رافیل معاملہ: وزیر دفاع پر پھر راہل گاندھی کا جوابی حملہ، ایچ اے ایل کو دئیے آرڈر ثابت کریں یا پھر استعفٰٰی دیں

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 6th January 2019, 9:37 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،6؍ جنوری (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) رافیل سودے کو لے کرکانگریس کے تیور اور سخت ہوتے جا رہے ہیں۔اتوار کو ایک بار پھر سے کانگریس صدر راہل گاندھی نے رافیل سودے کو لے کر وزیر دفاع نرملا سیتا رمن پر جوابی حملہ کیا اور ہندوستان ایئروناٹکس لمیٹڈ (ایل اے ایل) کو ایک لاکھ کروڑ روپے کی خریداری کا حکم دینے کو لے کر جھوٹ بولنے کا الزام لگایا۔

کانگریس نے اتوار کو وزیر دفاع نرملا سیتا رمن پر ہندوستان ایئروناٹکس لمیٹڈ کو ایک لاکھ کروڑ روپے کی خریداری کا حکم دینے کا جھوٹ بولنے کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ ایچ اے ایل کا کہنا ہے کہ اسے ایک پیسہ بھی نہیں ملا۔کانگریس صدر راہل گاندھی نے اتوار کو ٹویٹ کرتے ہوئے پی ایم نریندر مودی حکومت پر ایک اور حملہ کیا ہے۔انہوں نے ٹویٹ کیا ہے۔جب آپ ایک جھوٹ بولتے ہیں تو اسے چھپانے کے لئے بہت جھوٹ بولنے پڑتے ہیں۔رافیل ڈیل کو لے کر پی ایم مودی کی جھوٹ کو بچانے کے چکر میں وزیر دفاع کو پارلیمنٹ میں جھوٹ بولنا پڑا۔پیر کو وزیر دفاع کو پارلیمنٹ کے سامنے وہ کاغذات پیش کرنے چاہئے، جس میں یہ ذکر ہو کہ حکومت نے ایچ اے ایل کو ایک لاکھ کروڑ روپے کے آرڈر دیئے ہیں یا پھر استعفی دیں۔

وہیں کانگریس صدر راہل گاندھی نے سنیچر کو ہی وزیر اعظم نریندر مودی پر الزام لگایا تھا کہ انہوں نے اپنے سوٹ بوٹ والے دوستوں کی مدد کرنے کے لئے ایچ اے ایل کو کمزور کیا ہے۔اس کے ایک دن بعد پارٹی نے یہ الزام عائد کیا۔اپوزیشن پارٹی نے حکومت پر الزام لگایا ہے کہ اس نے فرانس کے ساتھ رافیل لڑاکا طیارے سودے کے تحت ایچ اے ایل کو ایک آفسیٹ معاہدہ سے محروم کر دیا۔حکومت ان الزامات کو مسترد کر چکی ہے۔ادھر بی جے پی قیادت این ڈی اے حکومت نے کانگریس پر الزام لگایا ہے کہ اس نے اپنے دور حکومت میں ایچ اے ایل کی حمایت نہیں کی اور حکومت اب حفاظت پبلک سیکٹر انٹرپرائز کو مضبوط کر رہی ہے۔

میڈیا کی ایک رپورٹ میں دعوی کیا گیا ہے کہ دفاع کے علاقے سرکاری کمپنی ایچ اے ایل مالیاتی بحران سے دوچار ہے اور اپنے اہلکاروں کو تنخواہ دینے کے لئے فنڈز قرضے لینے پر مجبور ہے۔اس کے بعد گاندھی نے ہفتہ کو حکومت پر نشانہ لگایا تھا۔کانگریس کے اہم ترجمان رندیپ سرجیوالا نے اتوار کو ٹویٹ کیاکہ جھوٹ بولنے والی وزیر دفاع کا جھوٹ بے نقاب ہو گیا۔وزیر دفاع نے دعوی کیا تھا کہ ایچ اے ایل کو ایک لاکھ کروڑ روپے کی خریداری کے آرڈر دیئے گئے ہیں۔ایچ اے ایل کا کہنا ہے کہ اسے ایک پیسہ تک نہیں ملا کیونکہ ایک بھی آرڈر پر دستخط نہیں کئے گئے۔پہلی بار، HAL تنخواہ دینے کے لئے 1000 کروڑ روپے کا قرض لینے پر مجبور ہے۔

سرجیوالا نے اس میڈیا رپورٹ کے حوالے سے یہ بات کہی جس میں کہا گیا تھاکہ ایک لاکھ کروڑ روپے میں سے ایچ اے ایل کو ایک پیسہ بھی نہیں ملا کیونکہ کسی حکم پر دستخط ہی نہیں کیے گئے۔ ایچ اے ایل کے سینئر مینیجر کے حوالے سے میڈیا رپورٹ میں یہ بات کہی گئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

اپوزیشن کی جانب سے وزیراعظم کا اُمیدوارکون ؟ راہول گاندھی، مایاوتی یا ممتا بنرجی ؟

آنے والے لوک سبھا انتخابات میں اپوزیشن کی جانب سے وزیراعظم کے عہدے کا اُمیدوار کون ہوگا اس سوال کا جواب ہرکوئی تلاش کررہا ہے، ایسے میں سابق وزیر خارجہ اور کانگریس کے سابق سنئیر لیڈر نٹور سنگھ نے بڑا بیان دیتے ہوئے کہا ہے کہ  اس وقت بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) سربراہ مایاوتی ...

مدھیہ پردیش میں 5روپے، 13روپے کی ہوئی قرض معافی، کسانوں نے کہا،اتنی کی تو ہم بیڑی پی جاتے ہیں

مدھیہ پردیش میں جے کسان زراعت منصوبہ کے تحت کسانوں کے قرض معافی کے فارم بھرنے لگے ہیں لیکن کسانوں کو اس فہرست سے لیکن جوفہرست سرکاری دفاترمیں چپکائی جارہی ہے اس سے کسان کافی پریشان ہیں،