کرپٹو کرنسی کی قیمت میں کمی، پابندی کے خدشات

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 8th February 2018, 12:24 PM | عالمی خبریں |

برلن 7فروری( ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا ) عالمی اسٹاک مارکیٹ میں آج ہونے والی شدید مندی کے بعد بِٹ کواءِن کی قیمت بھی رواں برس کے دوران نصف سے بھی کم ہو چکی ہے۔اس کرپٹو کرنسی کی قیمت 13 فیصد کمی کے ساتھ 5,992 امریکی ڈالرز پر پہنچ گئی جبکہ گزشتہ برس دسمبر میں جلد پیسہ کمانے کے خواہشمند افراد کی بڑی تعداد میں اس ڈیجیٹل کرنسی کی خریداری کے رجحان کے باعث بِٹ کوائن کی قیمت ریکارڈ 20 ہزار ڈالرز تک پہنچ گئی تھی۔کرپٹو مارکیٹ میں ایسی خبریں بھی گردش کر رہی ہیں کہ اس کرنسی کی سب سے بڑی مارکیٹیں یعنیٰ چین، روس اور جنوبی کوریا کی حکومتیں اس کرنسی کے خلاف کریک ڈاون کا ارادہ رکھتی ہیں۔ گزشتہ ہفتے بھارت کی جانب سے بھی یہ اعلان سامنے ا?یا کہ وہ کرپٹو کرنسیوں کے خاتمے کے لیے تمام ضروری اقدامات کرے گا۔ بھارت کے مطابق کرپٹو کرنسی غیر قانونی کاموں کی فنڈنگ میں استعمال کی جا رہی ہے۔ جبکہ جاپانی حکام کا بھی کہنا ہے کہ انہوں نے ایک ورچوئل کرنسی ایکسچینج پر ہیکرز کے ہاتھوں 530 ملین ڈالر کی چوری کے بعد چھاپہ مارا ہے۔کرپٹو کرنسی کے حوالے سے یورپ، جاپان اور امریکا کے مرکزی بینکوں نے بھی اپنے تحفظات کا اظہار کیا ہے۔ اسی حوالے سے کئی کمرشل بنیادوں پر کام کرنے والے قرض دہندگان نے بھی اپنے صارفین پر کریڈٹ کارڈ کے ذریعے بٹ کوائن کی صورت میں ادائیگیوں پر پابندی عائد کر دی ہے۔یاد رہے کہ بٹ کوائن کی قیمت میں رد و بدل کے پیچھے سرگرم عناصر کے بارے میں جاننا یا ان کا اندازہ لگانا انتہائی مشکل کام ہے جبکہ یہ روایتی کرنسیوں اور کموڈیٹیز کے مقابلے میں زیادہ غیر مستحکم بھی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ایران میں رواں سال تین کم سن بچوں کو پھانسی پر لٹکا دیا گیا:یو این

ایران میں کم عمر افراد کو سزائے موت دیے جانے اور ان سزاؤں پر عمل درآمد میں ماضی کی نسبت اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔ اقوام متحدہ کی طرف سے جاری کردہ ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ رواں سال 2018 کے پہلے ڈیرھ ماہ میں ایران میں تین کم عمر افراد کو پھانسی دے کر موت سے ہم کنار کردیا گیا۔