آلوک ورما کو بڑی راحت، سپریم کورٹ نے سی وی سی کا فیصلہ پلٹا،بطور ڈائریکٹرپھربحال

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 9th January 2019, 12:13 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی:8/جنوری (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)سپریم کورٹ نے سی بی آئی سربراہ کوآلوک ورما کوبڑی راحت دی ہے۔آلوک ورما کو چھٹی پربھیجے جانے کے مرکزی حکومت کے فیصلے کوسپریم کورٹ نے پلٹ دیا ہے۔سپریم کورٹ نے کہا کہ آلوک ورما سی بی آئی کے ڈائریکٹر رہیں گے۔عدالت نے سی وی سی کے فیصلے کو منسوخ کر دیا ہے۔آپ کو بتادیں کہ سی بی آئی میں ہونے والے تنازعات کے بعد سی وی سی نے آلوک ورما کو چھٹی پر بھیج دیا تھا، جس کے نتیجے میں آلوک و ورما نے سپریم کورٹ میں اس فیصلہ کو چیلنج کیاتھا،تاہم عدالت نے کہا ہے کہ ورما بدعنوانی کے الزامات کی تحقیقات کی جا سکتی ہے۔اس کے علاوہ آلوک ورما کو اپنے عہدے پر دوبارہ بھیج دیا گیا ہے،فی الحال وہ پالیسی ساز فیصلے نہیں لے سکتے ہیں۔سپریم کورٹ نے آلوک کمار ورما کو بحال کرنے کا فیصلہ کیا،اگرچہ سپریم کورٹ ورما کے خلاف بدعنوانی کے الزامات پر مرکزی نگرانی کمیشن (سی وی سی)کی تحقیقات کو مکمل کرنے تک کسی بھی بڑے فیصلے سے ورما کو روک دیا ہے۔سپریم کورٹ نے یہ بھی کہا کہ ورما کے خلاف کسی بھی فیصلہ سی بی آئی ڈائریکٹر منتخب کرنے اور مقرر کرنے کافیصلہ بااختیار کمیٹی کی طرف سے لیا جائے گا۔چیف جسٹس رنجن گگوئی، جسٹس سنجے کشن کول اور جسٹس کے ایم جوزف کی بنچ نے آلوک ورما اور غیر سرکاری تنظیم کامن کاج کی درخواستیں سنی تھیں،اگرچہ اس معاملے میں چیف جسٹس نے ایک فیصلہ لکھا لیکن وہ آج عدالت میں موجود نہیں تھے، لہذا یہ فیصلہ جسٹس کول اور جسٹس جوزف نے سنایا۔اپنے فیصلے میں بنچ نے کہا کہ بااختیار کمیٹی مرکزی نگرانی کمیشن کی انکوائری کے نتائج کے مطابق فیصلہ کرے گی۔انہوں نے کہا کہ کمیٹی کی میٹنگ ایک ہفتے کے اندربلائی جائے۔

ایک نظر اس پر بھی

الیکشن کمیشن کا حلف نامہ - گجرات میں راجیہ سبھا انتخابات قانون کے مطابق، کمزور پڑ رہی کانگریس 

گجرات میں راجیہ سبھا انتخابات کو لے کر کانگریس کی درخواست پر الیکشن کمیشن نے حلف نامہ داخل کیا ہے الیکشن کمیشن نے دو سیٹوں پر الگ الگ انتخابات کرانے کے اپنے فیصلے کو برقرار رکھا۔

بی ایس این ایل کی حالت خراب؛ ملازمین کو جون کی تنخواہ دینے کے لیے نہیں ہیں رقم

رکاری ٹیلی کام کمپنی بی ایس این ایل نے حکومت کو ایک خط  بھیجا ہے، جس میں کمپنی نے آپریشنز جاری رکھنے میں تقریبا نااہلی ظاہر کی ہے۔کمپنی نے کہا ہے کہ رقم میں  کمی کے سبب کمپنی کے ملازمین کو  جون ماہ کی تنخواہ  تقریبا 850 کروڑ روپے  دے پانا مشکل ہے۔کمپنی پر ابھی قریب 13 ہزار کروڑ ...