بھٹکل میں موسلادھار بارش؛ شرالی سے الوے کوڈی کو جوڑنے والی عارضی سڑک پانی میں بہہ گئی

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 8th June 2018, 6:58 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل 8/جون (ایس او نیوز) تعلقہ بھر میں کل جمعرات صبح سے جاری موسلادھار بارش آج شام تک مسلسل جاری ہے۔  ایک طرف  ندی نالے پانی سے بھر کر لبریز ہوگئے ہیں تو وہیں تعلقہ کے شرالی میں شرالی سے الوے کوڈی کو جوڑنے والی عارضی سڑک  کو بارش کے پانی نے بہادیا ہے، جس کے ساتھ ہی الوے کوڈی کی طرف جانے والوں کے لئے سخت دشوای پیش آرہی ہے۔

بتایا گیا ہے کہ رات قریب تین بجے  زبردست بارش کے نتیجے میں پوری سڑک پلّی نالے میں بہہ گئی، جس کے ساتھ ہی الوے کوڈی کا شرالی اور بھٹکل سے بری رابطہ ٹوٹ گیا۔

خیال رہے کہ شرالی کے  پلّی نالے پر واقع بریج بے حد خستہ حال ہونے کی وجہ سے قریب دو ماہ قبل اُس بریج کو نکال کر وہاں نئی بریج کا کام شروع کیا تھا، ایسے میں   عوام کو ایک جگہ سے دوسری جگہ پہنچنے کے لئے   عارضی طور پر ایک عارضی سڑک تعمیر کرکے دی گئی تھی اور ندی سے پانی کے اخراج کے لئے  بڑے بڑے پائپ بچھائے گئے تھے، مگر رات کو زبردست بارش سے ندی کے اندر بچھائے گئے موٹے پائپ کو ہی ندی کے تیز بہائو کی نظر ہوگئے ، اور پائپوں کو پانی اپنے ساتھ بہا لے گیا، جس کے ساتھ ہی پائپ  پوری سڑک زمین بوس ہوگئی۔

سڑک کا رابطہ ٹوٹتے ہی اب بھٹکل اور شرالی سے پلّی، تٹّی ہکّل، منہونڈا، کلسیکیری، الوے کوڈی اور سنبھاوی جیسے دیہات الگ تھلگ ہوگئے، واقعے کی اطلاع ملتے ہی  پی ڈبلیو کے اہلکار اور  شرالی پنچایت کے اہلکار سمیت بھٹکل رکن اسمبلی سنیل نائک نے فوری جائے وقوع پر پہنچ کر جائزہ لیا، جس کے بعد سڑک کی تعمیر کرنے والی کنٹریکٹ کمپنی  کے ذریعے ہی  عوام کو ایک جگہ سے دوسری جگہ لانے اور لے جانے کے لئے عارضی طور پر کشتی کا انتظام کیا گیا ہے۔ ساتھ ساتھ پرانے اور خستہ حال   پیدل بریج کو فوری طور پر درست کرکے چلنے  لائق بنایا گیا ہے۔

عارضی سڑک پانی میں بہہ جانے سے  سواریوں کو  اب بینگرے ،ماون کٹے کے راستے سے الوی کوڈا جانا ہوگا جو کافی لمبا راستہ ہے۔

مقامی لوگوں نے ساحل آن لائن سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ پلّی ہالّا  بریج کی پوری  سڑک پانی میں بہہ جانے سے عوام کے ساتھ ساتھ   اسکول اور کالج جانے والے بچے سب سے زیادہ متاثر ہوئے ہیں، جو بریج کے اُس پار والے  درو دراز کے دیہاتوں سے بھٹکل کے اسکولوں اور کالجوں کے لئے جاتے ہیں۔

 

بھٹکل میں 75.4 ملی میٹر بارش:   7/جون سے آج 8/جون صبح آٹھ بجے  تک بھٹکل میں 75.4 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی ہے۔ اسی طرح بھٹکل تعلقہ میں اب تک ہوئی جملہ بارش 440.9 ملی میٹر  ریکارڈ کی گئی ہے۔ خیال رہے کہ گذشتہ سال کے  مانسون کے مقابلے میں اس بار  8/ جون صبح آٹھ بجے تک 127.3 ملی میٹر بارش زائد ریکارڈ کی گئی ہے۔ بارش کی  شروعات کےساتھ ہی بھٹکل میں  کھتی باڑی کا کام بھی شروع ہوگیا ہے اور کسان کھیتوں میں بیج بونے کی تیاری  میں ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

اُترکنڑا سے چھٹی مرتبہ جیت درج کرنے والے اننت کمار ہیگڑے کی جیت کا فرق ریاست میں سب سے زیادہ؛ اسنوٹیکر کو سب سے زیادہ ووٹ بھٹکل میں حاصل ہوئے

پارلیمانی انتخابات میں شمالی کینرا کے بی جے پی امیدوار اننت کمار ہیگڈے نے پوری ریاست کرناٹک میں سب سے زیادہ ووٹوں سے کامیابی حاصل کی ہے۔ انہوں نے 479649 ووٹوں کی اکثریت سے کانگریس  جے ڈی ایس مشترکہ اُمیدور  آنند اسنوٹیکر  کو شکست دی ۔

ریاست میں کبھی ہار کا منھ نہ دیکھنے والے سیاسی لیڈروں کی ذلت بھری شکست

ریاست کرناٹکا میں انتخابی میدان میں کبھی ہار کا منھ نہ دیکھنے والے چند نامورسیاسی لیڈران جیسے ملیکا ارجن کھرگے، دیوے گوڈا، ویرپا موئیلی اورکے ایچ منی اَپا وغیرہ کو اس مرتبہ پارلیمانی انتخاب میں انتہائی ذلت آمیز شکست سے دوچار ہونا پڑا ہے۔ 

منگلورو:کلاس میں اسکارف پہننے پر سینٹ ایگنیس کالج نے طالبہ کو دیا ٹرانسفر سرٹفکیٹ۔طالبہ نے ظاہر کیاہائی کورٹ سے رجوع ہونے اور احتجاجی مظاہرے کاارادہ

کلاس روم میں اسکارف پہن کر حاضر رہنے کی پاداش میں منگلورومیں واقع سینٹ ایگنیس کالج نے پی یو سی سال دوم کی طالبہ فاطمہ فضیلا کو ٹرانسفر سرٹفکیٹ دیتے ہوئے کالج سے باہر کا راستہ دکھا دیا ہے۔

بھٹکل میں رمضان باکڑہ کی نیلامی؛ 40 باکڑوں کے لئے میونسپالٹی کو 1126 درخواستیں

رمضان کے آخری عشرہ کے لئے بھٹکل  میں لگنے والے رمضان باکڑہ کی آج میونسپالٹی کی جانب سے  نیلامی کی گئی۔ بتایا گیاہے کہ 40 باکڑوں کی نیلامی کے لئے  میونسپالٹی کے جملہ 1126 درخواست فارمس فروخت ہوئے تھے۔