شام پر میزائل حملے کے بعد صدر ٹرمپ کی مقبولیت میں اضافہ: سروے

Source: S.O. News Service | Published on 20th April 2017, 9:27 PM | عالمی خبریں |

دمشق،20اپریل(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)شام کے ایک ہوائی اڈے پر رواں ماہ میزائل حملے کے بعد صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی مقبولیت میں قدرے بہتری آئی ہے۔کیونیپیک یونیورسٹی کی طرف سے کرائے گئے ایک نئے جائزے ’سروے‘ کے مطابق جس انداز میں صدر ٹرمپ اپنے فرائض انجام دے رہے ہیں، 40 فیصد امریکیوں نے اْس کی حمایت کی ہے۔دو ہفتے قبل ایک سروے کے مطابق 35 فیصد امریکی صدر کا کام کرنے کے طریقے کے حامی تھے۔یہ بہتری بظاہر کیمیائی حملے کے جواب میں امریکہ کی طرف سے شام پر میزائل حملے کے تناظر میں آئی۔کیونیپیک یونیورسٹی کے ’سروے پول‘ سے وابستہ ٹم مولی کہتے ہیں کہ سروے میں شامل 45 فیصد اس بات سے متفق تھے کہ جس طرح صدر شمالی کوریا کے معاملے سے ڈیل کر رہے ہیں تاہم 42 فیصد اس سے متفق نہیں تھے۔لیکن سروے میں شامل بیشتر افراد نے صدر کی طرف سیمعاشی اْمور سے متعلق طریقہ کار، قائدانہ صلاحیت اور امیگریشن کے معاملے کے بارے میں اْن کے اقدامات پر منفی رائے کا اظہار کیا۔کیونیپیک یونیورسٹی کے سروے میں ملک بھر میں 1,062 ووٹروں کی رائے شامل کی گئی۔
 

ایک نظر اس پر بھی

امریکی ڈرون حملے میں عمر خراسانی کی 9 ساتھیوں سمیت ہلاکت کی تصدیق

کالعدم تحریکِ طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) میں شامل ایک دہشت گرد گروپ جماعت الاحرار کا سربراہ عمر خالد خراسانی اپنے نو ساتھیوں سمیت افغانستان کے جنوب مشرقی صوبے پکتیا میں امریکا کے ایک ڈرون حملے میں ہلاک ہوگیا ہے۔

جبری نظر بندی کے سات سال بعد مہدی کروبی سے ملاقات کی اجازت

ایران میں سات سال سے گھر پر نظر بند اصلاح پسند رہ نما مہدی کروبی سے ملاقات پر پابندیوں میں نرمی کی گئی ہے۔ نظر بند رہ نما مہدی کروبی کے صاحبزادے حسین کروبی کا کہنا ہے کہ ایرانی قومی سلامتی کونسل نے سات سال کے بعد بعض سیاسی اور سماجی رہ نماؤں کو ان کے والد سے ملاقات کی اجازت دی ہے۔