گوری لنکیش قتل:گدگ سے تین مشکوک افراد گرفتار حقیقت کاپتہ لگانے کیلئے پوچھ گچھ جاری

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 13th November 2017, 11:03 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،12/نومبر(ایس او نیوز) خاتون صحافی گوری لنکیش قتل کے معاملہ کی جانچ کررہی خصوصی تفتیشی ٹیم (ایس آئی ٹی)تین مشکوک افراد کو حراست میں لے کر ان سے پوچھ گچھ کررہی ہے۔ یاد رہے کہ5؍ستمبر کو خاتون صحافی گوری لنکیش پرگولیاں چلاکر قتل کردیاگیاتھا۔ ریاستی حکومت نے قاتلوں کے سراغ لگاکر انہیں گرفتار کرنے کے لئے اس معاملہ کی جانچ کی ذمہ داری خصوصی تفتیش ٹیم کو سونپی ہے۔ جو مختلف زوایوں سے جانچ کررہی ہے۔ مذکورہ ٹیم نے خفیہ کیمروں کے فوٹیج میں قید نقاب پوش قاتلوں کا سراغ لگانے کے لئے تین افراد کے خاکہ جاری کرکے عوام سے اس سلسلے میں تعاون کرنے اور قاتلوں کا پتہ لگانے پر فوری پولیس کو اطلاع دینے کی گزارش کی تھی۔ اس دوران گدگ میں تین مشکوک افرادکے متعلق عوام نے پولیس کو اطلاع دی تھی۔ جس کے بعد مقامی پولیس نے خصوصی تفتیشی ٹیم کے افسران کو اس بات کی اطلاع دی۔ جس کی بنیادپر خصوصی ٹیم نے اپنی کارروائی کرتے ہوئے مذکورہ تین افراد کو اپنی حراست میں لے لیاہے۔ ذرائع سے پتہ چلاہے کہ ایس آئی ٹی ٹیم تینوں مشکوک افراد کو شہر لاکر ان سے پوچھ گچھ کررہی ہے اورگوری لنکیش قتل کے معاملہ میں ملوث ہیں یا نہیں اس کی بھی تمام زاویوں سے جانچ کررہی ہے۔ گوری لنکیش قتل کا معاملہ پیش آئے دو ماہ کا عرصہ گزرجانے کے باوجود ابھی تک قاتلوں کا کوئی سراغ نہیں لگاہے۔ ایس آئی ٹی ٹیم دن رات اپنی کارروائی کرتے ہوئے قاتلوں کا سراغ لگانے میں جڑی ہوئی ہے اور کئی ثبوت اکٹھاتو کرلیاہے لیکن ابھی تک قاتلوں کا سراغ لگانے میں ناکام ہی دکھائی ہے۔ 5؍ستمبر سے اس قتل کے معاملہ کی جانچ کی جارہی ہے۔ دن رات خصوصی جانچ ٹیم کارروائی میں لگی ہوئی ہے۔ اس خصوصی تفتیشی ٹیم میں جملہ 61 افسران کام کررہے ہیں ۔ تقریباً اب تک 600 خفیہ کیمروں کے فوٹیج کی جانچ کی جاچکی ہے۔ مذکورہ ٹیم دو ہزار گھنٹوں سے بھی زائد وقت بیٹھ کر خفیہ کیمروں میں قید مناظر کا بھی مشاہدہ کرچکی ہے۔ اس کے علاوہ ایک کروڑ سے بھی زائد فون کالس کی تفصیلات حاصل کئے ہیں نیز 500سے زائد افراد سے تفتیشی ٹیم نے پوچھ گچھ بھی کی ہے۔ قاتلوں کے سرخ پلسر موٹر سائیکل کا استعمال کئے جانے کا پتہ لگنے پر تفتیشی ٹیم8؍ہزار مذکورہ پلسر گاڑیوں کی بھی جانچ کرچکی ہے۔ اس دوران ریاستی وزیر داخلہ رام لنگاریڈی نے گوری لنکیش قتل کے معاملہ میں ملزمین کا سراغ لگنے کی بات کہی ہے اور جانچ مزید جاری ہے۔ تفتیشی ٹیم کو مکمل جانچ کے بعد ہی مقتولہ گوری لنکیش کے قاتلوں کا سراغ لگے گا۔ خصوصی تفتیشی ٹیم کرناٹک کے علاوہ مدھیہ پردیش ، اترپردیش سمیت 4؍ ریاستوں میں بھی قاتلوں کا سراغ لگارہی ہے۔ گوری لنکیش کے قاتلوں کی کسی تنظیم کے ساتھ وابستگی نہیں ہے لیکن کسی ایک تنظیم کی جانب سے قاتلوں کی پشت پناہی کئے جانے کے متعلق بھی تفتیشی ٹیم نے اپنی جانچ سے پتہ لگایاہے۔ خصوصی تفتیشی ٹیم مختلف زاویوں سے اس کی جانچ کررہی ہے۔جن میں مشکوک افراد کو حراست میں لے کر پوچھ گچھ کررہی ہے۔ اس میں انہیں کامیابی حاصل ہوگی یا نہیں وہ آنے والا وقت ہی بتائے گا۔

ایک نظر اس پر بھی

دیہی ترقیات اور پنچایت راج محکموں کے لیے ڈاٹا اینٹری آپریٹرس کے تقررات،کے لیے جاری کردہ نوٹیفیکیشن منسوخ کرنے سابق وزیر ویجناتھ پاٹل کامطالبہ 

دیہی ترقیات اور پپنچایت راج محکموں میں ریاست کرناٹک کے ہر ایک گرام پنچایت میں ایک ڈاٹا انینٹری آپریٹر کی جائیدادیں قائم کرکے اس پر تقررات کئے جارہے ہیں لیکن اس معاملہ میں علاقہ حید رآباد کرناٹک علاقہ کے امیدواروں کو تحفظات دینے کے ضمن میں کوئی واضح ہدایت نہیں دی گئی ہے ۔

مستقبل قریب میں حلقہ اسمبلی گلبرگی کے انتخابات،مسلمانان گلبرگہ کی دانش مندی کا امتحان

ممتازسماجی خدمت گزار اور سیاسی بزرگ شخصیت ڈاکٹر ایم ایچ بگدلی نے اپنے صحافتی بیان میں کہا ہے کہ شہر کرناٹک گلبرگہ محترم جناب الحاج قمرالاسلام صاحب کے سانحہ ارتحال کے بعد شہر یانِ گلبرگہ کے ہر کس وناکس کی زبان پر یہی تذکرہ ہے کہ قمرالاسلام کا سیاسی قاؤئم مقام کون ہوگا؟

ہبلی :مرکزی وزیر اننت کمارہیگڈے معافی مانگے اورعہدے سے استعفیٰ دیں : یوتھ کانگریس کا احتجاج

عوامی اجلاس میں ریاستی وزیر اعلیٰ سدرامیا کے خلاف توہین آمیز بیان دئیے مرکزی وزیر اننت کمار ہیگڈے کی مذمت میں ہبلی دھارواڑ یوتھ کانگریس کی جانب سے تحصیلدار دفتر کےسامنے احتجاج کیا گیا ۔