اسرائیل:بنجامن نیتن یاہو کے خلاف ہزاروں افراد کا زبردست مظاہرہ ، بدعنوانی کی جانچ کا مطالبہ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 3rd December 2017, 8:06 PM | عالمی خبریں |

یروشلم،3دسمبر ( ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)اسرائیل کے وزیر اعظم نیتن یاہو کی مبینہ کرپشن میں ملوث ہونے کی وجہ سے ان کے خلاف اسرائیلی عوام سڑکوں پر نکل آئے۔اسرائیل کے شہر تل ابیب میں 20 ہزار افراد نے اسرائیلی وزیراعظم کے خلاف سڑکوں پر احتجاج کیا۔غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق عوام کا مطالبہ تھا کہ وزیر اعظم نیتن یاہو کے خلاف شفاف تحقیقات ہونی چاہیے۔جبکہ دوسری جانب اسرائیلی پارلیمنٹ میں کرپشن تحقیقات محدود کرنے کا بل منظور کیا جا رہاہے۔خیال رہے کچھ روز قبل اسرائیلی وزیراعظم پر کرپشن کا الزام لگ چکا ہے جس کی تحقیقات جاری ہے۔نیتن یاہو پر بدعنوانی کے الزامات کے سبب کل اتنا بڑا بدعنوانی احتجاج کیا گیا۔ نیتن یاہو پر چوتھی مدت کے دوران دو معاملوں میں جانچ چل رہی ہے۔ پہلا معاملہ کسی تاجر سے گفٹ لینے کا ہے اور دوسرا معاملہ ایک اخبار کے مالک سے بہتر کوریج کے لئے ڈیل کو لے کر ہے۔ نیتن یاہو کا کہنا ہے کہ انہوں نے کوئی غلط کام نہیں کیا۔کل ایک قانونی مسودے کو لے کر احتجاج کیا گیا۔ اس قانونی مسودے کو اگلے ہفتے پارلیمنٹ کی منظوری کی توقع ظاہر کی جا رہی ہے۔ اس کے بعد نیتن یاہو کے دونوں معاملوں میں پولیس کی تحقیقات کے نتائج کو شائع کرنے پر روک لگ جائے گی۔مظاہرین کا کہنا ہے کہ یہ قانونی مسودہ نیتن یاہو کو بچانے اور عوام کو تحقیقات سے اندھیرے میں رکھنے کی کوشش ہے۔ وہیں قانونی مسودے کے حامیوں کا کہنا ہے کہ اس سے ملزمان کے حقوق کی حفاظت کا مسئلہ ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کرد ملیشیا کی عفرین میں ترکی کے خلاف اسدی فوج سے معاہدے کی تردید

شام کے علاقے عفرین میں ترک فوج کا مقابلہ کرنے والی کردملیشیا ’کرد پروٹیکشن یونٹ‘ کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں ان خبروں کی سختی سے تردید کی ہے جن میں دعویٰ کیا گیا تھا کہ کرد ملیشیا نے ترکی کا مقابلہ کرنے کے لیے اسدی فوج کے ساتھ ساز باز کرلیا ہے۔