کٹھوعہ سانحہ: جموں و کشمیر حکومت متاثرہ خاندان اور وکیل کو تحفظ فراہم کرے: عدالت

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 17th April 2018, 11:56 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی 16 اپریل ( ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) سپریم کورٹ نے آج جموں کشمیر حکومت کو ہدایت دی کہ کٹھوعہ سانحہ کے متاثرہ اہل خانہ اور ان کی وکیل نیز دیگر اہل خانہ کے رشتہ داروں کو تحفظ فراہم کیا جائے۔ عدالت عظمی نے مقتولہ کے خاندان کے اس درخواست پر بھی غور کیا کہ مقدمے کو کٹھوعہ سے چندی گڑھ منتقل کر دیا جائے۔ عدالت نے اس پر ریاستی حکومت سے جواب مانگا ہے۔ اس معاملہ میں اب 27 اپریل کواگلی سماعت ہوگی۔چیف جسٹس دیپک مشرا، جسٹس اے. ایم کھانولکر اور جسٹس دھننجے وائی چندرچوڈ کے تین رکنی بنچ کے سامنے سماعت کے دوران متاثر کے والد نے جموں کشمیر پولیس کی تحقیقات پر اطمینان کا اظہار کیا اور ملزمان کی طرف سے اس کی جانچ سی بی آئی کو سونپے جانے کی درخواست کی مخالفت کی۔ بنچ نے ریاستی حکومت کو ہدایت دی کہ اس معاملے میں ملزم نوعمر کو ’سدھار گھر‘ میں حسب ضرورت تحفظ فراہم کیا جائے۔ بنچ نے یہ بھی کہا کہ مقتول کے خاندان کے ارکان اور دوسروں کو تحفظ فراہم کرنے والے پولیس اہلکار سادہ کپڑوں میں ہوں گے۔

ایک نظر اس پر بھی

سی بی آئی نے راکیش استھانہ کے خلاف جس قانون کے تحت بنایا کیس، وہ قانون اب ہے ہی نہیں

مرکزی تفتیشی بیورو( سی بی آئی ) نے اپنے خصوصی ڈائریکٹر راکیش استھانہ کے خلاف جو کیس کیا ہے، اس میں قانونی کوتاہیوں کی بھرمار ہے۔ نجی ٹی وی NDTV کے مطابق یہ ا طلاعات اس وقت ملی، جب سی بی آئی کے دونوں اعلی افسران کی لڑائی منگل کو دہلی ہائی کورٹ پہنچ گئی۔

عام آدمی پارٹی نے تین نئے سیل قائم کیے

عام آدمی پارٹی (آپ) نے لوک سبھا انتخابات کی تیاریوں کے پیش نظر پارٹی کا ڈھانچہ مضبوط کرنے کے لیے علاقائی بنیاد پر تین نئے سیل قائم کرتے ہوئے پوروانچل، اتراکھنڈ اور جنوبی بھارتی سیل میں ذمہ داروں کو مقرر کیا ہے۔

ممتا کے ہاتھوں جواں سال لخت جگر کے قتل کا معاملہ ، مجھے پولیس اور قانون پر پورا بھروسہ ہے: رمیش یادو

مبینہ ’مشتبہ حالات‘ میں اپنے بیٹے کو کھونے والے اترپردیش قانون ساز کونسل کے چیئرمین رمیش یادو نے پولیس اور قانون پر پورا بھروسہ ظاہر کرتے ہوئے آج کہا کہ ان کے بیٹے کو انصاف ضرورملے گا۔