ٹرمپ کی جیت نے ساری دنیا کو حیرت میں ڈالدیا ہے آز: پروفیسر ڈاکٹر شبیر احمد خورشید

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 10th November 2016, 6:31 AM | اسپیشل رپورٹس | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

ڈونالڈ ٹرمپ 14جون 1946کو امریکہ کے کے شہر نیو یارک سٹی میں ایک اسٹیٹ بلڈر کے گھرانے میں پیدا ہوئے ۔پنسلونیہ یونیور سٹی سے معاشیات میں گریجویشن کی ڈگری حاصل کی۔ٹرمپ نے کاروباری میدان میں بہت نام اور پیسہ کمایا۔ان کو 2016کے دنیا کے 324 دولت مند ترین افراد میں گنا جاتا ہے۔ جو امریکہ کے156 ، امیر ترین افراد میں شمار کئے جاتے ہیں۔جنہیں 2016کے انتخابات میں ریپبلیکن پارٹی نے اپنا صدارتی امیدوار چنا تھا۔انہوں نے ہیلری کلنٹن کو 8نومبر 2016کے انتخابات میں شکست فاش سے ہمکنار کر کے اپنے آپ کو ری پبلیکن پارٹی کا مضبوط ترین امیدوار ثابت کیا۔ڈونلڈ ٹرمپ امریکہ کے پینتالیسویں اور عمر کے لحاظ سے پہلی ٹرم کے معمر ترین صدر بنیں گے۔ جو20جنوری 1917کو ریپبلیکن پارٹی کی نمائندگی کرتے ہوئے ایوانِ صدر میں صدارت کی کرسی پر براجمان ہوجائیں گے ۔

امریکہ کے صدارتی انتخابات کا ساری دنیا میں چرچہ تو تھا ہی، مگر ڈونلڈ ٹرمپ کے متعلق دنیا کے خیالات موجودہ انتخابی نتائج کے بالکل بر عکس تھے۔اس کا مطلب یہ ہوا کہ امریکی عوام نے ساری دنیا کے اندازوں پر پانی پھیر دیا۔ دوسری جانب ڈونلڈ ٹرمپ کے خیالات او زندگی بھرکی بد اخلاقیوں سے امریکیوں کے علاوہ بھی ساری دنیا پورے طور پرواقف تھی۔ ان پر یہ الزامات کھل کر امریکی خوتین نے بھی لگائے۔جو انتہا درجے کی بد اخلاقی پر مبنی تھے۔یہ خواتین میڈیا پر آ آ کر ان کا کچا چٹھا کھولتی رہیں۔ ٹرمپ کی انتخابی تقاریر مسلم تعصبات کا ملغوبہ تھیں ۔ جس نے نا صرف امریکی مسلمانوں کو ہرٹ کیا بلکہ دنیا کے دیگر ممالک کے مسلمانوں کو بھی ٹرمپ نے کھل کر چیلنج کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ ان کے صدارتی انتخابات جیتنے پر ان کے صدر بننے کے بعد مسلمانوں اور خاص طور پر پاکستانیوں کا امریکہ میں رہنا محال کر دیں گے اور ان کی امریکی نیشنلٹی ختم کر کے تمام مسلمانوں اور خاص طور پر پاکستانیوں کو امریکہ سے دیس نکالا دلا کر ہی دم لیں گے۔وہ پاکستانیوں کی دہشت گردی کے خلاف قربانیوں کو تسلیم کرنے کیلئے ہر گز تیار نہیں ہیں۔ ٹرمپ کی صدارتی انتخابی انٹری کے متعلق کہا جا رہا ہے کہ دھواں دار رہی انہوں نے آتے ہی اسلام کا تعلق انتہا پسندی سے جوڑ کر ان کے امریکہ میں داخلے پر پابندی کی باتیں شروع کر دی تھیں۔ ٹرمپ نے ایسے امریکیوں کی ترجمانی کی جو مذہب کا تعلق انتہا پسندی سے جوڑتے ہیں۔اسلام مخالف بیانات نے ٹرمپ کو مسلمانوں کا مخالف تو ہندوانتہا پسندوں کا ہیرو بنا دیا۔ 

ساری دنیا کے بڑے بڑے اخبارات صحافی اور اینکر پرسن اور میڈیا کے لوگ ڈونلڈ ٹرمپ کے منتخب ہونے پربہت زیادہ خوشی کا اظہار نہیں کر رہے ہیں۔ بلکہ ہر جانب سے افسوس کا اظہارہورہاہے ۔ ایسا محسوس ہوتا ہے کہ مہذب دنیا کا ہر ذی شعورانسان ٹرمپ کی کامیابی پر نوحہ کُنا ں ہے۔اس کی سب سے بڑی وجہ ڈونلڈ ٹرمپ کا ماضی کا اخلاق سے گرا ہواکردار دکھائی دیتا ہے۔ٹرمپ کے متعلق عام خیال یہ ہی ہے کہ وہ کوئی بھی بد اخلاقی کو موقعہ ہاتھ سے جانے نہیں دیتے ہیں۔ ٹرمپ کے مقابلے میں ہیلری کلنٹن کو اخلاقی اور سماجی نقطہِ نظرسے ایک قسم کا وقار اور عزت حاصل ہے جو ٹرمپ کے قریب سے بھی نہیں گذری ہے۔ ٹرمپ کی کامیابی نے ساری دنیا کی اسٹاک مارکیٹوں میں مندی کا رجحان پیدا کر دیا ہے۔امریکہ،برطانیہ ،جاپان،ہانگ کانگ، پاکستان اور ممبئی کی اسٹاک مارکیٹیں نہایت ہی مندی کا شکار ہوگئی ہیں۔ڈالر کی قدر میں کمی اورعالمی مارکیٹ میں سونا مہنگا ہو گیا ہے۔ 

ٹرمپ کی زبان پاکستان کے عمران خان کی زبان سے بالکل مختلف نہ تھی۔ ان کی تقاریر میں انسانیت کا جنازہ  نکال دیا جاتارہا ہے۔ ٹرمپ کا کردار بھی ہمارے بعض سیاسی کرداروں سے ذرہ برابر بھی مختلف نہیں رہا ہے۔عملی زندگی میں انتہائی لُوز کردار کے مالک ڈونلڈ ٹرمپ آج امریکہ کی راج گدی پر براجمان ہونے کے حقدار بن چکے ہیں۔ ان کے بارے میں ساری دنیا کے سیاسی سوجھ بوجھ رکھنے والے اکثر افراد منفی سوچ رکھتے ہیں۔ بعض افراد کا تو یہ بھی خیال ہے کہ ٹرمپ اقتدار میں آنے کے بعد دنیا کو تباہی کے گڑھے کی طرف لے جا سکتے ہیں۔ ان کی انتہا پسندانہ سوچ نے ساری دنیا کو یہ سوچنے پر مجبور کر دیا ہے کہ اگر ٹرمپ نے اپنے خیالات نہ بدلے تو دنیا کو تباہی سے کوئی معجزہ ہی بچا سکتا ہے۔ اسوقت ٹرمپ کی کامیابی نے ساری دنیا کو حیرت میں ڈال دیا ہے۔ 

یہ مضمون نگار کے اپنے خیالات ہیں، جس سےادارے کا متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک : استعفیٰ دینے والوں کی فہرست میں یلاپور رکن اسمبلی ہیبار بھی شامل۔کیاوزارت کے لالچ میں چل پڑے آنند اسنوٹیکر کے راستے پر؟

ریاست کرناٹک  میں جو سیاسی طوفان اٹھ کھڑا ہوا ہے اور اب تک کانگریس، جے ڈی ایس مخلوط حکومت کے تقریباً 13 اراکین اسمبلی اپنا استعفیٰ پیش کرچکے ہیں اس سے مخلوط حکومت پر کڑا وقت آن پڑا ہے اور قوی امکانا ت اسی بات کے دکھائی دے رہے ہیں کہ دونوں پارٹیوں کے سینئر قائدین کی جان توڑ کوشش ...

بھٹکل میں 110 کے وی اسٹیشن کے قیام سے ہی بجلی کا مسئلہ حل ہونے کی توقع؛ کیا ہیسکام کو عوامی تعاون ملے گا ؟

بھٹکل میں رمضان کے آخری دنوں میں بجلی کی کٹوتی سے جو پریشانیاں ہورہی تھی، سمجھا جارہا تھا کہ  عین عید کے  دن  بعض نوجوانوں کے  احتجاج کے بعد  اُس میں کمی واقع ہوگی اور مسئلہ حل ہوجائے گا، مگر  عید الفطر کے بعد بھی  بجلی کی کٹوتی یا انکھ مچولیوں کا سلسلہ ہنوز جاری ہے اور عوام ...

بھٹکل تعلقہ اسپتال میں ضروری سہولتیں تو موجود ہیں مگر خالی عہدوں پر نہیں ہورہا ہے تقرر

جدید قسم کا انٹینسیو کیئر یونٹ (آئی سی یو)، ایمرجنسی علاج کا شعبہ،مریضوں کے لئے عمدہ ’اسپیشل رومس‘ کی سہولت کے ساتھ بھٹکل کے سرکاری اسپتال کو ایک نیا روپ دیا گیا ہے۔لیکن یہاں اگر کوئی چیز نہیں بدلی ہے تو یہاں پر خالی پڑی ہوئی اسامیوں کی بھرتی کا مسئلہ ہے۔ 

آر ایس ایس کی طرح کوئی مسلم تنظیم کیوں نہیں؟ از: ڈاکٹر سید فاضل حسین پرویز

مسٹر نریندر مودی کی تاریخ ساز کامیابی پر بحث جاری ہے۔ کامیابی کا سب کو یقین تھا مگر اتنی بھاری اکثریت سے وہ دوبارہ برسر اقتدار آئیں گے اس کا شاید کسی کو اندازہ نہیں تھا۔ دنیا چڑھتے سورج کی پجاری ہے۔ کل ٹائم میگزین نے ٹائٹل اسٹوری مودی پر دی تھی جس کی سرخی تھی ”India’s Divider in Chief“۔

خود کا حلق سوکھ رہا ہے، مگر دوسروں کو پانی فراہم کرنے میں مصروف ہیں بھٹکل مسلم یوتھ فیڈریشن کے نوجوان؛ ایسے تمام نوجوانوں کو سلام !!

ایک طرف شدت کی گرمی اور دوسری طرف رمضان کا مبارک مہینہ  ۔ حلق سوکھ رہا ہے، دوپہر ہونے تک ہاتھ پیر ڈھیلے پڑجاتے ہیں،    لیکن ان   نوجوانوں کی طرف دیکھئے، جو صبح سے لے کر شام تک مسلسل شہر کے مختلف علاقوں میں پہنچ کر گھر گھر پانی سپلائی کرنے میں لگے ہوئے ہیں۔ انہیں  نہ تھکن کا ...

مودی جی کا پرگیہ سنگھ ٹھاکور سے لاتعلقی ظاہر کرنا ایسا ہی ہے جیسے پاکستان کا دہشت گردی سے ۔۔۔۔ دکن ہیرالڈ میں شائع    ایک فکر انگیز مضمون

 وزیر اعظم نریندرا مودی کا کہنا ہے کہ وہ مہاتما گاندھی کے قاتل ناتھو رام گوڈسے کو دیش بھکت قرار دیتے ہوئے ”باپو کی بے عزتی“ کرنے کے معاملے پر پرگیہ ٹھاکورکو”کبھی بھی معاف نہیں کرسکیں گے۔“امیت شاہ کہتے ہیں کہ پرگیہ ٹھاکور نے جو کچھ کہا ہے(اور یونین اسکلس منسٹر اننت کمار ہیگڈے ...

جنوری 19 کو ہوں گےانجمن حامئی مسلمین بھٹکل کے انتخابات؛ اسحاق شاہ بندری الیکشن کمشنر منتخب

قومی تعلیمی ادارہ انجمن حامئی مسلمین بھٹکل کے عام انتخابات اگلے سال 19 جنوری کو ہوں گے جس کے لئے آج سنیچر کو  ہوئی انتظامیہ میٹنگ میں  الیکشن کمشنر کا انتخاب عمل میں آیا ہے۔  اس بات کی تصدیق انجمن کے جنرل سکریٹری جناب صدیق اسماعیل نے کی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ  آج کی میٹنگ میں ...

بھٹکلی جماعت المسلمین مینگلورو کا مستحسن اقدام : بنٹوال میں ہوئے سڑک حادثے میں شدید زخمیوں کی عیادت کرنے اور اُنہیں ہرممکن تعاون دینے جماعت کے وفد کا اسپتال دورہ

بھٹکلی  جماعت المسلمین مینگلور کے ایک وفد نے  مینگلور کے مختلف اسپتالوں کا دورہ کرتے ہو ئے  کل جمعہ کو سڑک حادثے میں ہوئے زخمی بھٹکلی لوگوں کی عیادت کی اور اُن کے رشتہ داروں سے بات چیت کرتے ہوئے جماعت کی جانب سے ہر ممکن تعاون کا یقین دلایا۔

انکولہ میونسپالٹی چیف آفیسر کو ڈی سی نے لیا آڑے ہاتھ۔ کہا؛ اگر تم ایماندار ہوتے تو کٹہرے میں کھڑے نہ ہوتے

انکولہ میونسپالٹی میں ڈھنگ سے کام نہ ہونے کی شکایت ملنے پر  اُترکنڑا کے ڈپٹی کمشنر  ڈاکٹر ہریش کمار انکولہ پہنچ کر  میونسپل چیف آفسر بی پرہلاد کو آڑے ہاتھوں لیا اور کہا کہ اگر تم  ایمانداری سے اپناکام انجام دے رہے ہوتے  تو اس طرح کٹہرے میں کھڑے ہونے کی نوبت نہ آتی ۔ ڈپٹی ...

منگلورو میں نشہ آور گولیاں فروخت کرنے والی گینگ کے 3 اراکین گرفتار

ساحلوں کے کنارے گھوم پھر کر نوجوانوں اور طلبہ کوMDMAنامی نشہ آور گولیاں فروخت کرنے کے الزام میں شہری پولیس نے 3ملزمین کوگرفتار کرلیا ہے ان کے پاس سے’ایکٹیسی‘کے نام سے معروف16گرام گولیاں ضبط کی گئیں جن کی قیمت 80ہزار روپے ہے۔ اس کے علاوہ ملزمین کے پاس سے اسکوٹر، موبائل فون، نقد ...