ایک بار پھر دہلی لوٹے تمل ناڈوکے کسان، وزیر اعظم کی رہائش گاہ کے باہر مظاہرہ کیا

Source: S.O. News Service | Published on 16th July 2017, 9:53 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی، 16/جولائی (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)خشک سالی کی مار جھیل رہے تمل ناڈو کے کسانوں نے مارچ -اپریل کے مہینے میں قرض معافی کے مطالبہ کو لے دارالحکومت دہلی میں اپنے مخصوص طریقے کے احتجاج سے سب کا دھیان اپنی جانب کھینچاتھا۔اب ایک بار پھر اپنے مطالبات کے ساتھ تمل ناڈوکے کسان دہلی واپس آ چکے ہیں۔تقریبا پچاس کسانوں نے اتوار کو دہلی میں نظام الدین ریلوے اسٹیشن سے لے کر لوک کلیان مارگ پر واقع وزیر اعظم کی رہائش گاہ تک احتجاجی مارچ نکالا،اپنے مطالبات کے ساتھ کسانوں نے وزیر اعظم کی رہائش گاہ کے سامنے دھرنا دیا۔بعد میں پولیس نے مظاہرہ کر رہے پچاس سے زائد کسانوں کو حراست میں لے لیا اور پارلیمنٹ اسٹریٹ پولیس اسٹیشن لے گئی،مظاہرہ کر رہے کسان مرکزی حکومت سے راحتی پیکج اور قرض معافی کا مطالبہ کر رہے ہیں۔پچھلی دفعہ مظاہرے کے دوران کسانوں کی آواز ان سنی کردی گئی تھی۔اس کے علاوہ وزیر اعظم نریندر مودی سے بھی ملاقات کرنے کے ان کے مطالبہ کونظر انداز کر دیا گیاتھا۔مارچ -اپریل کے دوران کسانوں کے گروپ نے اپنے احتجاج  کے طریقوں سے میڈیا میں خوب سرخیاں بٹوری تھیں۔جنتر منتر پر انسانی جسموں کے حصوں جیسے کھوپڑی اور ہڈیوں کے ساتھ کسانوں نے مختلف طریقے سے احتجاجی مظاہرہ کیا،کسی دن انہوں نے سر اور داڑھی منڈوائی،تو کسی دن برہنہ ہوکر مظاہرہ کیا،چاہے وہ وزیر اعظم کے دفتر ہو یا جنتر منتر کی سڑکیں۔40دنوں تک چلے اس مظاہرے کو 25/مارچ کے دن ملتوی کرنے کے بعد کسانوں نے کہا تھا کہ وہ ایک دن پھر لوٹ کر آئیں گے۔اور 16/جولائی کو تمل ناڈو کے کسان ایک بار پھر واپس آ چکے ہیں۔واضح رہے کہ پیر سے پارلیمنٹ کا مانسون سیشن شروع ہونے والا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

سوشل میڈیا سے کیوں رہتے ہیں نتیش کماربرہم، اسٹیج پر کیا انکشاف، پہلے بخار وائرل ہوتا تھااب فرضی فوٹو اور ویڈیو وائرل ہوتے ہیں : نتیش کمار 

بہار کے وزیر اعلیٰ نتیش کمار سوشل میڈیا سے خفا ہیں، انہیں سوشل میڈیا نہیں راس آتا ہے ۔ سوشل میڈیا کے تئیں ان کی کیا رائے ہے اس سلسلے میں ا نہوں ا زخود اس کا خلاصہ کیا ہے ۔

آسارام کیس کے متعلق آنے والے فیصلہ کا لیڈران نے خیر مقدم کیا، اب وقت آگیا ہے کہ سچے اور ڈھونگی باباؤں کے درمیان تمیزکی جائے: اشو ک گہلوت 

سیاسی لیڈران اور سماجی کارکنوں نے نابالغ لڑکی کی عصمت دری کے معاملہ میں خود ساختہ بابا آسارام کو عمر قید کی سزا سنائے جانے کے فیصلہ کا استقبال کیا ہے

ہنس راج اہیر نے بائیں باز کی انتہا پسندی والے علاقوں میں موبائل رابطے کا جائزہ لیا 

امور داخلہ کے وزیر مملکت جناب ہنس راج گنگا رام اہیر نے آج یہاں ملک کے بائیں کی انتہا پسندی (ایل ڈبلیو ای) سے متاثرہ اضلاع میں موبائل رابطے کے مسئلے کا جائزہ لینے والی اعلیٰ سطحی میٹنگ کی صدارت کی۔

کابینہ نے راجستھان کے معاملے میں درج فہرست علاقوں کے اعلان کو منظوری دی 

مرکزی کابینہ نے وزیر اعظم جناب نریندر مودی کی صدارت میں آئینی حکم (سی۔ او) 114 بتاریخ12فروری1981کورد کرتے ہوئے آئین ہند کی پانچویں فہرست کے تحت راجستھان کے معاملے میں درج فہرست علاقوں کے ا علان اورنئے آئینی حکم کی اشاعت کو منظوری دی ہے۔

مرکزی وزیر داخلہ گاندھی نگر میں مغربی زونل کونسل کی 23ویں میٹنگ کی صدارت کریں گے 

گجرات، مہاراشٹر، گوا کی ریاستوں اورمرکزکے زیر انتظام علاقے دمن و دیو اور دادرا و نگر حویلی پر مشتمل مغربی زونل کونسل کی23ویں میٹنگ کل گجرات کے شہر گاندھی نگر میں منعقد ہوگی ۔مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ اس میٹنگ کی صدارت کریں گے۔