سدرامیا نے کورگ کے سیلاب زدہ علاقوں کا دورہ کیا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 23rd August 2018, 10:19 PM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلورو،23؍اگست(ایس او نیوز) سابق وزیراعلیٰ اور مخلوط حکومت کی رابطہ کمیٹی کے چیرمین سدرامیا نے آج کورگ ضلع کے سیلاب زدہ علاقوں کا دورہ کیا اور یہاں راحت کاری کے لئے جاری کاموں کا معائنہ کیا۔ اس موقع پر سدرامیا نے کہاکہ راحت کاری کے کاموں کو اور بھی تیزی کے ساتھ آگے بڑھانے کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہاکہ سیلاب متاثرین کے درمیان منافرت پھیلانے کے لئے چند شرپسند عناصر کی طرف سے کوشش کی جارہی ہے، کسی بھی حال میں ایسی صورتحال پیدا ہونے نہ دی جائے ۔ کورگ ضلع جو بی جے پی کا مضبوط قلعہ رہا ہے، سیلاب کی تباہی کے بعد بی جے پی کے کسی بڑے رہنما نے سوائے یڈیورپا کے اس علاقے کا رخ نہیں کیا، یہاں تک کہ کورگ اور میسور کی لوک سبھا میں نمائندگی کرنے والے پرتاب سمہا بھی سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں نظر نہیں آئے۔ ایسے میں اس علاقوں کو سابق وزیراعلیٰ سدرامیا کا دورہ کافی اہمیت کا حامل تصور کیا جارہاہے۔

اس موقع پر سدرامیا نے کہاکہ پارٹی امتیازات سے بالا تر ہوکر متاثرین کی امداد کا کام کیا جائے۔ انہیں یہ شکایات موصول ہوئی ہیں کہ افسروں کی طرف سے فرقہ وارانہ بنیاد پر امداد کی تقسیم میں جانبداری برتی جارہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ راحت کاری کے کاموں میں یکسانیت برتی جائے مذہب یا ذات پات کی بنیاد پر امتیاز برتا گیا تو اس کے خلاف کارروائی کی وہ ریاستی حکومت سے سفارش کریں گے۔ سدرامیا آج صبح بنگلور سے پریا پٹنہ بذریعے ہیلی کاپٹر پہنچے اور یہاں سے مرکیرہ کے لئے روانہ ہوئے۔ سڑک سے گزرتے ہوئے انہوں نے متعدد مقامات پر سیلاب سے مچی تباہی کا جائزہ لیا۔ ضلعی انتظامیہ کی طرف سے سدرامیا کے دورے کو دیکھتے ہوئے راحت کاری کے کاموں میں تیزی کا مظاہرہ کیا گیا۔

سابق وزیراعلیٰ کل ہاسن کے سیلاب زدہ علاقوں کا دورہ کرنے والے ہیں۔ اس دوران اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے سدرامیا نے کہاکہ موسلادھار بارش نے کئی دیہاتوں کو صفحۂ ہستی سے مٹادیا ہے۔ عوام کے مال واسباب تاراج ہوچکے ہیں۔ جن لوگوں کو اس تباہی کی وجہ سے بے گھر ہونا پڑا ہے فوری طور پر ان کی باز آباد کاری ہونی چاہئے۔

سدرامیا نے کہاکہ وزیراعلیٰ کمار سوامی اور نائب وزیر اعلیٰ ڈاکٹر پرمیشور نے متاثرہ علاقوں کابذات خود دورہ کیا ہے اور تباہی کا جائزہ لے چکے ہیں۔ انہیں توقع ہے کہ ریاستی حکومت کی طرف سے مناسب ترین راحت رسانی کی جائے گی۔ آنے والے دنوں میں اس قدر قدرتی آفت سے نپٹنے کے لئے موثر قدم اٹھانے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے سدرامیا نے کہا کہ ہزاروں ایکڑ کی زرعی زمین فصلوں سمیت تباہ ہوچکی ہے۔

انہوں نے کہاکہ ان کھیتوں میں کام کرنے والے مزدوروں کو نریگا اسکیم کے تحت روزگار فراہم کرناچاہئے۔ وزیر اعظم نریندر مودی کی طرف سے ریاست کے سیلاب زدہ علاقوں کا دورہ نہ کئے جانے کے متعلق ایک سوال پر سدرامیا نے کہاکہ وزیر اعظم نے کیرلا کا دورہ کیا ، کورگ کا دورہ انہوں نے نہیں کیا لیکن ان سے گزارش ہے کہ سیلاب سے متاثرہ ضلع کو مرکزی حکومت کی طرف سے زیادہ سے زیادہ امداد کی فراہمی یقینی بنائی جائے۔

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک لجسلیٹیوکونسل کی خالی نشستوں کیلئے دوکانگریس امیدواروں کا اعلان

یاستی کونسل کی خالی نشستوں کے لئے 4 اکتوبر کو ہونے والے انتخابات کے لئے آج کانگریس کورکمیٹی کے اجلاس میں سابق وزیر ریاستی اقلیتی کمیشن کے چیرمین نصیراحمد اور ایم سی وینوگوپال کے نام منتخب کئے گئے ہیں ۔

سرکاری ملازمین مسلمانوں کے مفاد میں بھی کام کریں اسٹیٹ گورنمنٹ مسلم ایمپلائیز اسوسی ایشن کے جلسے سے رکنِ پارلیمان سید ناصرحسین کا خطاب

مسلمان سرکاری ملازمین اپنے اپنے محکموں میں اپنی ذمہ داری نبھاتے ہوئے عام مسلمانوں کے مفاد میں بھی کام کریں۔سرکاری اسکیموں اور پروگراموں کو عام لوگوں تک خصوصا! مسلمانوں تک پہنچانے کی کوشش کریں۔

اراکین اسمبلی کے شکار اور کراس ووٹنگ کا خدشہ سدارامیا نے25؍ ستمبر کو سی ایل پی میٹنگ طلب کی

ن خدشوں کے درمیان کہ لجسلیٹیو کونسل کے ضمنی انتخابات سے قبل کانگریس اراکین اسمبلی کا شکا ر یاان کی جانب سے کراس ووٹنگ ہوگی، مخلوط حکومت کی تال میل کمیٹی کے چیرمن سدا رامیا نے 25؍ستمبر کو کانگریس لجسلیٹر پارٹی(سی ایل پی) کی میٹنگ طلب کی ہے۔

سیلاب زدہ کورگ کیلئے اضافی تعاون کا اعلان فی کنبہ 50ہزار روپئے رقم دینے کا فیصلہ

ورگ ضلع میں حال ہی میں ہوئی موسلا دھار بارش اور سیلاب کی وجہ سے کئی گھر تباہ وبرباد ہوگئے ۔ متاثرہ کنبوں کیلئے کپڑے اور روز مرہ کی ضروریات کی خریداری کے مقصد سے وزیر اعلیٰ ریلیف فنڈ کے تحت فی کنبہ 50ہزار روپئے اضافی رقم جاری کرنے کا ریاستی حکومت نے فیصلہ کیا ہے۔

پٹرول ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ بدستور جاری

پٹرول ڈیزل کی قیمتوں میں آج ایک بار پھر اضافہ ہوا ہے۔پٹرول 17 پیسے اور ڈیزل 10 پیسے مہنگا ہوا ہے۔اضافے کے بعد راجدھانی دہلی میں ایک لیٹر پیٹرول کی قیمت 82.61 روپے فی لیٹر ہو گئی ہے۔وہیں ڈیزل 73.97 روپے فی لیٹر ہو گئی۔ راجدھانی دہلی میں کل پٹرول 82.44 روپے فی لیٹر اور ڈیزل 73.87 روپے فی لیٹر ...

روپے کی قدر میں گراوٹ:سستاحج کرانے کادعویٰ بھی فرضی؟ حجاج کرام پر بوجھ میں اضافہ ،مزید پیسے وصولے جاسکتے ہیں

سرکارایک طرف دعویٰ کررہی ہے کہ اس نے اس بارسستاحج کرایاہے ۔لیکن اب روپیے کی گراوٹ کی وجہ سے پھرحاجیوں سے وصولی کی جائے گی ۔عالمی بازار میں ڈالر کے مقابلے ہندوستانی کرنسی کی قدر میں ہورہی گراوٹ کی وجہ سے اب حجاج کرام پر مزید بوجھ پڑنے والاہے۔