ٹرمپ اور کِم کے درمیان اہم دستاویز پر دستخط، عالمی تبدیلی کی باتیں

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 13th June 2018, 12:29 PM | عالمی خبریں |

سنگاپور 13جون ( ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا ) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور شمالی کوریا کے سربراہ کِم جونگ اُن نے سنگاپور کے جزیرہ سنتوزا میں منگل کے روز دو ملاقاتوں کے بعد ایک دستاویز پر دستخط کیے ہیں۔ اس دستاویز کو جامع اور اہم قرار دیا جا رہا ہے۔

دستخط کے بعد ٹرمپ نے باور کرایا کہ دستاویز میں تمام معاملات شامل کیے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ "ہمارے لیے یہ ایک بڑا اعزاز ہے کہ اس دستاویز پر دستخط کر رہے ہیں"۔

ٹرمپ کے مطابق آج ایک تاریخی ملاقات کا انعقاد ہوا ہے اور دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات کا ایک نیا صفہ کھولا گیا ہے۔ امریکی صدر نے زور دے کر کہا کہ ان ملاقاتوں کی روشنی میں دنیا بڑی تبدیلیاں دیکھے گی۔

ٹرمپ نے واضح کیا کہ "شمالی کوریا کے ساتھ تعلقات اب ماضی کے مقابلے میں یکسر مختلف ہوں گے"۔ انہوں نے کہا کہ جوہری ہتھیاروں کے تلف کیے جانے کا عمل "بہت جلد" شروع ہو گا۔

دوسری جانب شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ اُن نے اس ملاقات کے انعقاد پر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے لیے ممنونیت کا اظہار کیا۔

انہوں نے ٹرمپ کے ساتھ "تاریخی ملاقات" کو سراہتے ہوئے "ماضی کا صفحہ" پلٹ دینے کا عزم کیا۔

شمالی کوریا کے سربراہ کا کہنا تھا کہ "اس تاریخی ملاقات کے بعد ایک نیا عہد شروع ہوتا ہے اور ایک بڑی تبدیلی دنیا کے سامنے آئے گی"۔

ایک نظر اس پر بھی

بوئنگ 737 طیاروں کے سافٹ ویئر کو مزید بہتر بنانے کی منظوری

 امریکی فیڈرل ایوی ایشن ایڈمنسٹریشن (ایف اے اے) نے بوئنگ 737 میکس طیاروں کے سافٹ ویئر کو بہتر بنانے اور پائلٹوں کی تربیت میں تبدیلی کی منظوری دے دی ہے۔ یہ رپورٹ مقامی میڈیا نے دی ہے۔ دو بڑے حادثوں کے بعد کئی ممالک نے ان طیاروں کی پرواز پر روک لگا دی ہے۔

مفتی تقی عثمانی پرقاتلانہ حملہ شرمناک، دہشت گردی انتہائی مذم عمل اوربزدلانہ حرکت 

پاکستان کے معروف عالم دین اور نامور محقق مولانا مفتی تقی عثمانی پر ہوئے قاتلانہ حملہ کی سخت مذمت کرتے ہوئے معروف دانشور ڈاکٹر محمد منظورعالم نے کہاکہ یہ حملہ دہشت گردی اور بزدلانہ حرکت ہے جس کی کسی بھی سماج میں کوئی گنجائش نہیں ہے اور ایسے عناصر کے خلاف سخت کاروئی ضروری ہے ...

اﷲ اکبراﷲ اکبرکی صداؤں سے گونج اٹھا نیوزی لینڈ حملے کے بعد پہلی نمازجمعہ کی ادائیگی ۔اجتماع میں وزیراعظم سمیت بڑی تعداد میں غیرمسلموں کی بھی شرکت

نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ کی دو مساجد پر گزشتہ جمعہ ہوئے دہشت گردانہ حملے کے بعد وزیر اعظم جیسنڈا آرڈرن کی جانب سے خوفزدہ اور افسردہ مسلمانوں کی حوصلہ افزائی نے انسانیت میں انقلاب برپاکردیا ہے۔