منڈیا میں کانگریس کومضبوط کرنے سدرامیا کی حکمت عملی، بہت جلد امبریش کو وزارت کا حصہ بنانے پر غور

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 21st April 2017, 2:46 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو:20/اپریل(ایس او نیوز) وزیر اعلیٰ سدرامیا کی طرف سے حالانکہ ریاستی کابینہ میں توسیع کے متعلق اعلیٰ کمان سے منظوری لی جاچکی ہے، لیکن اس عمل کو وہ کب انجام دیں گے اس بارے میں اب تک انہوں نے کسی سے کچھ نہیں کہا ہے، تاہم وزیراعلیٰ کے قریبی ذرائع سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ سابق وزیراعلیٰ ایس ایم کرشنا کے بی جے پی میں شامل ہوجانے کے بعد منڈیا ضلع میں کانگریس کو مضبوط کرنے کے مقصد سے سدرامیا ایک بار پھر معروف فلم اسٹار امبریش کو اپنی وزارت کا حصہ بنانے کیلئے کوشاں ہیں۔یاد رہے کہ پچھلی کابینہ ردوبدل کے مرحلے میں سدرامیا نے امبریش کو وزارت سے بے دخل کرتے ہوئے ان کو دیا گیا ہاؤزنگ کا قلمدان واپس لے لیا تھا، اس کے بعد سے ہی امبریش جنتادل (ایس) یا بی جے پی میں شامل ہونے کے بارے میں سنجیدگی سے غورکررہے تھے۔ داخلی بغاوت کے سبب منڈیا ضلع میں جنتادل  (ایس) کاوجود خطرہ میں پڑا ہوا ہے تو دوسری طرف امبریش کے کٹر سیاسی حریف سمجھے جانے والے ایس ایم کرشنا بی جے پی میں شامل ہوچکے ہیں ایسے میں امبریش کرشنا کے ساتھ بی جے پی میں رہنا پسند نہیں کریں گے، اسی لئے وزیر اعلیٰ سدرامیا نے منڈیا ضلع میں امبریش کی قیادت میں کانگریس کو دوبارہ مضبوط کرنے کی پہل کی ہے۔ امبریش بھی واضح کرچکے ہیں کہ کسی بھی حال میں وہ کانگریس پارٹی چھوڑنے والے نہیں ہیں۔ وزیر اعلیٰ سدرامیا نے حال ہی میں امبریش کے گھر پہنچ کر ان سے بات چیت کی، بتایا جاتا ہے کہ اس بات چیت کے دوران انہوں نے امبریش کو ان کی وزارت کا حصہ بننے پر آمادہ کرلیا ہے۔ حالانکہ کہا جارہاتھاکہ امبریش نے بی جے پی میں شمولیت پر رضامندی ظاہرکردی تھی، اور بی جے پی نے منڈیا حلقہ سے ان کی بیوی اوما لتا امبریش کو ٹکٹ دینے پر بھی آمادگی ظاہر کردی تھی، لیکن ایس ایم کرشنا کی شمولیت نے ان کے حساب کتاب کو بگاڑ دیا اور انہوں نے ایس ایم کرشنا کے ساتھ بی جے پی میں نہ رہنے کا فیصلہ کیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

نتن گڈکری 500کلومیٹر شاہراہ سے متعلق پروجیکٹوں کا سنگ بنیادرکھیں گے

سڑک ٹرانسپورٹ اور شاہراہوں، جہاز رانی، آبی وسائل، ندیوں کی ترقی اور گنگا کی صفائی کے وزیرنتن گڈکری آج کرناک کے شموگہ ضلع میں 873.5 کروڑ روپے مالیت کے 138.5 کلومیٹر شاہراہوں کے پروجیکٹوں سے متعلق سنگِ بنیادرکھا۔

کسان لیڈر پٹنیا چل بسے۔21؍فروری کو آخری رسومات بشمول وزیراعلیٰ کئی قائدین نے آخری دیدار کیا۔ کسان برادری کا ناقابل تلافی نقصان

کبڈی کا کھیل دیکھنے کے دوران دل پر شدید دورہ پڑنے سے کل فوت ہوجانے والے کسان لیڈر و رکن اسمبلی کے ایس پٹنیا کی آخری رسومات چہارشنبہ 21فروری کو ان کے آبائی گاؤں کیتناہلی میں ادا کی جائیں گی۔

22فروری ووٹر لسٹ میں نام داخل کرنے کی آخری تاریخ؛ کرناٹکا کے عوام توجہ دیں

اگلے دوایک مہینوں میں منعقد ہونے والے اسمبلی انتخابات میں حق رائے دہی استعمال کرنے کے لئے فہرست رائے دہندگان (ووٹرلسٹ) میں نام شامل کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔ اس سلسلے میں الیکشن کمشنر  کی طرف سے جاری بیان کے مطابق 22فروری نام درج کروانے کی آخری تاریخ ہوگی۔

بنگلور میں 12 مارچ سے ہوگی ،کے اے ایس اور آئی اے ایس امتحانات کیلئے مفت کوچنگ؛ مسلمانوں کے لئے سنہرا موقع

اگلے ماہ 12 مارچ سے طہ ایجوکیشنل ٹرسٹ بنگلور کی جانب سے کے اے ایس اور آئی اے ایس امتحانات میں حصہ لینے والوں کے  لئے  مفت کوچنگ کا انتظام کیا گیا ہے، جس میں شریک ہوکر امتحانات میں حصہ لینے والے خواہش مند طلبہ و طالبات  فائدہ اُٹھاسکتے ہیں۔

بنگلور میں جے ڈی ایس کا شاندار اجلاس؛ مایاوتی کی شرکت؛ کہا مودی حکومت اب آخری سانس لے رہی ہے؛ کمارسوامی نے جاری کی 126 اُمیدواروں کی پہلی فہرست

شہر کے یلہنکا میں جنتادل (ایس) کا  شاندار جلسہ کمارا پرو یاترا کنونشن کے نام پر سنیچر شام کو منعقد ہوا ، جس میں ریاست کے مختلف گائوں اور دیہاتوں سے کثیر تعداد میں لوگوں نے   شرکت کی۔ اس موقع پر سابق وزیراعلیٰ  کماراسوامی نے  ریاست کرناٹک میں آئندہ دو  تین ماہ بعد ہونے والے ...

سدارامیا اور دیش پانڈے کے ہاتھوں ای وہیکلس کاآغاز فضائی و صوتی آلودگی پر قابو پانے بجلی سے چلنے والی سواریاں ناگزیر

ایوان سیاست ودھان سودھا کے اطراف ہمیشہ سیاسی ہماہمی اور قائدین کی گہما گہمی رہتی ہے۔ لیکن ہفتہ کے دن یہاں کا منظر کچھ بدلا ہوا تھا۔ ودھان سودھا کے سامنے آج نیلی رنگ کی کاروں، دوپہیہ گاڑیوں اور آٹو رکشاؤں کی قطاریں دیکھی گئیں ۔