بچوں کی سلامتی کے لئے اسکول بسوں میں تمام اصولوں پر عمل کیا جائے: اڈوپی کی ڈپٹی کمشنر کی ہدایت

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 18th May 2017, 1:11 AM | ریاستی خبریں |

اڈوپی,کرناٹک:17/مئی (یواین آئی) بچوں کو لانے والی اسکول کی گاڑیوں کو چاہئے کہ وہ لازمی طور پر حکومت کے اصولوں پر عمل کریں تاکہ بچوں کی سلامتی اور سکیورٹی کو یقینی بنایا جاسکے۔ گاڑی مالکین ' ڈرائیورس اور تعلیمی اداروں کے لئے یہ لازمی ہے۔ڈپٹی کمشنر اڈوپی ضلع پرینکا میری فرانسیس نے یہ بات بتائی۔ انہوں نے گاڑی مالکین ' ڈرائیورس ' تعلیمی اداروں کے سربراہوں ' ریجنل ٹرانسپورٹ آفیسر' محکمہ تعلیم کے افسروں ' پولیس کے افسروں کے ساتھ ایک میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اسکول کی گاڑیوں کی انشورنس پالیسی ' فٹنس ریکارڈ ' ابتدائی طبی امداد کی دواوں کے ڈبے ' ایمرجنسی دروازے ' حادثات کی صورت میں سلامتی کے اصول ہونے چاہئے۔ ان گاڑیوں کا رنگ زرد ہونا چاہئے اور اس پر 4مقامات پر اسکول کی گاڑی تحریر ہونی چاہئے۔گاڑیوں میں اسپیڈ ریگولیٹرس کی بھی ضرورت ہے اور گاڑیوں کو بہتر حالت میں رکھا جاناچاہئے۔ اسکول کی گاڑیوں میں صرف رجسٹرڈ طلبہ کو ہی بٹھاناہوگا۔انہوں نے آرٹی او کو ہدایت دی کہ محفوظ ڈرائیونگ اور ڈرائیورس کے لئے دیگر سلامتی سے متعلق مسائل پر تربیت فراہم کی جائے۔ا سکولس کے حکام کو چاہئے کہ وہ ڈرائیورس کے پس منظر کی بھی جانچ کرلیں اور یہ بھی پتہ لگائیں کہ اس کے پاس مستند ڈرائیونگ لائسنس ہے۔بارش کے موسم کے دوران ڈرائیورس کو عجلت نہیں کرنی چاہئے اور نہ ہی دیگر گاڑیوں کے ساتھ مسابقت کرنی چاہئے۔ ڈرائیورس کو چاہئے کہ بغیر کسی تاخیر کے بچوں کو بس میں بٹھاتے ہوئے انہیں چھوڑیں۔اسکولوں اور ڈرائیورس کو چاہئے کہ وہ کسی بھی ہنگامی صورتحال کے دوران طلبہ کے پتہ ' فون نمبرات اور دیگر تفصیلات بھی اپنے ساتھ رکھیں۔بارش کے موسم کے دوران بروقت اسکول تک رسائی ممکن نہیں ہے۔ اسکول حکام تیز گاڑی چلانے کے لئے ڈرائیورس کو مجبور نہ کریں۔ ا نہو ں نے ہائی وے حکام کو ہدایت دی کہ وہ اسکولس کے قریب سگنل بورڈس نصب کریں اور غلط سائیڈ پر گاڑی چلانے وا لوں کے خلا ف کارروائی کریں۔ساتھ ہی ہائی وے پٹرولنگ پولیس سڑک کے قواعد پر عمل نہ کرنے والوں کے خلاف بھی کارروائی کریں۔ تمام اسکولس کے حکام کو چاہئے کہ ہر تین ماہ ایک مرتبہ بچوں کی سلامتی کی کمیٹی کی میٹنگ طلب کرے۔اس میٹنگ کے دوران والدین ' اسکول حکام اور ڈرائیورس کو چاہئے کہ وہ طلبہ کی سلامتی کے لئے کئے جانے والے اقدامات پر تبادلہ خیال کریں۔انہو ں نے کہا کہ بچوں کی سلامتی کے اقدامات ' ان کے حقوق ' پی او ایس سی او کی بنیاد پر کئے جانے والے اقدامات کے سلسلہ میں تمام ڈسٹرکٹ ' سرکاری اور پرائیویٹ اسکولس کا معائنہ کیا جائے گا۔

ایک نظر اس پر بھی

اسکولی بچوں کے سوشیل میڈیا استعمال کرنے پر پابندی،پابندی پامال کرنے والوں کو اسکول سے نکال دینے کی تاکید

ریاستی محکمۂ تعلیمات نے کمسن ذہنوں پر سوشیل میڈیا کے اثرات کو دیکھتے ہوئے سختی سے یہ فرمان جاری کیا ہے کہ 13سال کی عمر تک کے بچوں کو سوشیل میڈیا کا استعمال کرنے کی اجازت قطعاً نہ دی جائے۔

مودی حکومت کے انسداد گؤ کشی قانون کو کمار سوامی نے قرار دیا خوش آئند: گائیوں کی دیکھ بھال کیلئے مراکز قائم کرنے کا بھی مشورہ

مرکزی حکومت کی طرف سے کل ملک بھر میں لاگو کئے گئے انسداد گؤ کشی قانون کا سابق وزیراعلیٰ اور ریاستی جنتادل(ایس) صدر ایچ ڈی کمار سوامی نے خیر مقدم کیااور کہاکہ مرکزی حکومت کو چاہئے کہ اس قانون کو نافذ کرنے کے ساتھ ملک بھر میں گائیوں کی دیکھ بھال کیلئے مراکز قائم کرے۔

موسلادھار بارش کی وجہ سے شہر میں عام زندگی متاثر،نشیبی علاقے زیر آب ، دوسو سے زائد درخت اور متعدد بجلی کے کھمبے زمین بوس

شہر میں کل رات ہوئی زبردست بارش کے سبب 200 سے زائد مقامات پر درخت اور بجلی کے کھمبے اکھڑگئے اور ساتھ ہی نہ صرف نشیبی علاقے بلکہ چند مشہور ومعروف سرکاری اور دیگر عمارتوں میں بھی بارش کا پانی گھس آیا۔