بندوق کی نوک پر کینسر متاثرہ کے ساتھ 3سال تک جنسی استحصال کرتا رہا پولیس اہلکار

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 29th July 2018, 12:15 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی ،28جولائی(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)سروس، سیکورٹی، تعاون کا دعوی کرنے والی ہریانہ پولیس کا چہرہ ایک بار پھر سے بے نقاب ہوا ہے۔ فریدآباد میں پولیس اہلکار کے ذریعہ ایک کینسر سے متاثر خاتون کے ساتھ عصمت دری کرنے کا معاملہ سامنے آیا ہے۔ جہاں متاثرہ خاتون نے الزام لگایا ہے کہ پولیس اہلکار گزشتہ 3 سالوں سے اس کو دھمکی دے کر بندوق کی نوک پر اس کے ساتھ آبروریزی کر رہا ہے۔

اتنا ہی نہیں ملزم پولیس اہلکار متاثرہ کے گھر جاکر اس کو جان سے مارنے کی دھمکی بھی دیتا ہے۔ کینسر میں مبتلا خاتون نے اب بنا ڈرے پولیس میں شکایت درج کرا ئی ہے۔آپ کو بتا دیں کہ ملزم پولیس اہلکار پر عصمت دری کا معاملہ درج ہوئے 20 دن گزر چکے ہیں اور ملزم تبھی سے فرار چل رہاہے۔ پولیس آج بھی ملزم کو ڈھونڈ کر اس کی گرفتاری کی بات کہہ رہی ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

جے این یو طالب علم عمر خالد پر فائرنگ کے معاملے میں دو گرفتار

یوم آزادی سے دو دن پہلے راجدھانی کے انتہائی محفوظ علاقے پارلیمنٹ سے چند قدم کے فاصلے پر واقع کانسٹی ٹیوشن کلب آف انڈیا کے باہر سر عام جے این یو کے طالب علم عمر خالد پر جان لیوا حملے کے معاملے میں دہلی پولس کی اسپیشل سیل نے دو لوگوں کو حراست میں لیا ہے ۔

سیلاب متاثرین کی طرف بسکٹ پھینکنے پر وزیر تعمیرات عامہ ایچ ڈی ریونا تنازعے میں گھرگئے؛ کئی حلقوں میں شدید ناراضگی

ریاستی وزیر برائے تعمیرات عامہ ایچ ڈی ریونا کی طرف سے کورگ اور رامناتھ پورہ کے سیلاب زدگان کی راحت کاری مہم کے دوران متاثرین کی طرف بسکٹ پھینکے جانے کا معاملہ تنازعے کا سبب بنا ہوا ہے۔