چنتامنی میں عصمت دری کی پھرواردات؛ نویں جماعت کی طالبہ بنی عصمت دری کا شکار؛دو گرفتار

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th January 2017, 2:18 PM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

چنتامنی:10 /جنوری(محمد اسلم/ایس او نیوز) چنتامنی میں عصمت دری کی پھر ایک واردات سامنے آئی ہے اور اس بار نویں جماعت میں زیر تعلیم ایک طالبہ عصمت دری کا شکار ہوئی ہے۔ ذرائع سے ملی اطلاع کے مطابق یہ طالبہ تعلقہ کے کترگوپے کی ساکنہ ہے۔ بتایا گیا ہے کہ  وہ ہر دن لکشمی دیونا کوٹے گاؤں کے سر کاری اسکول کو پیدل چلتے ہوئے اپنے گھر واپس آیا کرتی تھی لیکن گذشتہ 7دسمبر 2016 کواسکول جانے والی طالبہ واپس گھر نہیں لوٹی تو لڑکی کے والد نے 9 دسمبر 2016کو چنتامنی رورل پولیس تھانہ پہنچ کر معاملہ درج کرایا جس میں انہوں نے شبہ ظاہر کیا کہ ان کی بیٹی کو چکبالاپور ضلع سدلگٹہ تعلق کندل گورکی گرام کا ساکن سوریش اور پربھاکرنامی لوگوں نےاغواء کیا ہوگا۔ پولیس نے اس خصوص میں معاملہ درج کرتے ہوئے لڑکی کا پتہ لگانے ایک خصوصی ٹیم تشکیل دی جس کی نگرانی چکبالاپور ضلع سپرٹنڈنٹ آف پولیس چائترا ڈی وائی ایس پی نے کی ۔ 13دسمبر 2016کو پولیس اہلکاروں نے لڑکی کا پتہ لگایا اوراُسے پولیس تھانہ لے جا کر پوچھ تاچھ کی گئی تو طالبہ نے پولیس کو سارا واقعہ بتایا کہ وہ جب اسکول ختم کرکے اپنے گھر پیدل جا رہی تھی تو سریش اور پربھاکرنےاسے پکڑ کر کسی دیہات میں لے گئے تھے جہاں اُسے کمرے میں باندھ کررکھا گیا۔ اور رات بھرسریش اور پربھا کردونوں  نے اس کے ساتھ دست درازی کی۔

اس ضمن میں آج چنتامنی رورل پولیس اہلکاروں نے سریش اور پربھاکردونوں کو سدلگٹہ تعلقہ کندل گورکی گاؤں سے گرفتارکرلیا اوران کے خلاف رورل پولیس تھانہ میں دفعہ 363,366A,376D,343,506,سیکشن 4,8,12  پکسو ایکٹ ۔2012کے تحت معاملہ درج کرلیا۔

خیال رہے کہ دو روز قبل ہی چنتامنی کے کریپلی وینکٹشوا پرائیویٹ اسکول کی ایک چہارم جماعت کی معصوم بچی کے ساتھ بھی عصمت دری کا واقعہ پیش آیا تھا۔ اوراب نویں جماعت کی طالبہ کے ساتھ عصمت دری کا معاملہ سامنے آیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

اسکولی بچوں کے سوشیل میڈیا استعمال کرنے پر پابندی،پابندی پامال کرنے والوں کو اسکول سے نکال دینے کی تاکید

ریاستی محکمۂ تعلیمات نے کمسن ذہنوں پر سوشیل میڈیا کے اثرات کو دیکھتے ہوئے سختی سے یہ فرمان جاری کیا ہے کہ 13سال کی عمر تک کے بچوں کو سوشیل میڈیا کا استعمال کرنے کی اجازت قطعاً نہ دی جائے۔

مودی حکومت کے انسداد گؤ کشی قانون کو کمار سوامی نے قرار دیا خوش آئند: گائیوں کی دیکھ بھال کیلئے مراکز قائم کرنے کا بھی مشورہ

مرکزی حکومت کی طرف سے کل ملک بھر میں لاگو کئے گئے انسداد گؤ کشی قانون کا سابق وزیراعلیٰ اور ریاستی جنتادل(ایس) صدر ایچ ڈی کمار سوامی نے خیر مقدم کیااور کہاکہ مرکزی حکومت کو چاہئے کہ اس قانون کو نافذ کرنے کے ساتھ ملک بھر میں گائیوں کی دیکھ بھال کیلئے مراکز قائم کرے۔

موسلادھار بارش کی وجہ سے شہر میں عام زندگی متاثر،نشیبی علاقے زیر آب ، دوسو سے زائد درخت اور متعدد بجلی کے کھمبے زمین بوس

شہر میں کل رات ہوئی زبردست بارش کے سبب 200 سے زائد مقامات پر درخت اور بجلی کے کھمبے اکھڑگئے اور ساتھ ہی نہ صرف نشیبی علاقے بلکہ چند مشہور ومعروف سرکاری اور دیگر عمارتوں میں بھی بارش کا پانی گھس آیا۔

ملائیشین آرٹسٹ نے آب زم زم سے قرآن پاک لکھنے کا اعلان کردیا

زم زم کے پانی کو اب تک صرف پینے کے لیے استعمال کیا جاتا رہا ہے، ملائیشیا کے ایک مصور اور آرٹسٹ نے مقدس پانی کو اپنے فن کے فروغ کے لیے پہلی بار استعمال کیا ہے۔عرب ٹی وی کے مطابق ملائیشین فن کار عبدالحلیم بن عمرنے اپنے فن مصوری اور خطاطی کے لیے زمزم کے استعمال کا شرعی جواز معلوم ...