کابینہ نے چینی ذخائر حد کی مدت چھ ماہ کے لیے بڑھانے کی منظوری دے دی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 20th April 2017, 11:19 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی، 19؍اپریل(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا )حکومت نے کھلی مارکیٹ میں چینی کی دستیابی بڑھانے اور قیمت میں اضافہ کو روکنے کے مقصد سے اس کے ذخائر کی حد چھ ماہ یعنی اکتوبر تک کے لیے آج بڑھا دی۔فی الحال چینی ملک کے خوردہ بازاروں میں 42-44روپے کلو فروخت کی جا رہی ہے۔مقامی مارکیٹ میں چینی کی دستیابی کی کمی کی وجہ قیمتوں پر دباؤ بنے رہنے کا خدشہ ہے۔ذرائع کے مطابق وزیر اعظم نریندر مودی کی صدارت میں کابینہ کی اقتصادی معاملات کی کمیٹی نے چینی کیلئے ذخائر حد چھ ماہ بڑھانے کی وزارت برائے خوراک وصارفین کی تجویزکومنظوری دے دی ہے۔اس اقدام سے عام لوگوں کے لیے مناسب شرح پر چینی کی دستیابی میں بہتری کی امیدہے۔ساتھ ہی اس ذخیرہ اندوزی اور منافع خوری کے رجحان پر لگام لگنے کا بھی امکان ہے۔فی الحال مغربی بنگال کے علاوہ ملک کے دیگر حصوں میں چینی تاجروں کے لئے ذخائرکی حد 500ٹن اور کاروبار کی حد 30دن ہے۔مغربی بنگال میں ذخائر کی حد1000ٹن ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

علی گڑھ مسلم یونیورسٹی ٹیچرس ایسوسی ایشن کی جانب سے سالانہ ڈنر کا اہتمام;وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور سمیت دیگر معززین کی شرکت

علی گڑھ مسلم یونیورسٹی ٹیچرس ایسوسی ایشن کی جانب سے یہاں اے ایم یو اسٹاف کلب میں سالانہ ڈنر کا اہتمام کیا گیا، جس میں بطور مہمان خصوصی وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور نے شرکت

سیلاب متاثرین کی راحت رسانی میں کوتاہی ناقابل برداشت،مقامی انتظامیہ کوسخت ہدایات;کشن گنج کے ایم پی مولانااسرارالحق قاسمی کی نگرانی میں سیلاب متاثرین کے درمیان اشیاء خوردنی کی تقسیم

سیلاب کی تباہی سے دوچارکشن گنج،پورنیہ اور سیمانچل کے دیگر اضلاع میں جاں بحق ہونے والے افراد کی تعداد اب تک ڈیڑھ سوسے متجاوزہوچکی ہے