تھائی لینڈ کے غار میں پھنسے تمام 12 افراد کو بچا لیا گیا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th July 2018, 11:14 AM | عالمی خبریں |

مائی سائی،11؍جولائی (ایس او نیوز؍رائٹر)  تھائی لینڈ کے پانی سے بھرے غار سے آج 12 ویں بچے کو بھی باہر نکال لیاگیاہے ۔ وہاں دو ہفتوں سے زائد عرصہ سے 12لڑکے اور ان کا فٹبال کوچ وہاں پھنس کر رہ گئے تھے ۔ اس صورتحال سے امید پیدا ہوگئی ہے کہ تمام بچوں کو آج شام تک باہر نکال لیاجائے گا ۔

رائٹر کے ایک رپورٹر نے تین بچوں کو غار سے باہر لاتے ہوئے دیکھاتھا جنہیں علحدہ طور پر اسٹریچر کے ذریعہ لایاگیاتھا ۔ بچاو کاروائی کا یہ تیسرا دن تھا ۔ 4لڑکوں کو پہلے دودن کے دوران اسٹریچر پر باہر لایاگیاتھا جبکہ 4 بچوں کو اتوار کو اور دیگر 4 کو پیر کو باہرلایاگیا ۔ سرکاری عہدیداران اس پر تبصرہ کے لیے موجود نہیں تھے کہ انہیں کس نے باہر نکالاہے جبکہ ان کی حالت کے بارے میں وضاحت نہیں ہوئی ۔ بچاو کاروائی کی معلومات رکھنے والے فرد نے بتایا کہ 11 بچے کو دیکھنے سے عین قبل 10 افراد کو باہر لالیاگیاتھا ۔

بچاو کاروائی کے سربراہ نے قبل ازیں بتایاتھا کہ قطعی کاروائی اور بھی زیادہ چیالنج پیدا کرنی ہوگی کیونکہ مزید ایک لڑکے کو نیوی کے تین عہدیداروں کے ساتھ باہر نکالاجائے گا ان لڑکوں کے ہمراہ موجود ہیں ۔ بچاو کارکن اپنے تجربہ سے سبق حاصل کررہے ہیں اور وہاں پر بچ جانے والے دوسرے جتھے کو باہر نکالنے کے لیے انہوں نے اپنے کام میں دو گھنٹے تیزی پیدا کردی ۔

تاہم بارش جاری ہے جس سے اندیشہ ہے کہ پانی چونے کے پتھر کے غار کی دیواروں میں رستے ہوئے راستوں میں سیلاب کی کیفیت پیدا کرے گا کیونکہ پانی تیزی سے اندر بہہ رہاہے ۔ بچاو ٹیم کے سربراہ نے بتایا کہ اسے امید ہے کہ وہ لوگ آج کل کی طرح تیزی سے کام کریں گے ۔ بیرونی غوطہ کاروں کے ایک ٹیم اور بحریہ کے ملازمین تقریباً4کلو میٹر طویل 2.5میل سرنگ سے باہر نکالنے میں رہنمائی کررہے ہیں جبکہ اس بعض علاقو ں میں پانی جمع ہے اور وہاں گہرا اندھیرا بھی ہے ۔ غوطہ خوروں کی ٹیم نے غار میں پھنسے آخری پانچ افراد کو بچانے کا آپریشن مکمل کر لیا ہے۔

قبل ازیں تھائی ریسکیو ورکرز کا اصرار تھا کہ وہ غار میں پھنسے تیرہ افراد کو بازیاب کرانے کے لیے کوئی خطرہ مول نہیں لینا چاہتے۔علحدہ موصولہ اطلاع کے بموجب تھائی حکام کا کہنا ہے تھیم لوانگ غار میں موجود بقیہ پانچ افراد کو نکالنے کے لیے آپریشن منگل کو جاری ہے جبکہ گذشتہ دو دن کے دوران بچائے جانے والے 8 بچوں کی ذہنی اور جسمانی صحت اچھی ہے۔

حکام کے مطابق ان 8 بچوں کے خون کے نمونوں کا معائنہ کیا گیا ہے اور ان کا ایکسرے لیا گیا ہے۔ دو بچوں میں پھیپھڑوں کی سوزش کا شبہ ظاہر کیا گیا ہے اور ان کا علاج کیا جا رہا ہے۔ان بچوں کو کم از کم سات دن تک ہسپتال میں زیرمعائنہ رکھا جائے گا۔صحت عامہ کی وزارت کے مستقل سیکریٹری جیسادا چوکے دومرونگسک نے میڈیا کوبتایا: ’آٹھوں اچھی صحت میں ہیں۔ کسی کو بخار نہیں ہے۔سب اچھی ذہنی حالت میں ہیں۔‘امدادی کارکنوں نے چار بچوں کو اتوار کو باہر نکالا تھا تاہم رات کو ایئر ٹینک دوبارہ بھرنے کے لیے آپریشن روک دیا گیا تھا۔پیر کو8 بچوں اور ان کے کوچ کو نکالنے کا کام دوبارہ شروع کیا گیا تھا تاہم صرف چار بچوں کو ہی غاروں سے باہر نکالا جا سکا تھا۔اس طرح باہر نکالے جانے والے افراد کی تعداد آٹھ ہو گئی ہے جبکہ چار بچے اور ان کے کوچ اب بھی غار میں موجود ہیں۔

بتایا گیا ہے کہ غار میں موجود ان پانچ افراد کی صحت اچھی ہے اور پانی سے بھرے تنگ اور پیچیدہ راستے سے نکلنے کے لیے تیار ہیں۔باہر نکالے جانے والے بچوں کو تاحال عوام میں دیکھا نہیں گیا ہے تاہم کہا گیا ہے کہ ان کی صحت مناسب ہے۔بچوں کو غار سے نکالنے کا عمل کافی طویل اور پیچیدہ ہے جس کے لیے غوطہ خوروں کو پانچ گھنٹے غار کے اندر سفر کرنا پڑتا ہے جب کہیں جا کر وہ اس مقام پر پہنچتے ہیں جہاں بچے موجود ہیں اور انھیں ایک ایک کر کے واپس لایا جاتا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

گولان پہاڑیوں کے قریب باغیوں کے ٹھکانوں پر شام کا قبضہ

شام کے سرکاری میڈیا نے کہا ہے صدر بشار الاسد کی وفادار فورسز نے ملک کے جنوب مغرب میں باغیوں کے ٹھکانوں کے خلاف اپنی پیش قدمی جاری رکھتے ہوئے فوجی اہمیت کی ایک چوٹی تل الحارہ کا کنٹرول سنبھال لیا ہے جہاں سے اسرائیل کے زیر قبضہ گولان کی چوٹیوں پر نظر رکھی جا سکتی ہے۔

افغانستان میں داعش نے 20 افراد اور طالبان نے 9 پولیس اہل کار ہلاک کر دیے

داعش کے ایک خودکش بمبار نے منگل کے روز شمالی افغانستان میں دھماکہ کر کے 20 افراد کو ہلاک کر دیا جن میں ایک طالبان کمانڈر بھی شامل ہے۔ جب کہ جنوبی صوبے ہلمند میں ایک سرکاری کمانڈو یونٹ نے طالبان کی جیل سے 54 لوگوں کو آزاد کر ا دیا۔

اسرائیلی وزیر اعظم نتین یاہو کو لگا بڑا جھٹکا ، پارلیمنٹ نے چھین لیا یہ اہم اور خاص اختیار

تل ابیب پارلیمنٹ کی جانب سے اسرائیلی وزیراعظم کو دیئے گئے جنگی اختیارات واپس لے لیے گئے ہیں ، جس کے بعد اب پوری سیکورٹی کونسل جنگ کا فیصلہ کرے گی۔ یہ فیصلہ دوسری بار ہوا ہے کہ اسرائیلی وزیر اعظم سے جنگی اختیارات واپس لے لئے گئے ہیں۔ پارلیمنٹ میں اختیار پر نظر ثانی اور ترامیم ...