سی برڈ منصوبے کے لئے زمین گنوانے والوں کو 250کروڑ روپے معاوضہ ادا ہوچکا ہے:ڈپٹی کمشنر نکول

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th February 2018, 8:30 PM | ساحلی خبریں |

کاروار، 19؍فروری(ایس او نیوز) ضلع ڈپٹی کمشنر ایس ایس نکول کے مطابق بحری اڈے سی برڈ منصوبے کے ضمن میں جوزمینیں تحویل میں لی گئی تھیں، ان کے مالکان کو دیے جانے والے معاوضے کا مسئلہ جو گزشتہ تیس برسوں سے اٹکا پڑا تھا اب مرکزی حکومت کے محکمۂ دفاع کے ذریعے حل ہوگیا ہے۔

ڈی سی نے کاروار میں کمرشیل پورٹ کے دوسرے مرحلے کی توسیع کے سلسلے میں منعقدہ ایک میٹنگ کے دوران یہ بات بتائی۔پورٹ کی توسیع کے تعلق سے عوام کی طرف سے حمایت اور مخالفت میں پیش کیے گئے خیالات کو جاننے کے بعد انہوں نے اپنے تاثرات بیان کیے۔اور کہا کہ ضلع انتظامیہ عوامی مفاد کو سامنے رکھ کر منصوبوں پر عمل کرتی ہے۔جہاں تک سی برڈ منصوبے سے بے گھر ہونے والوں کا معاملہ ہے اس میں اب تک 250کروڑ روپے معاوضہ اداکیا جا چکا ہے جبکہ حکومت نے 220کروڑ روپے عدالت میں جمع کروائے ہیں۔

انہوں نے مزید بتایا کہ ضلع میں روایتی ماہی گیری کو نقصان نہ پہنچنے جیسے انتظامات کیے گئے ہیں۔پورے ملک میں ضلع شمالی کینرا ہی ایک ایسا ضلع ہے جہاں پر ’لائٹ فشنگ‘ پر پابندی لگائی گئی ہے۔اس کے علاوہ ضلع میں بے روزگاروں کو روزگار دلانے کے لئے کئی مرتبہ ’روزگار میلہ‘کا انعقاد کیا گیا مگر یہاں کے بے روزگاروں کی طرف سے اس ضمن میں زیادہ تعاون اور دلچسپی کا مظاہرہ نہیں ہوا۔ضلع کے باہر سے نوجوان ان میلوں میں شرکت کرتے ہیں، مگر ہمارے اپنے ضلع سے بے روزگار نوجوان اس میں اپنے آپ کو رجسٹر نہیں کرواتے ۔ڈی سی نے نوجوانوں سے اپیل کی کہ صرف نوکری نہ ملنے کی بات کہہ کر بے روزگار رہنے کے بجائے کوئی فن او رہنر سیکھ کر خودروزگار کی طرف قدم بڑھائیں کیونکہ اس کی بڑی اہمیت ہوا کرتی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ملپے سے گم شدہ ماہی گیر کشتی معاملہ میں نیا موڑ: نیوی کے افسران نے مانا کہ جنگی جہاز سے ہواتھا کشتی کا تصادم

مہاراشٹرا میں سندھو درگ کے قریب سمندر میں ماہی گیری کے دوران مچھیروں سمیت لاپتہ ہونے والی کشتی ’سوورنا تریبھوجا‘ کے تعلق سے اب ایک نیا موڑ سامنے آیا ہے اور تحقیقاتی افسران کو یقین ہوگیا ہے کہ اس ماہی گیر کشتی کی ٹکر بحریہ کے ایک جنگی جہاز’آئی این ایس کوچی‘ سے ہوئی اور ماہی ...

کاروار بوٹ حادثہ: زندہ بچنے والوں نے کیا حیرت انگیز انکشاف قریب سے گذرنے والی بوٹوں سے لوگ فوٹوز کھینچتے رہے، مدد نہیں کی؛ حادثے کی وجوہات پر ایک نظر

کاروار ساحل سمندر میں پانچ کیلو میٹر کی دوری پر واقع جزیرہ کورم گڑھ پر سالانہ ہندو مذہبی تہوار منانے کے لئے زائرین کو لے جانے والی ایک کشتی ڈوبنے کا جو حادثہ پیش آیا ہے اس کے تعلق سے کچھ حقائق اور کچھ متضاد باتیں سامنے آرہی ہیں۔ سب سے چونکا دینے والی بات یہ ہے کہ کشتی جب  اُلٹ ...

دارالعلوم اسلامیہ عربیہ تلوجہ میں علمائے شوافع کی جانب سے فقہی سمینار کا انعقاد ؛ علماء فقہائے شوافع نے حقیقتاً حدیث اور فقہ میں بہت نمایاں کام کیاہے: خالد سیف اللہ رحمانی 

بروز سنیچر 19؍ جنوری مجمع الامام الشافعی العالمی کی جانب سے دو روزہ پہلے فقہی سمینار کا آغاز کیا گیا اس سمینار کا افتتاحی جلسہ صبح 10؍ بجے جامعہ دارالعلوم اسلامیہ عربیہ تلوجہ ممبئی میں منعقد کیا گیا

بھٹکل: ریاست کے مشہور سد گنگامٹھ کے شری کمار سوامی جی کی وفات پر رابطہ ملت اترکنڑا کا اظہار تعزیت

ریاست کے قدآور ، معروف سد گنگا مٹھ کے شری کمار سوامی جی کے دارِ فانی سے کوچ کر جانے پر رابطہ ملت اترکنڑا ضلع کے عہدیداران نے اظہار تعزیت کرتے ہوئے کہا ہے کہ سوامی جی ملک کی ایک قوت کی مانند تھے۔

گنگولی کے آراٹے ندی میں غرق ہوکر لاپتہ ہونے والے ماہی گیر کی نعش آج برآمد

یہاں آراٹے ندی میں غرق ہوکر کل رات ایک ماہی گیر لاپتہ ہوگیا تھا، جس کی نعش آج متعلقہ ندی سے برآمد کرلی گئی ہے۔ ماہی گیر کی شناخت آراٹے کڑین باگل کے رہنے والے  کرشنا موگویرا (50) کی حیثیت سے کی گئی ہے۔

کنداپور میں ہوئی چوری کی واردات کے بعد پولس نے گھر میں نوکری کرنے والے میاں بیوی کوکیا گرفتار

کنداور دیہات کے سٹپاڑی کے ایک گھرمیں ہوئی  چوری کے معاملے میں کنداپور دیہی پولس نے فوری کارروائی کرتے ہوئے اسی گھر میں کام کرنےو الے میاں بیوی کو صرف دو دنوں میں ہی گرفتار کر کے معاملے کو حل کرنے میں کامیابی حاصل کرلی  ہے۔