سہراب الدین انکاؤنٹر کیس: سہراب الدین فرضی انکاؤنٹر میں دو اور گواہ منحرف

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th July 2018, 1:00 PM | ملکی خبریں |

ممبئی،12؍جولائی (ایس او نیوز؍ایجنسی) سہراب الدین شیخ اور تلسی رام پرجاپتی کے مبینہ فرضی انکاؤنٹر معاملے میں پراسیکیوشن کے دو اور گواہ اپنے  بیان سے منحرف ہوگئے ہیں۔ اب تک اس مقدمے کے 85 گواہ اپنے بیانوں سے منحرف ہو چکے ہیں۔ بدھ کو منحرف ہونے والے گواہوں میں وکیل کرشنا ترپاٹھی بھی شامل ہیں جو پہلے پرجا پتی کی وکیل ہوا کرتی تھیں۔ دوسرا گواہ ہے مہما پال سنگھ ۔راجستھان پولیس کی حراست میں 2006 میں پرجا پتی کے فرار ہونے کے بعد مہما پال سنگھ ہی افسران کو گاڑی سے لیکر گیا تھا۔

دونوں بدھ  کو سی بی آئی جج ایس جے شرما کے سامنے پیش ہوئے۔ کرشنا ترپاٹھی نے اپنے بیان میں کہا کہ وہ پرجا پتی کے خلاف اجین میں درج چوری کے تین مقدمے دیکھ رہی تھیں۔

واضح ہو کہ سہراب الدین شیخ اور اس کی اہلیہ کا انکاؤنٹر ہوا تھا ۔ الزام ہے کہ ان دونوں کا  2005 اور 2006 میں مبینہ فرضی انکاؤنٹر میں قتل کر دیا گیا تھا ۔جس وقت سہراب الدین شیخ  کو انکاؤنٹر میں مارا گیا تھا گجرات اور راجستھان دونوں ہی ریاستوں میں بی جے اقتدار میں تھی ۔ دونوں ریاستوں کی سرحد پرہوئے واقعے نے ملک کی سیاست کو ہلا کر رکھ دیا تھا۔

ایک نظر اس پر بھی

پارلیمانی انتخابات سے قبل مسلم سیاسی جماعتوں کا وجود؛ کیا ان جماعتوں سے مسلمانوں کا بھلا ہوگا ؟

لوک سبھا انتخابات یا اسمبلی انتخابات قریب آتے ہی مسلم سیاسی پارٹیاں منظرعام  پرآجاتی ہیں، لیکن انتخابات کےعین وقت پروہ منظرعام سےغائب ہوجاتی ہیں یا پھران کا اپنا سیاسی مطلب حل ہوجاتا ہے۔ اورجو پارٹیاں الیکشن میں حصہ لیتی ہیں ایک دو پارٹیوں کو چھوڑکرکوئی بھی اپنے وجود کو ...

بھیم آرمی کے سربراہ کی مولانا ارشد مدنی سے خصوصی ملاقات؛ ریاستی سیاست میں ہلچل

جیل سے رہائی کے بعد بھیم آرمی سربراہ چندر شیکھر آزاد نے دیوبند پہنچ جمعیۃ علماء ہند کے صدر مولانا سید ارشد مدنی سے ان کی رہائش گاہ پر ملاقات کی ۔اس ملاقات کے بعد میڈیا سے صرف یہ کہا کہ دبے کچلے طبقات کو ایک ساتھ لانا اور انہیں متحد کرنا ان کا مقصد ہے اور اسی کے تحت وہ یہاں آئے ...