سپریم کورٹ نے کہا،نہیں ملتوی ہوگی سماعت، آلو ک ورماجلد از جلدداخل کریں جواب

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 19th November 2018, 10:20 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی:19/نومبر(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)سپریم کورٹ نے پیر کو سی بی آئی کے ڈائریکٹر آلوک کمار ورما سے کہا کہ ان کے خلاف بدعنوانی کے الزامات کے بارے میں سی وی سی کی جانچ رپورٹ پر جلد سے جلد آج ہی اپنا جواب داخل کریں۔عدالت نے واضح کیا کہ اس کیس کے لئے منگل کو مقدمے کی سماعت نہیں ٹالی جائے گی۔چیف جسٹس رنجن گگوئی کی صدارت والی بنچ کو ورما کے وکیل گوپال شکرنارائن نے مطلع کیا کہ سی بی آئی ڈائریکٹر رجسٹری میں اپنا جواب داخل نہیں کر سکے ہیں۔بنچ نے کہا کہ ہم آگے بڑھانے کی تاریخ نہیں دیں گے،جتنی جلدی ممکن ہواپنا جواب داخل کریں،ہمیں بھی جواب پڑھنا پڑے گا۔اس پر گوپال نے کہا کہ آج دن میں ہی جواب کردیا جائے گا۔عدالت نے سی بی آئی ڈائریکٹر کے خلاف بدعنوانی کے الزامات پر سی وی سی کی ابتدائی رپورٹ پر 16نومبر کو آلوک ورما کو سیل بند لفافے میں پیر تک جواب داخل کرنے کی ہدایت دی تھی۔
اس سے پہلے 16نومبر کو عدالت نے کہا تھا کہ سی وی سی نے اپنی جانچ رپورٹ میں کچھ بہت ہی منفی تبصرے کئے ہیں اور وہ کچھ الزامات کی آگے کی انکوائری چاہتا ہے، اس کے لے اس کو اور وقت چاہئے۔عدالت نے سی بی آئی سربراہ آلوک ورما کے تمام حقوق واپس لینے اور انہیں چھٹی پر بھیجنے کے حکومت کے فیصلے کو چیلنج دینے والی ورما کی عرضی پر سماعت کے دوران گزشتہ جمعہ کو یہ ہدایت دی تھی۔

ایک نظر اس پر بھی

جے پی سی سے جانچ کرانے کا راستہ ا بھی کھلا ہے، عام آدمی پارٹی نے کہا،عوام کی عدالت اورپارلیمنٹ میں جواب دیناہوگا،بدعنوانی کے الزام پرقائم

آپ کے راجیہ سبھا رکن سنجے سنگھ نے کہا ہے کہ رافیل معاملے میں جمعہ کو آئے سپریم کورٹ کے فیصلے کے باوجود متحدہ پارلیمانی کمیٹی (جے پی سی) سے اس معاملے کی جانچ پڑتال کرنے کا اراستہ اب بھی کھلا ہے۔

رافیل پر سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد ، راہل گاندھی معافی مانگیں: بی جے پی

فرانس سے 36 لڑاکا طیارے کی خریداری کے معاملے میں بدعنوانی کے الزامات پر سپریم کورٹ کی کلین چٹ ملنے کے بعد کانگریس پر نشانہ لگاتے ہوئے بی جے پی نے جمعہ کو کہا کہ کانگریس پارٹی اور اس کے چیئرمین راہل گاندھی ملک کو گمراہ کرنے کیلئے معافی مانگیں۔