دہلی والوں کے لئے اچھی خبر، 20لاکھ گھر بننے کا راستہ صاف،89گاؤں کی شہرکاری کاحکم

Source: S.O. News Service | Published on 19th May 2017, 11:49 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی19مئی(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)دہلی میں لینڈ گرہ بندی پالیسی کو لاگو کرنے کا راستہ صاف ہوگیاہے۔لیفٹیننٹ گورنر انل بیجل نے شمالی اور جنوبی دہلی کے89گاؤں کی شہرکاری کاحکم دے دیاہے۔یہ پالیسی نافذ ہونے کے بعددہلی کے بیرونی علاقوں میں ترقی کو تیز کرے گی۔تقریباََ20لاکھ فلیٹ تیارہوسکیں گے۔ایل جی نے دارالحکومت کے89دیہات کو شہرکاری دیہات کا درجہ دینے کا حکم جاری کر دیاہے۔ا مکان بنانے کی مرکزی حکومت کی منصوبہ بندی کا راستہ بھی صاف ہو گیاہے۔مرکزی حکومت نے 2سال پہلے 2015میں ہی پالیسی کی منظوری دے دی تھی۔تقریباََ دوسال فائل دہلی سرکار کے پاس منظوری کے انتظار میں اٹکی ہوئی تھی۔دہلی حکومت کی جانب سے ان گاؤں کو شہرکاری دیہات کا درجہ دینے کے معاملے میں کئی طرح کی دشواریاں گنائی گئیں۔دہلی حکومت نے لینڈ پالیسی کومنظورکرنے کے بدلے میں مرکزی حکومت سے زمین دلانے کی شرط رکھی۔جس پررضامندی نہیں بن پا رہی تھی۔ایل جی انل بیجل کی جانب سے تمام 89دیہات کو شہرکاری دیہات کادرجہ دیتے ہوئے نوٹیفکیشن جاری کیا گیا ہے۔حکم کے مطابق شمالی دہلی کے پچاس گاؤں اور جنوبی دہلی کے 39دیہات کوشہرکاری دیہات کادرجہ دیاگیا ہے۔ڈی ڈی اے کی جانب سے تقریباََ 115دیہات کو پہلے ہی شہرکاری دیہات کا درجہ دیا جا چکا ہے۔بتایا جاتا ہے کہ کل 200دیہی علاقوں کو اس پالیسی میں شامل کرنے کی ڈی ڈی اے کا یہ منصوبہ صرف دہلی حکومت کی منظوری نہ ملنے کی وجہ سے اب تک اٹکا ہواتھا۔


 

ایک نظر اس پر بھی

کشمیر میں موبائل انٹرنیٹ سروس معطل

ترال میں سیکورٹی فورسز کے ساتھ تصادم میں سبزار احمد بھٹ کے مارے جانے کے پیش نظر احتیاطی طور پر آج وادی کشمیرمیں موبائل انٹرنیٹ سروس معطل کر دی گئی۔

یوگی حکومت لاء اینڈرآرڈرلاگو کرنے میں بری طرح ناکام،ہرطرف خوف کا ماحول، دلتوں کودبایا جارہا ہے؛ کانگریس نائب صدر کا الزام

کانگریس نائب صدر راہل گاندھی ہفتہ کو نسلی تشدد سے متاثر سہارنپور کے متاثر خاندانوں سے ملنے پہنچے۔یہاں انہوں نے کچھ متاثرہ خاندانوں سے ملاقات کی۔

پانڈیچری کے وزیراعلیٰ کا مویشیوں کی فروخت پرپابندی سے متعلق نوٹیفیکشن واپس لینے کامطالبہ؛ حکومت کوکھانے پینے کی پسندپربندشیں مسلط کرنے کاکوئی حق نہیں

پانڈیچیری کے وزیراعلیٰ وی نارائن سامی نے ذبح کے لئے مویشیوں کی فروخت پرپابندی لگانے کے نوٹیفکیشن جاری کرنے پرمرکزی حکومت کوآڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ حکومت کو لوگوں کے کھانے پینے کی پسندپربندشیں مسلط کرنے کاکوئی حق نہیں ہے۔