ بھی غیرقانونی ہوگا۔

ایجنسیوں سے بہتر رپورٹیں تو میڈیا سے مل جائیں گی: سپریم کورٹ

سپریم کورٹ نے فیض آباد دھرنے سے متعلق خفیہ اداروں کی رپورٹوں پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے نئی رپورٹیں جمع کرانے کی ہدایت کی ہے۔عدالتِ عظمیٰ کے جج قاضی فائز عیسٰی نے ریمارکس دیے ہیں کہ جب ریاست ختم ہو جائے گی تو قتل سڑکوں پر ہوں گے۔

نائیجیریا میں نمازیوں پر حملہ انتہائی قابلِ مذمت: ترجمان

امریکی محکمہ خارجہ نے منگل کو نائجیریا میں ریاستِ ادماوا میں موبی کے مقام پر ہونے والے دہشت گرد حملے کی مذمت کی ہے۔ترجمان ہیدر نوئرٹ نے کہا ہے کہ ’’اِس جانی نقصان پر ہم نائجیریا کے عوام اور متاثرہ خاندانوں سے دلی تعزیت کا اظہار کرتے ہیں‘‘۔

بنگلہ دیش میں جماعتِ اسلامی کے 6 رہنمائوں کو سزائے موت

 بنگلہ دیش میں ایک عدالت نے بدھ کو جماعتِ اسلامی کے 6 ارکان کو 1971 کی پاکستان کے خلاف جنگِ آزادی کے دوران جنگی جرائم کے مبینہ الزامات پر موت کی سزا سنادی۔ان افراد کو انٹرنیشنل کرائم ٹریبونل کے ایک تین رکنی پینل نے سزاسنائی ۔