بھٹکل ساگرروڈ پر آٹو رکشہ اور ٹمپو کی ٹکر؛ چار زخمی

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 10th February 2019, 3:28 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل 10/فروری (ایس او نیوز) یہاں ساگر روڈ پر کیشو نارائن مندر کے قریب آٹو رکشہ اور ٹمپو کے درمیان ہوئی ٹکر میں آٹو رکشہ پر سوار چار افراد زخمی ہوگئے، جن میں ایک کو شدید زخمی حالت میں کنداپور روانہ کیا گیا ہے۔حادثہ اتوار صبح قریب دس بجے پیش آیا۔

بتایا گیا ہے کہ آٹو رکشہ ہاڈولّی سے بھٹکل کی طرف آرہا تھا ، جبکہ باراتیوں سے بھری ٹمپو  بھٹکل سے ساگر جارہی تھی۔ حادثے میں ٹمپو سمیت آٹو رکشہ کا اگلا حصہ بری طرح ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہوا ہے۔

حادثے کے فوری بعد مقامی لوگوں نے رکشہ پر سوار زخمیوں کو بھٹکل سرکاری اسپتال پہنچایا، جن کی شناخت  ناگراج نائک، ایشور نائک، گنیش شٹی  اور منجوناتھ وسنت اچار کی حیثیت سے کی گئی ہے ۔ حادثے میں گنیش شٹی کے سر کو چوٹ لگنے کی وجہ سے اُسے سرکاری اسپتال سے کنداپور اسپتال منتقل کیا گیا ہے۔

بھٹکل  پولس تھانہ میں معاملہ درج کیا گیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

لوک سبھا انتخابات؛ بھٹکل میں سبھی پولنگ بوتھوں کے اطراف امتناعی احکامات نافذ؛ ہوٹلوں پر ہوگی نگاہ، انتخابی پرچار پر پابندی

اپریل 23 کو ہونے والے لوک سبھا انتخابات کے پیش نظر  بھٹکل ودھان سبھا حلقہ کے 248 پولنگ بوتھوں کے اطراف  پروٹوکول کے تحت انتخابات شروع ہونے کے 48 گھنٹے پہلے سے ہی امتناعی احکامات نافذ کردئے  گئے ہیں۔ جس کے تحت پولنگ بوتھ کے اطراف چار سے زائد لوگوں کے جمع ہونے پر پابندی رہے گی اس بات ...

سابق وزیراعظم دیوے گوڈا کا بھٹکل دورہ؛ کہا، جمہوریت خطرے میں ہے، اُسے بچانے کے لئے ہر شہری کو آگے آنا ہوگا

اس بار کے انتخابات سب سے زیادہ اہم اس لئے  ہے کہ مودی کے زیر اقتدار ملک کی جمہوریت کو خطرہ لاحق ہوگیا ہے۔جب سے مودی ملک کے وزیراعظم  بنے ہیں ملک کے سرکاری جمہوری اداروں میں  دخل اندازی سے  عدالت تک محفوظ نہیں ہے، ریزروبینک آف انڈیا  ہو ، انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ ہو، سی بی آئی ...

ہلیال میں جے ڈی ایس لیڈر کے گھر پر انتخابی افسران کا چھاپہ ۔تلاشی کے بعد خالی ہاتھ واپس لوٹے افسران؛ کیا بی جےپی کو شکست کا خوف ہے؟

پارلیمانی انتخابات کے پیش نظر چیک پوسٹس پر تلاشی مہم کے علاوہ ہلیال شہر کے گوداموں، شراب کی دکانوں، موٹر گاڑیوں کی بھی مسلسل تلاشیاں لے رہے ہیں۔

لوک سبھا انتخابات؛ اُترکنڑا میں کیا آنند، آننت کو پچھاڑ پائیں گے ؟ نامدھاری، اقلیت، مراٹھا اور پچھڑی ذات کے ووٹ نہایت فیصلہ کن

اُترکنڑا میں لوک سبھا انتخابات  کے دن جیسے جیسے قریب آتے جارہے ہیں   نامدھاری، مراٹھا، پچھڑی ذات  اور اقلیت ایک دوسرے کے قریب تر آنے کے آثار نظر آرہے ہیں،  اگر ایسا ہوا تو  اس بار کے انتخابات  نہایت فیصلہ کن ثابت ہوسکتےہیں بشرطیکہ اقلیتی ووٹرس  پورے جوش و خروش کے ساتھ  ...