منڈیا میں کانگریس کومضبوط کرنے سدرامیا کی حکمت عملی، بہت جلد امبریش کو وزارت کا حصہ بنانے پر غور

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 21st April 2017, 2:46 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو:20/اپریل(ایس او نیوز) وزیر اعلیٰ سدرامیا کی طرف سے حالانکہ ریاستی کابینہ میں توسیع کے متعلق اعلیٰ کمان سے منظوری لی جاچکی ہے، لیکن اس عمل کو وہ کب انجام دیں گے اس بارے میں اب تک انہوں نے کسی سے کچھ نہیں کہا ہے، تاہم وزیراعلیٰ کے قریبی ذرائع سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ سابق وزیراعلیٰ ایس ایم کرشنا کے بی جے پی میں شامل ہوجانے کے بعد منڈیا ضلع میں کانگریس کو مضبوط کرنے کے مقصد سے سدرامیا ایک بار پھر معروف فلم اسٹار امبریش کو اپنی وزارت کا حصہ بنانے کیلئے کوشاں ہیں۔یاد رہے کہ پچھلی کابینہ ردوبدل کے مرحلے میں سدرامیا نے امبریش کو وزارت سے بے دخل کرتے ہوئے ان کو دیا گیا ہاؤزنگ کا قلمدان واپس لے لیا تھا، اس کے بعد سے ہی امبریش جنتادل (ایس) یا بی جے پی میں شامل ہونے کے بارے میں سنجیدگی سے غورکررہے تھے۔ داخلی بغاوت کے سبب منڈیا ضلع میں جنتادل  (ایس) کاوجود خطرہ میں پڑا ہوا ہے تو دوسری طرف امبریش کے کٹر سیاسی حریف سمجھے جانے والے ایس ایم کرشنا بی جے پی میں شامل ہوچکے ہیں ایسے میں امبریش کرشنا کے ساتھ بی جے پی میں رہنا پسند نہیں کریں گے، اسی لئے وزیر اعلیٰ سدرامیا نے منڈیا ضلع میں امبریش کی قیادت میں کانگریس کو دوبارہ مضبوط کرنے کی پہل کی ہے۔ امبریش بھی واضح کرچکے ہیں کہ کسی بھی حال میں وہ کانگریس پارٹی چھوڑنے والے نہیں ہیں۔ وزیر اعلیٰ سدرامیا نے حال ہی میں امبریش کے گھر پہنچ کر ان سے بات چیت کی، بتایا جاتا ہے کہ اس بات چیت کے دوران انہوں نے امبریش کو ان کی وزارت کا حصہ بننے پر آمادہ کرلیا ہے۔ حالانکہ کہا جارہاتھاکہ امبریش نے بی جے پی میں شمولیت پر رضامندی ظاہرکردی تھی، اور بی جے پی نے منڈیا حلقہ سے ان کی بیوی اوما لتا امبریش کو ٹکٹ دینے پر بھی آمادگی ظاہر کردی تھی، لیکن ایس ایم کرشنا کی شمولیت نے ان کے حساب کتاب کو بگاڑ دیا اور انہوں نے ایس ایم کرشنا کے ساتھ بی جے پی میں نہ رہنے کا فیصلہ کیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بی جے پی کی کرناٹک کی تیسری فہرست جاری

بی جے پی نے آج ریاستی اسمبلی کے انتخابات کے لئے 59 امیدواروں کی تیسری فہرست جاری کردی۔بی جے پی نے اب تک 213 امیدواروں کا اعلان کیا ہے جبکہ 13 سیٹوں پر امیدواروں کا اعلان کیا جانا باقی ہے ۔

دیوے گوڈا نے سدرامیا حکومت کوبدعنوان قرار دیا، مودی اور امت شاہ کی نکتہ چینی کرنے سے سابق وزیر اعظم کا انکار

سابق وزیراعظم اور جنتادل (ایس) صدر ایچ ڈی کمار سوامی نے ریاست کی سدرامیا حکومت کو سب سے بدعنوان حکومت قرار دیا اور کہاکہ سدرامیا جو جنتادل (ایس) کو ختم کردینے کا خواب دیکھ رہے ہیں ریاستی عوام انہیں سبق سکھائیں گے۔

آر ٹی ای کے تحت داخلوں کا عمل شروع

حق تعلیم قانون کے تحت اسکولی بچوں کے داخلوں کا عمل شروع ہوچکا ہے۔ ہزاروں کی تعداد میں لوگوں نے اس قانون کے تحت اپنے قریبی اسکولوں میں اپنے بچوں کے داخلوں کے لئے آر ٹی ای درخواستیں دائر کی ہیں،

امیت شاہ کا باربار دورہ ،ریاست نہیں سیاست کیلئے بی جے پی صدر کو کرناٹک کے بارے میں معلومات ہی نہیں : کے جے جارج

بنگلورو ترقیات وزیر کے جے جارج نے کہاکہ بھارتیہ جنتاپارٹی( بی جے پی) کے قومی صدر امیت شاہ باربار کرناٹک کاجودورہ کرنے لگے ہیں وہ ریاست سے محبت اورلگاؤنہیں بلکہ جھوٹی سیاست کرنے کے مقصد سے آرہے ہیں۔

میں وزیراعظم کی کرسی کے خواب نہیں دیکھتا: سدرامیا

وزیر اعلیٰ سدرامیا نے کہاکہ پچھلے پانچ سال کے دوران ریاست میں کانگریس نے بدعنوانی سے پاک انتظامیہ فراہم کیاہے، اگلے پانچ سال کے دوران بھی ریاست میں کانگریس حکومت انتہائی شفاف انتظامیہ فراہم کرنے کے لئے پوری طرح کمر بستہ ہے، کانگریس پارٹی کو انتخابات میں واضح اکثریت کاپورا ...