ایران سے تعلقات رکھنے والے دہشت گردوں کا سامنا ہے : سعودی وزارت داخلہ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 26th December 2017, 7:35 PM | خلیجی خبریں |

ریاض 26دسمبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) سعودی وزارت داخلہ کے ترجمان بریگیڈیئر جنرل منصور الترکی نے باور کرایا ہے کہ’’سعودی عرب کو ایسے دہشت گرد گروپوں کا سامنا ہے جن کے ایران کے ساتھ واضح تعلقات ہیں۔قطیف میں محکمہ اوقاف کے جج محمد الجیرانی کے قتل کی تفصیلات کے حوالے سے پریس کانفرنس میں الترکی نے بتایا کہ ’’دہشت گردی کی سرپرستی کرنے والے ممالک اپنے ملوث ہونے کے ثبوت نہیں چھوڑتے تا کہ بین الاقوامی سطح پر ان کی مذمت نہ کی جا سکے۔ وہ ایسی جماعتیں تشکیل دیتے ہیں جو اْن کی طرف سے سپورٹ اور فنڈنگ حاصل کر کے دہشت گردی کے مشن انجام دیتے ہیں۔ یہ معاملہ ہم یمن میں حوثی جماعت اور لبنان میں حزب اللہ کا دیکھتے ہیں‘‘۔انہوں نے مزید کہا کہ ’’ہم قطیف ضلعے میں العوامیہ قصبے کے علاقے المسورہ سے دہشت گرد عناصر کو نکال دینے میں کامیاب ہو گئے۔قطیف میں الجیرانی کے قتل کے جرم کے حوالے سے الترکی نے تصدیق کی ہے کہ "اس سلسلے میں الجیرانی کے ایک اغوا کار اور سکیورٹی حکام کو مطلوب انتہائی خطرناک دہشت گرد سلمان الفرج ہلاک کر دیا گیا اور اس کے سوتیلے بھائی زکی الفرج کو گرفتار کر لیا گیا‘‘۔وزارت داخلہ کے ترجمان کے مطابق الجیرانی کے اغوا کی کارروائی میں کئی دہشت گرد شریک تھے۔ انہوں نے بتایا کہ مملکت کی جانب سے سکیورٹی اداروں کو تمام تر مطلوبہ لوازمات فراہم کیے جا رہے ہیں تا کہ وہ دہشت گردوں کے تعاقب میں اپنی ذمے داریوں کو پوری تندہی کے ساتھ انجام دے سکیں۔اس سے قبل سعودی وزارت داخلہ نے آج پیر کے روز ہی اعلان کیا تھا کہ العوامیہ میں ملنے والی مدفون لاش محمد الجیرانی کی ہے جو اپنے اغوا کاروں کے ہاتھوں قتل کیا گیا تھا ۔ 
 

ایک نظر اس پر بھی

مسجد الحرام میں غیر ملکی شخص کی خودکشی

سعودی عرب کے شہر مکہ میں اسلام کے مقدس ترین مقام مسجد الحرام میں ایک شخص نے خود کشی کر لی ہے۔سعودی عرب کی سرکاری خبر رساں ایجنسی ایس پی اے نے مکہ پولیس کے ترجمان کے حوالے سے بتایا ہے کہ غیر ملکی شہری نے جمعہ کی رات نو بج کر 20 منٹ پر مسجد الحرام کی چھت سے نیچے طواف کرنے کی جگہ پر ...

مسجد نبوی میں سکیورٹی اہلکاروں کی خدمات پر ایک نظر

مسجد نبوی میں آنے والے زائرین کی نظروں میں سعودی سکیورٹی اہل کار نمایاں ترین حیثیت کے حامل نظر آتے ہیں۔ یہ اہل کار مسجد کے تمام حصوں اور راستوں میں خدمات انجام دیتے ہوئے عبادت کے لئے پْرسکون ماحول یقینی بنانے میں مصروف عمل ہوتے ہیں۔

مکہ المکرمہ :ماہ رمضان کے آخری عشرہ میں سکیورٹی انتظامات 70؍لاکھ فرزندان توحید نے عمرہ اداکیا

سعودی حکومت نے رمضان المبارک کے تیسرے عشرہ کے آغاز پر مکہ المکرمہ کے داخلی اور خارجی راستوں پر سخت حفاظتی اقدامات کیے ہیں، مسجد الحرام اور اطراف کے علاقوں میں فضائی سکیورٹی اور نگرانی بڑھا دی گئی ہے۔