اذان سن کر سدارامیا کا خطاب خاموش ہوگیا کارٹگی کے جنا آشرواد اجلاس میں کانگریس کے کا رناموں کا تذکرہ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th February 2018, 11:42 AM | ریاستی خبریں |

کوپل،11؍فروری (ایس او   نیوز) اے آئی سی سی کے صدر راہل گاندھی کی کرناٹک آمد سے شروع جنا آشرواد یاترا آج بروز اتوار کوپل ضلع کے کارٹگی پہنچا۔ اس موقع پرریاستی وزیر اعلیٰ سدرامیا نے وزیراعظم نریندر مودی پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ مودی حکومت منہ کی میٹھی ہاتھ کی جھوٹی ہے، منہ سے بڑائی کی باتیں او رکام صفر ہے۔ عوامی اجلاس میں بی جے پی لیڈر ز کو آڑے ہاتھ لیتے ہوئے سدارامیا نے خوب کھری کھری سنائی ،سدارامیا خطاب کیلئے اسٹیج پر آرہے تھے کہ کانوں میں اذان کی آواز آنے لگی ،اذان کے کلمات سن کر سدارامیا اپنا خطاب روک کر اپنی کرسی پر بیٹھ گئے۔اذان ہونے کے بعد اپنا خطاب شروع کیا ۔ کہا کہ گزشتہ روز نریندر مودی نے سنسدمیں مجھے اور بسونا کو یاد کیا ۔ جبکہ بسونا کااصول ہے کہ کا م ہی کارنامہ ہے ۔ لیکن نریندر مودی تین سال تک صرف باتوں میں ہی سیاست کررہے ہیں ۔ ہماری اور مودی حکومت کے درمیان فرق یہ ہے کہ مودی کی خالی من کی بات، ہماری حکومت کام کی بات ہے، مودی نے کئے گئے وعدے وفا نہیں کئے ۔جبکہ ہم نے 2013کے انتخابی منشور میں 165وعدے کئے تھے ،تمام کو تکمیل تک پہنچایا ہے۔ کرناٹک کی تاریخ میں صد فی صد منشور کے مطابق حکومت کرنے والی واحد سرکار ہماری ہے ،مقامی ایم ایل اے شیوراج تنگڈگی کا رٹگری حلقہ میں کیا کیا خدمات انجام دےئے ہیں اس کی تفصیل کتاب جاری کرتے ہوئے بتائی ہے ۔ اسی طرح ریاست بھر میں ہماری حکومت کیا کارنامہ انجام دی ہے ، ان تمام کارناموں کو کتابی شکل میں لاتے ہوئے عوام تک پہنچایا جائیگا ۔ ایڈی یورپا اور جگدیش شٹر مجھ سے میرے کاموں کی تفصیل پوچھ رہے ہیں،میں ان کو ایک ہی اسٹیج پر آنے کی دعوت دیتا ہوں تاکہ عوام کے سامنے باتیں کھل کر آجائیں کہ کون کیا کیا ہے۔ کس نے ریاست کو لوٹا ہے؟ایڈی یورپا جب بدعنوانی کے بارے میں بات کرتے ہیں تو مجھے انتہائی تعجب ہوتا ہے کہ کرناٹک کی تاریخ میں چیک کے ذریعہ رشوت لیتے ہوئے جیل جانے والے واحد وزیر اعلیٰ ایڈی یورپا ہیں ۔ ایسی حالت میں نریندر مودی آکر عوام سے کہتے ہیں کہ بی جے پی کو بر سر اقتدار لاؤ،سدارامیا نے عوام سے سوالیہ انداز میں کہا کہ کیا لوٹ مار کرنے والوں کو اقتدار دیا جائے ؟ ہم نے کسانوں کا قرضہ معاف کیا ہے ، کسانوں کو 3لاکھ روپئے تک سود کے بغیر قرضہ فراہم کیا ہے؟ زرعی تالابوں کی باز آباد کاری کی گئی ہے۔ 1.20کروڑ عوام کو فی کس 7کلو چاول بالکل مفت فراہم کررہے ہیں ، اس طرح کی اسکیم جاری کرنے والی ملک کی واحد ریاست کرناٹک ہے ، ہم بہت کام انجام دیتے ہیں اور بہت کچھ کام انجام دینا بھی ہے ۔ مالیاتی سال 2013-14میں ریاست سرمایہ کاری میں11ویں نمبر پر تھی اب نمبر1مقام پرپہنچ گئی ہے۔گزشتہ دو سال کے دوران ہم نے گجرات کو مات دیتے ہوئے ریاست کو نمبر 1مقام پر لے جانے کا کارنامہ انجام دیا ہے ۔ جیل جانے والے کو ووٹ دینے کی مانگ کرتے ہوئے نریندر مودی کو شرم آنی چاہئے ۔ امیت شاہ قتل معاملہ میں جیل کی ہوا کھا چکے ہیں ، ریاست بد رکئے گئے ہیں ۔ ایسے آدمی کو بی جے پی نے قومی صدر بنایا ہے ۔

ایک نظر اس پر بھی

ہمیں اپنی چھٹیوں سے لطف اندوزہونے دیجئے : جسٹس سیکری

کرناٹک میں اقتدار کو لے کر تنازعہ پر سماعت مکمل کرتے ہوئے سپریم کورٹ نے آج کہا کہ اب ہمیں اپنی چھٹیوں سے لطف اندوز ہونے دیجئے۔ عدالت عظمیٰ میں تین ججوں کے ایک بنچ کی صدارت کر رہے جسٹس اے کے سیکری نے جب عجیب انداز میں یہ تبصرہ کیا اس وقت عدالتی کمرہ قہقہوں سے گونج اٹھا۔

کرناٹک سیاسی بحران: یہ آئین اور دستور کی جیت ہے :ملی کونسل

کرناٹک میں جاری سیاسی ہنگامہ آرائی پر آج پہلی مرتبہ ملک کی معروف تنظیم آل انڈیا ملی کونسل کے جنرل سکریٹری ڈاکٹر محمد منظور عالم نے اپنے ردعمل کا اظہا رکرتے ہوئے کہاکہ مرکز میں برسر اقتدار بی جے پی حکومت نے وہاں دستور کی دھجیاں اڑانے کی کوشش کی تھی

کرناٹک کے عوام نے تینوں پارٹیوں کو خوش کردیا

تمام ہنگامی حالات کا سامنا کرنے کے بعد کرناٹک کی سیاست ایک اطمینان بخش مرحلہ تک پہنچ گئی ہے ۔ ایڈی یورپا نے استعفیٰ دے دیا ، جے ڈی ایس اور کانگریس کی مخلوط حکومت کا بننا تقریباًطے ہے۔

بی جے پی کی حکومت گرنے کے بعد اب کمارا سوامی ہوں گے نئے وزیراعلیٰ، چہارشنبہ کو لیں گے حلف

بی جے پی رہنما بی ایس ایڈی یورپا کے استعفیٰ کے ساتھ ہی جے ڈی ایس کے ریاستی سربراہ ایچ ڈی کمارسوامی کی قیادت میں کرناٹک میں تین دن پرانی بی ایس ایڈی یورپا حکومت بلاخر آج ختم ہوگئی جب چیف منسٹر ایڈی یورپا نے اعلان کیا کہ وہ ایوان میں اکثریت کے امتحان میں سامنا نہیں کرگے بلکہ اس سے ...

ہندوستانی سیاست کے لئے تاریخی دن: سدارمیا، چندرابابو نائیڈو، ممتابنرجی اوردیگر لیڈروں نے جمہوریت کی جیت قرار دیا

کرناٹک اسمبلی میں اکثریت ثابت کرنے سے پہلے بی جے پی لیڈر یدی یورپا نے وزیراعلیٰ عہدہ سے استعفیٰ دے دیا۔ یدی یورپا کے استعفیٰ پر تمام لیڈروں نے ردعمل ظاہر کیا۔