سپریم کورٹ نے کہا، پنشن کو لے کربنے منصوبوں میں ہم آہنگی کی کمی، حالات سدھر نہیں رہے ہیں

Source: S.O. News Service | By Staff Correspondent | Published on 10th October 2018, 12:06 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی ،09 اکتوبر (آئی این ایس انڈیا؍ایس او نیوز) ملک بھر میں بزرگوں کی پنشن اور قابل خراب حالت کو بہتر بنانے کے معاملے میں سپریم کورٹ نے مرکزی حکومت سے پوچھا ہے کہ پنشن دینے کی جو منصوبہ بندی ہے اس کی نگرانی کون کرتا ہے اور اس کے ذمہ دار کون ہیں؟ سپریم کورٹ نے کہا کہ ہم جانتے ہیں کہ پنشن کو لے کر بنائی گئی یوجنا میں ہم آہنگی کی کمی ہے۔ہمیں اس کمی کو ختم کرنا ہے۔سپریم کورٹ نے مرکزی حکومت سے کہا کہ بزرگوں کی پنشن اور قابل رحم حالت کو لے کر گرچہ کتنی اسکیم لے کر آئیں لیکن ان کے حالات میں کوئی بہتری نہیں دکھائی دے رہی ہے۔ مرکزی حکومت نے کہا کہ ہم ایک نئی یوجنا لا رہے ہیں جس میں ان کے رہنے کا بندوبست اور زندگی کی حفاظت وغیرہ شامل ہے۔سپریم کورٹ اب تین ہفتے کے بعد اس معاملے کی سماعت کرے گا۔واضح رہے کہ گزشتہ دنوں لیفٹیننٹ کرنل روندر بھنڈاری نے آر ٹی آئی سے ملی ایک معلومات کو ٹویٹ کیا تھا۔اس ٹویٹ میں کہا گیا کہ حکومت ہند نے سپریم کورٹ میں وزارت دفاع سے منسلک تمام مقدموں کی پیروی پر تقریباً 48کروڑ روپے خرچ کر دیئے ہیں۔یہ اعداد و شمار سال 2017-18کی ہے، جبکہ اس سے پہلے کے سال میں تقریبا 32 کروڑ روپے خرچ ہوئے تھے۔ آر ٹی آئی میں پوچھا گیا تھا کہ کتنے کیس لڑے گئے، کتنے کیس جیتے اورہارے گئے۔اس ٹویٹ کو ریٹائرڈ لیفٹیننٹ جنرل ونود بھاٹیہ نے ری ٹویٹ کیا۔جنرل ونود بھاٹیہ کے ری ٹویٹ کا مطلب یہ تھا کہ حکومت ڈسیبلڈ سولجر کو پنشن نہ ملے اس کے لئے مقدمے پر جتنا پیسہ خرچ کرتی ہے اس سے کم پیسے میں انہیں پنشن دی جا سکتی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

گذشتہ دس سالوں سے جیل میں مقید مسلم نوجوان کو قانونی کی تعلیم جاری رکھنے کی اجازت، جمعیۃ علماء نے قانونی امداد کے ساتھ ساتھ تعلیمی وظیفہ بھی دیا، پہلے مرحلہ کا نتیجہ اطمنان بخش: گلزار اعظمی

ممبئی کی خصوصی مکوکا(این آئی اے) عدالت نے جھوٹے دہشت گردانہ معاملے کا سامنا کررہے ایک مسلم نوجوان کو قانون کی تعلیم جاری رکھنے اور اسے امتحان میں شرکت کرنے کی مشروط اجازت دی۔13-7 ممبئی سلسلہ وار بم دھماکہ معاملے کا سامنا کررہے ملزم ندیم اختر کو ایل ایل بی پہلے سال کے دوسرے مرحلہ ...

مرکز نے سپریم کورٹ سے کہا، رافیل معاہدہ میں پی ایم اوکادخل نہیں، تمام عرضیاں ہوں مسترد

لوک سبھا انتخابات میں اپوزیشن نے رافیل لڑاکا طیارے معاہدے میں بے ضابطگیوں کا الزام لگاتے ہوئے اسے سب سے بڑا مسئلہ بنایا۔کانگریس صدر راہل گاندھی نے اس معاہدے کے لئے براہ راست طور پر وزیر اعظم نریندر مودی کو ذمہ دار بتایا۔

جب تک کجریوال ہیں، دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ دینے کی نہیں سوچ سکتے:ہرش وردھن

دہلی کی چاندنی چوک سیٹ سے تقریباََ228000 ووٹوں سے جیت کر دوبارہ ایم پی بنے مرکزی وزیر ڈاکٹر ہرش وردھن نے بات کی۔دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ دینے کے معاملے پر انہوں نے کہا کہ جب تک اروند کجریوال وزیر اعلی ہیں، اس وقت تک اس کے بارے میں سوچا بھی نہیں جا سکتا۔

اسمرتی ایرانی کے قریبی سابق پردھان کا گولی مار کر قتل ، علاقہ میں کشیدگی

اترپردیش کے امیٹھی میں ہفتہ دیر رات اسمرتی ایرانی کے قریبی سابق پردھان کا گولی مار کر قتل کردیا گیا ۔ اطلاعات کے مطابق جامو تھانہ حلقہ کے برولیا گاوں کے سابق پردھان سریندر سنگھ کو نامعلوم بدمعاشوں نے گولی مار کر موت کے گھاٹ اتار دیا ۔ بدمعاشوں نے واقعہ کو اس وقت انجام دیا جب ...

مسلمانوں کے خلاف اشتعال انگیز بیانات دینے والوں کی بھاری اکثریت کے ساتھ جیت

مسلمانوں کے خلاف ہمیشہ اشتعال انگیز بیانات دینے والوں کو اس مرتبہ لوک سبھا انتخابات میں بھاری اکثریت کے ساتھ کامیابی حاصل ہوئی ہے۔ اترکنڑا لوک سبھا حلقے کے بی جے پی اُمیدوار اننت کمار ہیگڈے جنہوں نے کہا تھا کہ جب تک اسلام رہے گا دہشت گردی رہے گی،اسی طرح انہوں نے  دستور کی ...