سپریم کورٹ نے کہا، پنشن کو لے کربنے منصوبوں میں ہم آہنگی کی کمی، حالات سدھر نہیں رہے ہیں

Source: S.O. News Service | By Staff Correspondent | Published on 10th October 2018, 12:06 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی ،09 اکتوبر (آئی این ایس انڈیا؍ایس او نیوز) ملک بھر میں بزرگوں کی پنشن اور قابل خراب حالت کو بہتر بنانے کے معاملے میں سپریم کورٹ نے مرکزی حکومت سے پوچھا ہے کہ پنشن دینے کی جو منصوبہ بندی ہے اس کی نگرانی کون کرتا ہے اور اس کے ذمہ دار کون ہیں؟ سپریم کورٹ نے کہا کہ ہم جانتے ہیں کہ پنشن کو لے کر بنائی گئی یوجنا میں ہم آہنگی کی کمی ہے۔ہمیں اس کمی کو ختم کرنا ہے۔سپریم کورٹ نے مرکزی حکومت سے کہا کہ بزرگوں کی پنشن اور قابل رحم حالت کو لے کر گرچہ کتنی اسکیم لے کر آئیں لیکن ان کے حالات میں کوئی بہتری نہیں دکھائی دے رہی ہے۔ مرکزی حکومت نے کہا کہ ہم ایک نئی یوجنا لا رہے ہیں جس میں ان کے رہنے کا بندوبست اور زندگی کی حفاظت وغیرہ شامل ہے۔سپریم کورٹ اب تین ہفتے کے بعد اس معاملے کی سماعت کرے گا۔واضح رہے کہ گزشتہ دنوں لیفٹیننٹ کرنل روندر بھنڈاری نے آر ٹی آئی سے ملی ایک معلومات کو ٹویٹ کیا تھا۔اس ٹویٹ میں کہا گیا کہ حکومت ہند نے سپریم کورٹ میں وزارت دفاع سے منسلک تمام مقدموں کی پیروی پر تقریباً 48کروڑ روپے خرچ کر دیئے ہیں۔یہ اعداد و شمار سال 2017-18کی ہے، جبکہ اس سے پہلے کے سال میں تقریبا 32 کروڑ روپے خرچ ہوئے تھے۔ آر ٹی آئی میں پوچھا گیا تھا کہ کتنے کیس لڑے گئے، کتنے کیس جیتے اورہارے گئے۔اس ٹویٹ کو ریٹائرڈ لیفٹیننٹ جنرل ونود بھاٹیہ نے ری ٹویٹ کیا۔جنرل ونود بھاٹیہ کے ری ٹویٹ کا مطلب یہ تھا کہ حکومت ڈسیبلڈ سولجر کو پنشن نہ ملے اس کے لئے مقدمے پر جتنا پیسہ خرچ کرتی ہے اس سے کم پیسے میں انہیں پنشن دی جا سکتی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

تلنگانہ میں 19فروری کو کابینہ کی توسیع

تلنگانہ کے وزیر اعلی کے چندرشیکھر راؤ دوبارہ اقتدار میں آنے کے دو ماہ کے بعد اپنی کابینہ میں توسیع کرنے کی تیاری میں ہے اور ساری بحث اب اس بات پر ٹک گئی ہے کہ اس میں کن لوگوں کو شامل کیا جائے گا۔

بھٹکل میں مجلس اصلاح وتنظیم کی جانب سے پلوامہ دہشت گردانہ حملہ کی کڑی مذمت: تحصیلدار کی معرفت وزیراعظم کو میمورنڈم ؛کڑی کارروائی کا مطالبہ

کشمیر کے پلوامہ میں دہشت گردانہ حملے کی کڑی مذمت کرتے ہوئے مجلس اصلاح وتنظیم بھٹکل نے تحصیلدار کی معرفت وزیر اعظم نریندر مودی کو اپیل سونپتے ہوئے دہشت گردی کا کرار ا جواب دینے کا مطالبہ کیا۔

بھٹکل: شرالی میں ہائی وے کی توسیع کے دوران ہنگامہ؛ پولس کی لی گئی مدد؛ عوامی مخالفت نظرانداز؛ 30میٹرکی ہی توسیع کے ساتھ کام شروع

شرالی میں قومی شاہراہ کی تعمیر 45میٹر کی توسیع کے ساتھ ہی کی جائے ، کسی حال میں بھی توسیع کو 30میٹر تک کم کرنے نہیں دیں گے۔  مقامی  عوام کی سخت مخالفت کے باوجود ضلع انتطامیہ بدھ کو 30 میٹر کی توسیع کے ساتھ شاہراہ تعمیری کام کی شروعات کی۔