دستور کو تبدیل کرنے والی بات کہنے والے آننت کمار ہیگڈے کے حلقہ میں ہی پہنچ کر گرجے فلم ایکٹر پرکاش رائے؛ کہا ہماری خاموشی ہمیں مار ڈالے گی

Source: S.O. News Service | Published on 14th January 2018, 3:16 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

سرسی 14/جنوری (ایس او نیوز) مرکزی وزیر آننت کمار ہیگڈے کے ہی حلقہ میں پہنچ کر اُن کے دستور کو تبدیل کرنے والے بیان کی سخت مذمت کرتے ہوئے فلم ایکٹر پرکاش رائے نے گرج کر کہا کہ دیش کو لگی ایک بڑی بیماری کا علاج کرنا ہے تو دستور کا احترام کرنے والے سبھی لوگوں کو متحد ہوکر اس بیماری کو دور کرنا ہوگا۔ ’بھائی چارگی کو فروغ دینے کے مقصد سے منعقدہ  ’ہمارا دستور ہمارا فخر ‘کے موضوع پر سرسی کے راگھویندرا مٹھ میں سنیچر صبح  کو منعقدہ ریاستی اجلاس کا افتتاح کرنے کے بعد معروف دانشور اور فلم اداکار پرکاش رائے خطاب کررہے تھے۔ 

انہوں نے کہا کہ اس وقت دیش کو ایک بہت بڑی بیماری لگ گئی ہے۔ اور جس کسی کو بھی اس ملک کے دستور پر فخر ہے ، اسے چاہیے کہ اس مرض کو ختم کرنے کی جدوجہد کرے۔انہوں نے کہا کہ ہمارے لئے تاریخ پر بات کرنے کے  لئے وقت نہیں ہے ،لیکن مستقبل کے بارے میں گفتگو کرنے اور سوچنے کے بھر پور مواقع موجود ہیں۔ اس لئے ہمیں مستقبل کے بارے میں جرأت مندی کے ساتھ بات کرنی چاہیے۔ورنہ ہماری خاموشی ہمیں مار ڈالے گی۔

پرکاش رائے کے مطابق’’ زعفرانی بریگیڈ کا رنگ اب پوری طرح کھل کر سامنے آگیا ہے۔ یہ لوگ جو لاشوں پر سیاست کررہے ہیں وہ میرے دیش کے اصلی ہندو نہیں ہیں۔ان کا رنگ بھی زعفرانی نہیں ، بلکہ وہ کوئی اور ہی رنگ ہے۔

آننت کمار ہیگڈے کے حالیہ بیانات کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے پرکاش رائے نے کہا کہ ضلع کے ایم پی اننت کمار ہیگڈے کرکٹ کھیلنے کے لئے میدان میں اُتر تے ہیں اور  فٹ بال کھیل کھیلتے ہیں، ایسا کرنے کی صورت  میں گیند اُن کے چہرے کو بگاڑنا طئے  ہے ۔ پرکاش رائے نے کہا کہ آننت کمار ہیگڈےجو  من میں آیا بول دیتے ہیں ۔ انہیں  ملک کے دستور کا کوئی علم نہیں ہے اور وہ اس طرح کی بیان بازی سے سیاسی فائدہ اٹھانے کی کوشش کررہے ہیں۔‘‘

انہوں نے کہا کہ عوام کی معصومیت اور خاموشی کا فائدہ اٹھا کرسیاسی پارٹیاں الیکشن ختم ہونے تک امن اور بھائی چارگی کے ماحول کو بگاڑنے کی کوشش میں لگ گئی ہیں۔عوام کو چاہیے کہ ایسی پارٹیوں کی کھل کر مخالفت کریں۔ہمیں یہ ثابت کرنا ہوگا کہ اس طرح کی سیاست سے صرف دکھ نہیں ہوتا بلکہ ہمیں غصہ بھی آتا ہے۔پرکاش نے پوچھا کہ اس سرزمین پر ایک طبقے کا جینا حرام کرنے والے کیا ہندو ہوسکتے ہیں؟احتجاجی مظاہرے کرکے ٹائروں کو آگ لگادینا کیا ہندو توا ہو سکتاہے؟

پرکاش رائے  کا کہنا تھا کہ زعفرانی رنگ دیکھ کر سوامی ویویکا نند کی یاد آتی ہے۔ لیکن آج کل کچھ بددماغ لوگ زعفرانی رنگ میں رنگے نظر آتے ہیں اور ایسے ہی لوگوں سے سیاست مذہبی منافرت میں بدل جاتی ہے۔جو اصلی ہندو ہیں وہ کبھی بھی فرقہ وارانہ بھائی چارگی کو برباد کرنے کی کوشش نہیں کریں گے۔

پرکاش رائے نے خطاب کے ا بتدا میں کہا کہ جیسے ہی وہ پروگرام میں شریک ہونے کے لئے  پہنچے، مقامی پولس نے  اُنہیں  مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ میں یہاں اشتعال انگیز خطاب نہ کروں۔  پرکاش رائے نے کہا کہ میں اشتعال انگیز تقریر کرنے والوں میں سے نہیں ہوں، ایسی تقریر کرنے والے اسی مقام (سرسی) میں موجود ہیں۔

سیمینار سے قبل ایک ریلی نکالی گئی تھی۔گجرات سے تشریف فرما حقوق انسانی کے کارکن میک وان مارٹن نےسرسی اولڈ بس اسٹائنڈ کے بالمقابل بڈکی بیل میں مہاتما گاندھی کے مجسمے کو پھولوں کی مالا پہنانے کے بعد ریلی کو ہری جھنڈی دکھائی تھی، ریلی مختلف راستوں سے ہوکر سرسی کے  رگھویندرا مٹھ پہنچی تھی

پروگرام میں خطاب کرتے ہوئے میک وان مارٹن نے سپریم کورٹ کے چار ججوں کے میڈیا کے سامنے پہنچ کر دستور کو بچانے کی بات  پر سخت تشویش کا اظہار  کیا۔ انہوں نے کہا کہ  ملک کی آزادی کے 70 سال بعد اب ملک کی جمہوریت خطرہ میں ہے، ایسا پہلی بار ہوا ہے کہ ججوں کو میڈیا کے سامنے آکر عدلیہ میں ہورہی  من مانی کا انکشاف کرنا پڑا ہے،ا س سے ملک کے عدلیہ پر منڈلانے والے خطرات کو دیکھا جاسکتا ہے۔

اس موقع پرمفکر اور مصنف رحمت تریکیرے نے صدارتی خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مختلف فرقوں کے درمیان آپسی تصادم بڑھتا جا رہا ہے اور انسانیت کا جذبہ گھٹتا جارہا ہے۔اقتدار پر آنے کے لئے انسانی رشتوں میں آگ لگانے کا کام ہورہا ہے۔عقل اور ہوش رکھنے والے ہر انسان کو اس پر توجہ دینا ضروری ہے۔ سپریم کورٹ کے جج صاحبان نے ہی بیان دیا ہے کہ جمہوریت خطرے میں ہے۔جب ایسے لوگ سامنے ہوں جن کا یہ نظریہ ہوکہ اگر ایک لاش گرتی ہے تو ہم جیت سکتے ہیں، تو ایسی صورت میں جمہوریت کے بارے میں بات کرنا ضروری ہوجاتا ہے۔

سمینار میں کئی دیگر دانشور حضرات، سماجی کارکن اور سنئیر صحافیوں نے بھی خطاب کرتے ہوئے ملک کے دستور کو بچانے  اور ملک میں بھائی چارگی کا عام کرنے کے تعلق سے اپنے اپنے خیالات کا اظہار کیا۔

پورا پروگرام ساحل آن لائن پر لائیو ٹیلی کاسٹ کیا گیا تھا، جس کی ریکارڈنگ ذیل میں دی جارہی ہے:

 

ایک نظر اس پر بھی

منگلورو: زیر سماعت قیدیوں نے ڈسٹرکٹ جیل میں سیکیوریٹی اسٹاف پر کیا حملہ

ڈسٹرکٹ جیل میں زیر سماعت قیدیوں کی طرف سے دو سیکیوریٹی اسٹاف پر حملہ کیے جانے کا حیرت انگیز واقعہ پیش آیا ہے۔ موصولہ رپورٹ کے مطابق قتل کے الزام میں قید مشتاق اور اس کے دیگر ساتھیوں نے مل کر سیکیوریٹی اسٹاف پر حملہ کیا ہے۔

بھٹکل میں کوسموس اسپورٹس سینٹر کے زیراہتمام تعلیمی ایوارڈ کا خوبصورت پروگرام ؛ کنڑا سیکھنے اور کنڑا اکیڈمی قائم کرنے مقررین نے دیا زور

وسموس اسپورٹس سینٹر کے زیر اہتمام خلیفہ محلہ کے ہونہار طلبہ و طالبات سمیت علاقہ کے سرگرم نوجوانوں اور اسپورٹس میں نمایاں پرفارمینس پیش کرنے والے کھلاڑیوں کی تہنیت کے لئے جمعہ بعد نماز عشا ایک خوبصورت پروگرام  منعقد کیا گیا  جس  میں مقررین نے طلبا کے ساتھ ساتھ حاضرین پر ...

بھٹکل شمس اسکول میں پہلی مرتبہ آئی سی ایس ای نصاب کے دسویں جماعت کے امتحانات شروع

اترکنڑا ضلع کے بھٹکل تعلقہ ہیبلے پنچایت حدود میں واقع نیو شمس اسکول کے امتحانی سنٹر  میں پہلی مرتبہ آئی سی ایس ای نصاب کی دسویں جماعت کے سالانہ امتحانات کا انعقاد ہوا۔ جمعہ سے شروع امتحان میں کل 49طلبا و طالبات شریک ہوئے۔

24جولائی سے پہلے فاریسٹ اتی کرم داروں کو نکال باہر کرنے سپریم کورٹ کا آرڈر : ریاستی حکومت پر ضلع اتی کرم داروں کی امید بھری نگاہ

فاریسٹ حق قانون کے تحت فاریسٹ مکینوں کے طورپر اپنا حق جتانے کے بعد انکار کئے گئے فاریسٹ مکینوں کو  ایک ساتھ تمام کو نکال باہرکرنے سپریم کورٹ تین رکنی بنچ نے 13فروری کو فیصلہ صادر کیا ہے۔ سپریم کورٹ کا فیصلہ فاریسٹ مکینوں  (اتی کرم دار )پر بجلی بن کر گراہے ، فاریسٹ افسران کو اتی ...

اکرم پاشاہ ہاسن ضلع کے نئے ڈپٹی کمشنر

ہاسن ضلع کے نئے ڈپٹی کمشنر اکرم پاشاہ آئی اے ایس نے آج عہدہ کا جائزہ لے لیا ۔ 2012ء میں آئی اے ایس افسر کی حیثیت سے ترقی پانے والے اکرم پاشاہ اس سے پہلے ساڑھے پانچ سال مائنارٹی ڈائرکٹوریٹ میں ڈائرکٹرکی حیثیت سے بہترین خدمات انجام دے چکے ہیں ۔

مرکزی ریلوے وزیر پیوش گوئل کی موجودگی میں کمار سوامی نے سب اربن ریلوے کو منظوری دی

وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی آج اپنے رہائشی دفتر کرشنا میں مرکزی وزیر برائے ریلوے و کوئلہ پیوش گوئل سے ملاقات کی ریاست میں کوئلہ ( ایندھن)کی فراہمی اور سب اربن ریلوے منصوبہ کے سلسلہ میں تبادلہ خیال کیا ۔

وقف بورڈ انتخابات : اب تک ماڈل بیلیٹ پیپر جاری نہ کرنے پرامیدوار برہم،الیکٹرول میں بوگس ووٹروں کو شامل کرنے کاالزام

کرناٹک اسٹیٹ وقف بورڈ کے 2مارچ کو ہونے والے انتخابات کیلئے ماڈ ل بیلٹ پیپر آج تیار کئے جانے کی اطلاع ملی ہے ، جبکہ یہ ماڈل بیلٹ پیپر 18فروری کو ہی تیار کیا جانا تھا، بروقت ماڈل بیلٹ پیپر نہ ملنے سے بیزار امیدوارانتخابی مہم چلانے دوروں پر نکل چکے ہیں۔

بی بی ایم پی میں چہرہ شناس بائیو میٹرک نظام ضروری گنڈنا کا مطالبہ۔افسران اور ملازمین کی جانب سے لاپروائی کئے جانے کا الزام

رواں سال کے بروہت بنگلورو مہانگر پالیکے( بی بی ایم پی) بجٹ میں کئے گئے اعلان کے مطابق چہرہ پر کھنے والے بائیو میٹرک نظام لازمی طورپر جاری کئے جانے سے ہی بہتر انتظامیہ ممکن ہے۔