سونو نگم نے بال منڈوا کر چیلنج کو کیا قبول،کہا،کسی مذہب کے خلاف نہیں ہوں

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 20th April 2017, 6:06 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی19اپریل(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) مسجد کے باہر لاؤڈ اسپیکرزمعاملہ میں سنگر سونو نگم نے بدھ کو پریس کانفرنس سے خطاب کیا۔ اس کے بعد سونو نے سر بھی منڈوایا۔ بتا دیں کہ مغربی بنگال مائناریٹری یونائیٹڈ کونسل کے وائس پریسیڈنٹ سیدشاہ قادری نے سونو نگم کے خلاف چیلنج کیاتھااور کہا تھا کہ جو شخص سونو نگم کو گنجا کرے گا اور پرانے جوتے کی مالا پہنائے گا،اس کو 10 لاکھ روپے کا انعام دیا جائے گا۔یعنی خودسے ہی سونونگم نے ایک ہی چیلنج کوقبول کیا۔سیدشاہ قادری نے باقی مطالبے پوراکرنے کابھی مطالبہ کردیا۔پریس کانفرنس میں سونونے کہا کہ راستے میں جو جشن ہوتے ہیں، وہ لوگ داداگیری کرتے ہیں، ناچتے ہیں۔ ایسا کرنے سے پولیس کی تکلیف ہوجاتی ہے۔ سونو نگم بولے کہ لوگ مذہب کے نام پر شراب پیتے ہیں، فلمی گانے بجاتے ہیں۔سونو نے اپنے بیان پرکہاکہ آپ کو دانشور سمجھ کر میری بات کو اچھی طرح پیش کرنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ اپنے بچوں کو اچھا ماحول دیجئے۔اگرمیں کہہ رہا ہوں آپ کو یہ اس طرح کیوں لے رہے ہیں۔ سونونے کہا کہ نہ میں سیکولر ہوں اور نہ ہی میں نے دایاں ونگ ہوں نہ لیفٹ ونگ۔سونو نے کہا کہ میں بغیر پلان کئے کہہ رہا ہوں، کوئی غلطی ہے تو معاف کیجئے گا۔ میں نے ایک سوشل ٹاپک پر بات کر رہا ہوں، اس سے مذہب کا کوئی لینا دینا نہیں ہے۔ سونو نے کہا کہ یہ وہی ہے جس کا ذکر میں کر رہا تھا۔ میں نے عالم کو بلایا ہے۔ یہ کوئی چیلنج نہیں ہے، انہوں نے کہا کہ یہ بال جو دیکھ رہے ہیں میں کاٹ دوں گا۔ انہوں نے کہا کہ نہ میں ہندو ہوں، نہ مسلم، میں سب میں یقین کرتا ہوں۔ وہ بولے کہ میں اجمیر میں بھی گیا تھا، پشکر مندر بھی گیا تھا۔ اگر کسی میں دم ہے تو ایسی باتوں پر بول کر دکھائیں۔انہوں نے کہا کہ کیا میرے مسئلہ اٹھانے میں کہیں غلطی ہو گئی، کیا میری ٹائمنگ غلط ہو گئی؟۔ انہوں نے کہاکہ کیا یہ صحیح وقت نہیں تھا، یوگی کی حکومت آنے سے اس کا کیا تعلق ہے؟ سونونے کہا کہ میں نے یہ مسئلہ پکڑا ہے، باقی مسائل کو تمہیں پکڑنا ہے۔آج تک کے سوال پر سونو بولے کہ مجھے نہیں پتہ کہ مسجد کہاں ہیں، اس میں کوئی بھی حقیقت نہیں ہے کہ میں کسی کو پریشان کر رہا تھا۔سونو نے کہا کہ میں ایک بات واضح کرنا چاہتا ہوں، کچھ لوگوں نے کہا کہ محمد کیوں لکھا، محمد صاحب کیوں نہیں کہا۔ یہ انگلش کامسئلہ ہے۔ شیو کو انگلش میں شیوا، رام کو راما کہا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جیسے کسی مسلمان کی زبان میں لارڈ یسوع نہیں آرہاہے۔ سونونے کہاکہ اگر یہ کسی نے مسئلہ بنایا ہے، یہ میرا مقصد نہیں تھا کہ نبی کی مذمت کروں۔ ٹوئٹر میں انسان سوچ سمجھ کرچھوٹاچھوٹا لکھتے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

ممبئی پولس میں 1137اسامیوں پر بھرتی کا اعلان؛ جمعیۃ علماء نے مسلم نوجوانوں سے کی، حصہ لینے کی اپیل

دنیا بھر میں مشہور ممبئی پولس نے اپنے محکمہ میں ۱۱۳۷؍ اسامیوں کی بھرتی  کے لئے عرضیاں  طلب کی  ہیں اور اس تعلق سے اپنی ویب سائٹ پر مکمل اعلانیہ جاری کیا ہے جس سے مسلم نوجوانوں کو استفادہ حاصل کرنا چاہئے تاکہ پولس محکمہ میں مسلمانوں کے گرتے تناسب پر روک لگ سکے اور اس میں کچھ ...

بیف کھانا ہے تو کھائو، مگر اس کا جشن کیوں ؟ نائب صدر وینکیا نائیڈو نے پوچھا سوال؛ کہا میں بھی گوشت خور ہوں

نائب صدر جمہوریہ وینکیا نائیڈو نے بیف یا کِس فیسٹول منانے پر سوال کھڑا کرتے ہوئے پوچھا  کہ اگر آپ کو بیف کھانا ہے تو شوق سے کھائیے، بوسہ لینا ہے تو لیجئے، مگر  اس کے لئے فیسٹول منعقد کرنے کی کیا ضرورت ہے ؟

ممبئی پولس میں 1137اسامیوں پر بھرتی کا اعلان؛ جمعیۃ علماء نے مسلم نوجوانوں سے کی، حصہ لینے کی اپیل

دنیا بھر میں مشہور ممبئی پولس نے اپنے محکمہ میں ۱۱۳۷؍ اسامیوں کی بھرتی  کے لئے عرضیاں  طلب کی  ہیں اور اس تعلق سے اپنی ویب سائٹ پر مکمل اعلانیہ جاری کیا ہے جس سے مسلم نوجوانوں کو استفادہ حاصل کرنا چاہئے تاکہ پولس محکمہ میں مسلمانوں کے گرتے تناسب پر روک لگ سکے اور اس میں کچھ ...

22فروری ووٹر لسٹ میں نام داخل کرنے کی آخری تاریخ؛ کرناٹکا کے عوام توجہ دیں

اگلے دوایک مہینوں میں منعقد ہونے والے اسمبلی انتخابات میں حق رائے دہی استعمال کرنے کے لئے فہرست رائے دہندگان (ووٹرلسٹ) میں نام شامل کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔ اس سلسلے میں الیکشن کمشنر  کی طرف سے جاری بیان کے مطابق 22فروری نام درج کروانے کی آخری تاریخ ہوگی۔

بنگلور میں 12 مارچ سے ہوگی ،کے اے ایس اور آئی اے ایس امتحانات کیلئے مفت کوچنگ؛ مسلمانوں کے لئے سنہرا موقع

اگلے ماہ 12 مارچ سے طہ ایجوکیشنل ٹرسٹ بنگلور کی جانب سے کے اے ایس اور آئی اے ایس امتحانات میں حصہ لینے والوں کے  لئے  مفت کوچنگ کا انتظام کیا گیا ہے، جس میں شریک ہوکر امتحانات میں حصہ لینے والے خواہش مند طلبہ و طالبات  فائدہ اُٹھاسکتے ہیں۔