سعودی سرحد کے نزدیک 3 کمانڈروں سمیت 70 حوثی ہلاک اور 40 قید

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 20th September 2017, 8:11 PM | خلیجی خبریں |

ریاض،20ستمبر(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)سعودی افواج نے گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران یمن کے ساتھ سرحد کے نزدیک عرب اتحاد کے طیاروں کی معاونت سے حوثی ملیشیا اور معزول صالح کی ہمنوا فورس کے خلاف کامیاب کارروائیاں کی ہیں۔

پہلی کارروائی سعودی سرحد کے نزدیک واقع یمنی صوبے حرض میں وادی عبداللہ کے علاقے میں کی گئی۔ اس میں یمنی فوج کے پیدل دستوں نے حصہ لیا اور ان کو سعودی اپاچی ہیلی کاپٹروں اور سعودی توپ خانوں کی معاونت حاصل تھی۔ باغی ملیشیا کے عناصر نے سعودی سرحد پر نگرانی کی چوکیوں تک پہنچنے کی کوشش کی جس میں وہ ناکام رہے۔ اس دوران 20 حوثیوں کو ہلاک کر دیا گیا جب کہ بقیہ فرار ہو گئے۔

دوسری کارروائی سعودی عرب کے صوبے عسیر میں واقع علاقے مرکز الربوعہ کے مقابل کی گئی جہاں سعودی افواج نے باغی ملیشیا کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا۔ یہ ٹھکانے گنجان آباد علاقوں میں راکٹ داغے جانے کے لیے استعمال کیے جا رہے تھے۔ کامیاب کارروائی کے نتیجے میں ان ٹھکانوں کو تباہ کر دیا گیا اور وہاں موجود مسلح عناصر میں کم از کم افراد مارے گئے۔ کارروائی میں سعودی فوج کے پیدل دستوں نے حصہ لیا جب کہ انہیں عرب فضائیہ کی معاونت بھی حاصل رہی۔

تیسری کارروائی پہلی دو کے مقابلے میں زیادہ بڑی تھی اور یہ پورے ایک روز جاری رہی۔ یہ کارروائی سعودی عرب کے علاقے نجران کے مقابل علاقے میں کی گئی جہاں آپریشن کنٹرول اینڈ کمانڈر روم نے حوثی ملیشیا کے عناصر اور عسکری گاڑیوں کو نجران کی سمت سعودی سرحد کی جانب پیش قدمی کرتے ہوئے دیکھ لیا۔ سعودی افواج نے گھات لگا کر کارروائی کی اور ساتھ ہی اتحادی طیاروں نے شدید بم باری بھی کی۔

اس طرح سعودی افواج نے ان کارروائیوں کو اختتام پر پہنچایا۔ کارروائیوں میں 40 سے زیادہ حوثی عناصر ہلاک کر دیے گئے جن میں 3 اہم کمانڈر شامل ہیں اور 100 سے زیادہ زخمی ہو گئے۔ اس کے علاوہ باغی ملیشیا کی 15 سے زیادہ عسکری گاڑیاں تباہ کر دی گئیں اور درجنوں کو قیدی بنا لیا گیا۔

ایک نظر اس پر بھی

عاسکر فرنانڈیز کریں گے منکی کو اڈوپٹ ؛ منکی کی بنیادی مسائل حل کرنے اور ترقیاتی کاموں کو انجام دینے اتحاد و ملن پروگرام میں اعلان

منکی کے ساتھ میرا خاص تعلق رہا ہے اور منکی والوں کے ساتھ بھی میرے ہمیشہ سے اچھے تعلقات رہے ہیں، شیرور کو میں نے اڈوپٹ کیا تھا اور اپنے فنڈ سے شیرور میں ترقیاتی کام کئے تھے، اب میں منکی کے بنیادی مسائل حل کرنے اور وہاں ترقیاتی کاموں کو انجام دینے منکی کو اپنے اختیار میں لے رہا ...

ولی عہد دبئی کی جانب سے’فٹ نس چیلنج‘ میں شرکت کی دعوت

متحدہ عرب امارات کی قیادت بڑے بڑے چیلنجز کا خود مقابلہ کرنے کے ساتھ مملکت کے عوام اور امارات میں مقیم شہریوں کو نئے چیلنجز کا مقابلہ کرنے اور انہیں زندگی کے ہرشعبے میں آگے نکلنے کی صلاحیت پیدا کرنے کے لیے کوشاں ہے۔

اخوانی پروفیسروں پر سعودی یونیورسٹیوں کے دروازے بند،اخوانی نظریات سے دہشت گرد پیدا ہو رہے ہیں: ڈاکٹر سلیمان ابا الخلیل

سعودی عرب کی ایک بڑی دینی درس گاہ جامعہ الامام کے ڈائریکٹر اور سپریم علماء کونسل کے رکن ڈاکٹر سلیمان ابا الخلیل نے کہا ہے کہ یونیورسٹی نے اخوان المسلمون کے افکار سے متاثر تمام شخصیات سے معاہدے ختم کردیے ہیں۔