خاشقجی کے قتل میں سعودی ولی عہد کے براہِ راست ملوث ہونے کا کوئی ثبوت نہیں: پومپیو

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 3rd December 2018, 1:53 AM | خلیجی خبریں |

دبئی: 2/دسمبر (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے ایک بار پھرباور کرایا ہے کہ سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کا صحافی جمال خاشقجی کے قتل کے ساتھ براہ راست کوئی تعلق نہیں اور انہیں اس کیس میں ملوث کرنے کا کوئی ٹھوس ثبوت نہیں ملا ہے۔امریکی وزیرخارجہ نے خاشقجی قتل کیس کے حوالے سے سعودی عرب کے موقف کی حمایت کا اظہار کیا۔ارجنٹائن کے شہر پوینس آئرس میں "جی 20" اجلاس میں شرکت کے دوران "سی این این" ٹیلی ویڑن نیٹ ورک کو دیے گئے ایک انٹرویو میں مائیک پومپیو نے کہا کہ امریکی انٹیلی جنس اداروں کی جانب سے خاشقجی قتل کیس کی تحقیقات کا ایک ایک جملہ میں نے بہ غور پڑھا ہے۔ اس کے نتائج کا بھی مطالعہ کیا مگر مجھے اس میں کسی بھی جگہ خاشقجی کے قتل میں سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کے ملوث ہونے کا ثبوت نہیں ملتا۔ انہوں نے کہا کہ یہ بیان ٹھوس، ہم اور حتمی ہے۔خیال رہے کہ گذشتہ بدھ کو بھی امریکی وزیرخارجہ مائیک پومپیو نے سعودی ولی عہد کا دفاع کرتے ہوئے کہا تھا کہ جمال خاشقجی کیقتل میں محمد بن سلمان کے ملوث ہونے کی کوئی رپورٹ موجود نہیں۔انہوں نے کانگریس کو خبردار کیا تھا کہ وہ سعودی عرب کے خلاف جمال خاشقجی کے قتل کی وجہ سے پابندیوں کے لیے قانون سازی نہ کرے کیونکہ موجودہ وقت سعودی عرب کے خلاف قانون سازی کے لیے موزوں نہیں ہے۔گذشتہ روز سی این این کو دیے گئے انٹرویو میں انہوں نے ایران کی جانب سے درمانے فاصلے تک مارکرنے والے بیلسٹک میزائل کے تجربے کی شدید مذمت کی۔امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے ایران کی جانب سے درمیانہ فاصلے تک مار کرنے والے بیلسٹک میزائل کے تجربے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ ایران کے جوہری پروگرام پر بین الاقوامی سمجھوتے کی خلاف ورزی ہے۔ یہ میزائل جوہری ہتھیار لے جانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔بیلسٹک میزائل سے متعلق امریکہ اور ایران کے درمیان تناؤ کے معاملے پر ٹوئٹر پر جاری ہونے والے ایک بیان میں پومپیو نیکہا ہے کہ ایران میزائل کے ''تجربے اور جوہری ہتھیاروں کے پھیلاؤ کے راستے پر گامزن ہے اوراسلامی جمہوریہ سے مطالبہ کیا کہ وہ ایسی سرگرمیوں سے بازرہے۔

ایک نظر اس پر بھی

دبئی میں راہل نے اخبار نویسوں سے کہا؛ ’بی جے پی مشتعل اور غیر روادار؛ کررہی ہے ہمارے اداروں کو برباد؛ مگر ہم اب اُنہیں ایسا کرنے دیں گے

متحدہ عرب امارات کے دورہ پر پہنچے راہل گاندھی نے دبئی میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مودی حکومت پر راست حملہ کیا اور  کہ  ’’بی جے پی مشتعل اور غیر روادار ہو رہی ہے اور ہمارے اداروں کو برباد کر رہی ہے، جیسا کہ  سپریم کورٹ ، ریزرو بینک اور الیکشن کمیشن   آف انڈیا  میں ...

دبئی میں راہول گاندھی نے کہا؛ میں آپ کے من کی بات سننے آیا ہوں؛ ہزاروں کی بھیڑ میں راہول کا چل گیا جادو؛ راہول۔راہول کے نعرے

کانگریس کے صدر راہل گاندھی نے کہاکہ آئندہ برس ہونے والے عام انتخابات کے بعد مرکز میں ان کی حکومت بننے پر آندھراپردیش کو خصوصی ریاست کا درجہ دیا جائے گا۔متحدہ عرب امارات کے اپنے پہلے دورہ پر آئے مسٹر گاندھی نے جمعہ کو شرمک کالونی میں رہنے والے ہندوستانیوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا ...

ایران سے رہا ہونے والے سبھی ہندوستانی ماہی گیر خیروعافیت کے ساتھ دبئی پہنچ گئے

کل منگل کو ایرانی عدالت کے حکم سے رہا ہونے والے ضلع اُتر کنڑا کے 18 ماہی گیر سمیت جملہ 28 ماہی گیروں کی دونوں بوٹ  آج بدھ رات کو خیر و عافیت کے ساتھ دبئی پہنچ گئی۔ جس کے ساتھ ہی سبھی ماہی گیروں کے گھروالوں اور دوست احباب میں خوشی کی لہر دوڑ گئی ہے۔

دبئی کے قریب عجمان گراونڈ میں جمعہ سے شروع ہورہا ہے نوائط پریمئر لیگ کا شاندار کرکٹ ٹورنامنٹ

بھٹکل کمیونٹی کا T20کرکٹ مقابلہ ’ایز ٹیکس نوائط پریمیئر لیگ‘ (این پی ایل) نام سے 4جنوری جمعہ کے دن 4بجے عجمان میں شروع ہوگا۔ اس بات کی اطلاع این پی ایل کی جانب سے پریس ریلیز جاری کرتے ہوئے دی گئی ہے۔

دبئی میں بی پی ایل کرکٹ ٹورنامنٹ کا 15 مارچ سے ہوگا شاندار آغاز؛5جنوری سے ہوگا ٹیموں کا اندراج، وزٹ ویزا پردبئی میں موجود کھلاڑیوں کے لئے بھی سنہرا موقع

دبئی میں بھٹکل پریمئیر لیگ  المعروف  بی پی ایل کرکٹ کا آٹھواں ٹورنامنٹ  مورخہ 15 مارچ 2019 ؁ سے شروع ہوگا، البتہ بی پی ایل کے لئے ٹیموں کا اندراج 3/ جنوری سے شروع ہوگا۔ اس بات کی اطلاع  ٹورنامنٹ کے کمشنر    جوکاکوشمس الدین ضیاء نے دی۔

ایران میں بوٹ میں نظر بند بھٹکل سمیت اُترکنڑا کے ماہی گیر بہت جلد رہا ہونے کی توقع

دبئی سے ماہی گیر ی کے دوران  ایران سرحد پارکرنے کے الزام میں  ایران نیوی  کی تحویل میں بوٹ میں ہی نظر بند بھٹکل ، کمٹہ سمیت اترکنڑا ضلع کے 18ماہی گیر وں کی رہائی کے لئے جاری قانونی کارروائی آخری مراحل میں ہے۔