سولیا میں گائے اور بچھڑا لے جانے والوں پر محکمہ جنگلات کے افسران کی طرف سے فائرنگ کاالزام

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 6th August 2018, 6:15 PM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

کنّور 6؍اگست (ایس او نیوز) کاسرگوڈ کے رہنے والے ایک شخص نے الزام لگایا ہے کہ جب وہ اور اس کے ساتھی ضلع جنوبی کینرا کے سولیا سے اپنی جیپ میں ایک گائے اور بچھڑا لے کر جارہے تھے تومحکمہ جنگلات کے افسران نے ان کا پیچھا کیااورفائرنگ کرنے کے بعد زخمی کو چھوڑکر گائے اور بچھڑے سمیت جیپ اپنے ساتھ لے گئے۔

کاسرگوڈ میں راجہ پورم پولیس کے بیان کے مطابق کرناٹکا کے سولیا پولیس اسٹیشن کے حدود میں یہ واردات صبح تین بجے کے وقت پیش آئی تھی، جس میں زخمی کی شناخت ایلوکوچی کے رہنے والے نشانت کے طور پر کی گئی ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ جب نشانت اور اس کے دوست ایم حنیفہ اور کے ڈی انیش جیپ میں گائے اور بچھڑا لے کر آرہے تھے تو کرناٹکا محکمہ جنگلات کے افسران نے ان کا پیچھا کیا اور پھر نشانت کے پاؤں پر فائر کردیا۔انیش کا کہنا ہے کہ محکمہ جنگلات کے افسران نے پیچھا کرتے ہوئے بغیر کسی اشتعال کے ہوائی فائرنگ کی تو وہ اور حنیفہ ڈر کے مارے بھاگ کھڑے ہوئے مگر چونکہ نشانت گاڑی ڈرائیو کر رہا تھا اس لئے وہ بھاگ نہیں پایا۔ جب وہ لوگ تقریباً آدھے گھنٹے بعد فائرنگ کے مقام پر واپس پہنچے تو دیکھا کہ نشانت کے پیر میں گولی لگی تھی اوروہ زخمی حالت میں پڑا ہواتھا۔پھر ان دونوں نے زخمی کو لے کرتقریباً10کیلومیٹر تک پیدل چلتے ہوئے پاناتھور تک کا سفر طے کیا اور نشانت کو کان ہانگڈ اسپتال لے گئے۔وہاں سے مزید علاج کے لئے اسے پیریارم میڈیکل کالج اسپتال میں منتقل کیا گیا ہے۔

فائرنگ کا معاملہ چونکہ سولیا میں ہوا ہے اس لئے سولیا پولیس اسٹیشن میں کیس درج کرلیا گیا ہے۔ سولیا پولیس کے بیان کے مطابق محکمہ جنگلات کے افسران کا کہنا ہے انہوں نے نشات کو گاڑی روکنے کا اشارہ کیا مگر اس نے ان کی ہدایت پر عمل نہیں کیا۔ پولیس نے کہا ہے کہ بالسٹک جانچ کے بعد ہی پتہ چلے گا کہ فائرنگ میں گولیاں استعمال ہوئی تھیں یا پھر چھرّے (pellets)استعمال ہوئے تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

کاروار:انکولہ ۔ہبلی ریلوے لائن کی سدراہ بنے ماحولیاتی این جی اوز کو ملنے والی مالی امداد کی جانچ کریں : رکن اسمبلی روپالی نائک کامرکزی ریلوے وزیر سے مطالبہ

ریاست کے ساحلی علاقے سے شمالی کرناٹک  کو جوڑنے والی ’قسمت کی ریکھا‘ انکولہ ۔ ہبلی ریلوے لائن کی تعمیرمیں جو ماحولیاتی اداروں ، این جی اوزاور ماہرین سدراہ بنے ہوئے ہیں دراصل یہ تمام  بیرونی ممالک کی  کروڑوں دولت کے تعاون سے بےبنیاد چیخ وپکار کررہے ہیں کاروار انکولہ کی رکن ...

کاروار میں انکولہ ۔ہبلی ریلوے لائن منصوبےکو جاری کرنےعوامی احتجاج : قومی شاہراہ بند کرنے پر احتجاجی پولس کی تحویل میں

انکولہ۔ ہبلی ریلوے لائن منصوبہ، سرحد علاقہ کاروار میں صنعتوں کا قیام سمیت مختلف مانگوں کو لے کر لندن برج پر قومی شاہراہ کو بند کرتے ہوئے احتجاج کی تیاری میں مصروف کنڑا چلولی واٹال پارٹی کے واٹال ناگراج سمیت 21جہدکاروں کو پولس نے گرفتار کرنے کے بعد رہاکردیا۔

لوک سبھاانتخابات کی تیاری میں مصروف الیکشن کمشن :اتراکنڑا  ضلع میں 11.40 لاکھ رائے دہندگان : 14ہزار ووٹرس آؤٹ تو 12ہزار ووٹرس اِن

الیکشن کمیشن  آئندہ ہونےو الے لوک سبھا انتخابات کی تیاری میں مصروف ہے۔اندراج و اخراج   اور ترمیم کے بعد تشکیل دی گئی  رائے دہندگان کی  فہرست کے مطابق ضلع کے 6ودھان سبھا حلقہ جات میں کل 11،40،316 ووٹر ہیں۔ چونکہ انتخابات کے قریب تک ووٹروں کے اندراج کے لئے موقع دیا گیا ہے تو رائے ...

شرالی میں قومی شاہراہ کی توسیع کو لےکر ہزاروں عوام  شاہراہ روک کیا  احتجاج : مجموعی استعفیٰ کا انتباہ اور الیکشن بائیکاٹ کا اعلان

تعلقہ کے شرالی میں دن بدن قومی شاہراہ کی توسیع کو لےکر معاملہ گرم ہوتا جارہاہے۔ شرالی میں قومی شاہراہ کی توسیع 45میٹر سے کم کرکے 30میٹر کئے جانےکی مخالفت کرتے ہوئے جمعرات کو ہزاروں لوگو ں نے قومی شاہراہ روک کر سخت احتجاج درج کیا۔ اس دوران عوامی مانگوں کو منظوری نہیں دی گئی تو ...

شرالی میں قومی شاہراہ کی توسیع کو لےکر ہزاروں عوام  شاہراہ روک کیا  احتجاج : مجموعی استعفیٰ کا انتباہ اور الیکشن بائیکاٹ کا اعلان

تعلقہ کے شرالی میں دن بدن قومی شاہراہ کی توسیع کو لےکر معاملہ گرم ہوتا جارہاہے۔ شرالی میں قومی شاہراہ کی توسیع 45میٹر سے کم کرکے 30میٹر کئے جانےکی مخالفت کرتے ہوئے جمعرات کو ہزاروں لوگو ں نے قومی شاہراہ روک کر سخت احتجاج درج کیا۔ اس دوران عوامی مانگوں کو منظوری نہیں دی گئی تو ...

بھٹکل انجمن بی بی اے کی طالبہ مریم حرا کو  کرناٹکا یونیورسٹی سطح پر دوسرا رینک

انجمن انسٹی ٹیوٹ آف مینجمنٹ بھٹکل کی طالبہ مریم حرابنت ارشاد ائیکری ڈاٹا نے کرناٹکا یونیورسٹی دھارواڑ کے زیر اہتمام اپریل 2018میں منعقد ہوئی بی بی اے امتحانات میں پوری یونیورسٹی میں دوسرارینک حاصل کرتے ہوئے انجمن اور شہر کا نام روشن کیا ہے۔