منڈیا میں کانگریس کومضبوط کرنے سدرامیا کی حکمت عملی، بہت جلد امبریش کو وزارت کا حصہ بنانے پر غور

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 21st April 2017, 2:46 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو:20/اپریل(ایس او نیوز) وزیر اعلیٰ سدرامیا کی طرف سے حالانکہ ریاستی کابینہ میں توسیع کے متعلق اعلیٰ کمان سے منظوری لی جاچکی ہے، لیکن اس عمل کو وہ کب انجام دیں گے اس بارے میں اب تک انہوں نے کسی سے کچھ نہیں کہا ہے، تاہم وزیراعلیٰ کے قریبی ذرائع سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ سابق وزیراعلیٰ ایس ایم کرشنا کے بی جے پی میں شامل ہوجانے کے بعد منڈیا ضلع میں کانگریس کو مضبوط کرنے کے مقصد سے سدرامیا ایک بار پھر معروف فلم اسٹار امبریش کو اپنی وزارت کا حصہ بنانے کیلئے کوشاں ہیں۔یاد رہے کہ پچھلی کابینہ ردوبدل کے مرحلے میں سدرامیا نے امبریش کو وزارت سے بے دخل کرتے ہوئے ان کو دیا گیا ہاؤزنگ کا قلمدان واپس لے لیا تھا، اس کے بعد سے ہی امبریش جنتادل (ایس) یا بی جے پی میں شامل ہونے کے بارے میں سنجیدگی سے غورکررہے تھے۔ داخلی بغاوت کے سبب منڈیا ضلع میں جنتادل  (ایس) کاوجود خطرہ میں پڑا ہوا ہے تو دوسری طرف امبریش کے کٹر سیاسی حریف سمجھے جانے والے ایس ایم کرشنا بی جے پی میں شامل ہوچکے ہیں ایسے میں امبریش کرشنا کے ساتھ بی جے پی میں رہنا پسند نہیں کریں گے، اسی لئے وزیر اعلیٰ سدرامیا نے منڈیا ضلع میں امبریش کی قیادت میں کانگریس کو دوبارہ مضبوط کرنے کی پہل کی ہے۔ امبریش بھی واضح کرچکے ہیں کہ کسی بھی حال میں وہ کانگریس پارٹی چھوڑنے والے نہیں ہیں۔ وزیر اعلیٰ سدرامیا نے حال ہی میں امبریش کے گھر پہنچ کر ان سے بات چیت کی، بتایا جاتا ہے کہ اس بات چیت کے دوران انہوں نے امبریش کو ان کی وزارت کا حصہ بننے پر آمادہ کرلیا ہے۔ حالانکہ کہا جارہاتھاکہ امبریش نے بی جے پی میں شمولیت پر رضامندی ظاہرکردی تھی، اور بی جے پی نے منڈیا حلقہ سے ان کی بیوی اوما لتا امبریش کو ٹکٹ دینے پر بھی آمادگی ظاہر کردی تھی، لیکن ایس ایم کرشنا کی شمولیت نے ان کے حساب کتاب کو بگاڑ دیا اور انہوں نے ایس ایم کرشنا کے ساتھ بی جے پی میں نہ رہنے کا فیصلہ کیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

باغیوں کے جلسہ میں یڈیورپا اور ایشورپا کے حامیوں میں ٹکراؤ

شہر کے پیالیس گراؤنڈ میں آج باغی بی جے پی لیڈر کے ایس ایشورپا کی طرف سے طلب کی گئی بی جے پی باغی لیڈروں کی میٹنگ یڈیورپا اور ایشورپا کے حامیوں کے درمیان مارپیٹ کا مرکز بن گئی۔ جس کی وجہ سے کچھ دیر کیلئے کشیدگی پھیل گئی۔

کمارا سوامی نے بھی وسط مدتی انتخابات کا اشارہ دیا

سابق وزیر اعلیٰ اور ریاستی جنتادل(ایس) صدر ایچ ڈی کمار سوامی نے ریاستی اسمبلی کیلئے قبل از وقت انتخابات کی پیشین گوئی کی ہے ، حالانکہ کل وزیر اعلیٰ سدرامیا نے خود واضح کیا کہ اسمبلی انتخابات قبل ا ز وقت نہیں ہوں گے اور حکومت اپنی میعاد مکمل کرلے گی۔

ریاستی بی جے پی میں پھوٹ کے آثار مزید نمایاں؛ یڈیورپا کی وارننگ نظر انداز کرکے ایشورپا نے بلائی باغیوں کی میٹنگ

ریاستی بی جے پی میں آج اس وقت پھوٹ کے آثار اور گہرے ہوگئے جب یڈیورپا کے خلاف علم بغاوت بلند کرنے والے کے ایس ایشورپا کی طرف سے طلب کی گئی بی جے پی بچاؤ میٹنگ میں توقع سے زیادہ تقریباً دو ہزار پارٹی کارکنوں نے شرکت کی اور یڈیورپا کے طریقۂ کار کے خلاف کھل کر آواز اٹھائی۔

سابق وزیر مالیات چدمبرم کے رشتہ داروں کی کرناٹکا میں کمپنیوں پر انکم ٹیکس کے چھاپے

سابق وزیر مالیات کے بہن زادوں وشواناتھن اور ساتھپّن کی ملکیت والی کی شہرت یافتہ کمپنی خوشحال نگرکےSLN Group کی کُل 11شاخوں پر انکم ٹیکس ڈپارٹمنٹ کے افسران نے بیک وقت انتہائی خفیہ چھاپہ مارا ، جس کے بعد کچھ خاص قسم کے دستاویزات ضبط کیے جانے کی اطلاع موصول ہوئی ہے۔

مرکزی کاروباری ضلع میں مزید تین پارکنگ مقامات

بی بی ایم پی بہت جلد شہر کے مرکزی تجارتی ضلع میں سواریوں کی پارکنگ کے لئے تین ہمہ منزلہ عمارتیں تعمیر کرنے والی ہے۔ریاستی وزیر داخلہ جی پرمیشور کا کہنا ہے کہ جب ان عمارتیں کا استعمال شروع ہو جائے گا تو ،چونکہ یہاں بڑی تعداد میں سواریوں کے روکنے کی سہولت رہے گی ، شہر کے راستوں پر ...

بنگلوروشہر کے ہر مقام پر سواریوں کی پارکنگ کا مسئلہ

حالیہ دنوں میں بنگلور شہر کے ہر ایک محلہ اور راستہ پر دو پہیہ اور چار پہیہ گاڑیوں کی پارکنگ ایک بڑا مسئلہ بنتا جا رہا ہے۔شہر میں بڑتی ہوئی آبادی اور سواریوں کی تعداد میں شدید اضافہ کے پیش نظر شہر کے راستوں کا نظم اور پارکنگ کی سہولیہات کا انتظام اس کے ہم پلہ نہیں ہو سکا ہے۔