بشار حکومت کو روکنے کے لیے عالمی برادری جواب وضع کرے: ٹرمپ اور مے کا اتّفاق

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th April 2018, 12:51 PM | عالمی خبریں |

لندن 13اپریل (ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا) برطانوی وزیراعظم کے دفتر کے ایک اعلان کے مطابق تھیریسا مے اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے درمیان شام میں کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کو روکنے کے لیے بین الاقوامی ردّ عمل کی ضرورت پر اتفاق رائے ہوا ہے۔اس حوالے سے جمعرات کے روز جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ مے کی حکومت کے ارکان نے شامی حکومت کی جانب سے کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کرنے کے مسئلے سے نمٹنے کی تائید کی ہے۔ بیان کے مطابق دونوں سربراہان نے زور دیا کہ کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کو بنا کسی جواب اور سدّ باب کے نہیں چھوڑا جانا چاہیے۔ادھر وائٹ ہاؤس کے ایک اعلان کے مطابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے شام کی صورت حال کے حوالے سے جمعرات کے روز قومی سلامتی سے متعلق اپنی ٹیم سے ملاقات کی تاہم ابھی تک حتمی فیصلہ نہیں کیا گیا ۔وائٹ ہاؤس کے بیان میں بتایا گیا ہے کہ اس سلسلے میں معلومات کا جائزہ لیا جا رہا ہے اور امریکا کے شراکت داروں اور حلیفوں سے بات چیت کی جا رہی ہے۔اس سے قبل امریکی ذمے داران نے بتایا تھا کہ انہوں نے شام میں حملے کا شکار ہونے والے افراد کے پیشاب اور خون کے نمونے حاصل کیے تھے جن سے کلورین گیس اور نَرو ایجنٹ کی موجودگی کی تصدیق ہوتی ہے۔دوسری جانب ایوان نمائندگان کے اسپیکر نے باور کرایا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے پاس اختیارات ہیں کہ وہ شام کے خلاف بین الاقوامی جوابی کارروائی کی قیادت کریں۔ ٹرمپ نے جمعرات کے روز واضح کیا کہ انہوں نے حملے کا وقت طے نہیں کیا ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ قطعی طور پر حملہ عنقریب ہو سکتا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

سری لنکا کے برخاست وزیراعظم پر پارلیمان کا اعتماد

رواں برس اکتوبر میں برخاست کیے جانے والے سری لنکن وزیراعظم رانیل وکرمے سنگھے نے پارلیمنٹ میں اعتماد کا ووٹ حاصل کر لیا ہے۔ آج بدھ کو ہونے والی رائے شماری میں 225 رکنی ایوان میں وکرمے سنگھے کی حمایت میں 117 اراکین نے ووٹ ڈالا

امریکی فوج نے شمالی شام میں مبصر چوکیاں قائم کر دیں

امریکی وزارت دفاع نے اعلان کیا ہے کہ اْس کی افواج نے شمالی شام میں مبصر چوکیاں قائم کر دیں ہیں۔ اس اعلان میں ان چوکیوں کی تعداد اور مقامات کی وضاحت نہیں کی گئی ہے۔ اسی علاقے میں شامی کردوں کی ملیشیا وائی پی جی ایک بڑے علاقے پر قابض ہے

برطانوی وزیر اعظم کو درپیش قیادت کا چیلنج: کیوں اور کیسے؟

برطانوی پارلیمان کے ارکان نے قدامت پسند وزیر اعظم ٹریزا مے کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک پیش کر دی ہے، جس پر رائے شماری آج بدھ بارہ دسمبر کو ہو رہی ہے۔ سوال یہ ہے کہ یہ تحریک پیش کیے جانے کے بعد اب ہو گا کیا ۔برطانوی وزیر اعظم ٹریزا مے نے اسی ہفتے پیر کا دن یورپ کے مختلف ممالک کے ...

سیٹلائٹ جی سیٹ ۔11کی کامیاب پرواز

ملک کے دیہاتوں اور ناقابل رسائی گرام پنچایتوں میں براڈ بینڈ کے رابطہ کو مستحکم کرنے کے ایک بڑے قدم کے طور پر ہندوستانی خلائی تحقیقی تنظیم (اسرو)کے سب سے بھاری اور جدیہ ترین مواصلاتی سیٹلائیٹ جی سیٹ۔11کو کامیابی کے ساتھ فرنچ گوانا کی خلائی بندرگاہ سے چہارشنبہ کی صبح کی اولین ...