سعودی قیادت میں عرب اتحاد کا یمن کے لیے ڈیڑھ ارب ڈالرز کی امداد کا اعلان

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 24th January 2018, 11:57 AM | خلیجی خبریں | عالمی خبریں |

ریاض23جنوری(ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا)سعودی عرب کی قیادت میں عرب اتحاد نے یمن کے لیے مزید ڈیڑھ ارب ڈالرز کی امداد کا اعلان کیا ہے۔عرب اتحاد نے سوموار کو ایک بیان میں کہا ہے کہ وہ یمنی عوام تک انسانی امداد بہم پہنچانے کے لیے الحدیدہ سمیت ملک کی تمام بندرگاہوں کو کھلا رکھنے کے لیے اقدامات کرے گا اور اس بات کو یقینی بنائے گا کہ یہ بندر گاہیں ہمہ وقت کھلی رہیں۔اس اعلان سے قبل گذشتہ ہفتے سعودی عرب کے مرکزی بنک نے یمن کے مرکزی بنک میں دو ارب ڈالرز کی رقم منتقل کی تھی اور اس کا مقصد یمنی ریال کو مزید گراوٹ کا شکار ہونے سے بچانا تھا۔عرب اتحاد کے بیان کے مطابق نئی اعلان کردہ امدادی رقم اقوام متحدہ کی ایجنسیوں اور بین الاقوامی امدادی تنظیموں کے ذریعے تقسیم کی جا ئے گی اور اس کو غذائی اجناس اور دوسرے امدادی سامان کی یمن میں درآمد پر صرف کیا جائے گا۔اتحاد کا کہنا ہے کہ وہ یمن کے لیے ماہانہ درآمد کی جانے والی غذائی اجناس کی مقدار کو بڑھا کر ایک کروڑ چالیس لاکھ میٹرک ٹن تک کرنا چاہتا ہے۔ گذشتہ سال ہر ماہ یمن میں ایک کروڑ دس لاکھ میٹرک ٹن غذائی اجناس درآمد کی گئی تھیں۔اتحاد نے یمن کی بند رگاہوں کی گنجائش میں اضافے کے لیے بھی چار کروڑ ڈالرز دینے کا وعدہ کیا ہے تاکہ غذائی اجناس لے کر آنے والے اضافی بحری جہازوں کو وہاں لنگر انداز کیا جاسکے۔اس نے سعودی دارالحکومت الریاض اور یمن کے وسطی صوبے مآرب کے درمیان ایک فضائی کوریڈور قائم کرنے کا بھی اعلان کیا ہے۔اس کے تحت الریاض سے سی 130 مال بردار طیاروں کے ذریعے مختلف اقسام کا ضروری امدادی سامان ، غذائی اشیاء4 اور ادویہ بھیجی جائیں گی۔اس کے علاوہ میں یمن میں متاثرہ افراد تک امدادی سامان بہم پہنچانے کے لیے سترہ محفوظ زمینی راہداریاں بنائی جائیں گی تاکہ یمن کے دور دراز علاقوں میں کام کرنے والی بین الاقوامی تنظیمیں وہاں کسی رکاوٹ کے بغیر امدادی سامان پہنچا سکیں۔عرب اتحاد کے ترجمان کرنل ترکی المالکی کا کہنا ہے کہ ان انسانی امدادی سرگرمیوں کو محفوظ طریقے سے پایہ تکمیل کو پہنچانے کے لیے عسکری وسائل بھی مہیا کیے جائیں گے۔ان کا کہنا تھا کہ ’’ہم مصائب کا شکار یمنیوں کے مسائل کم کرنے کے لیے ان تک پیشہ ورانہ انداز میں امدادی سامان پہنچانے کی ضمانت دیں گے‘‘۔

ایک نظر اس پر بھی

یمن : حوثیوں کے لیے کام کرنے والے ایرانی جاسوس عرب اتحاد کے نشانے پر

یمن میں آئینی حکومت کو سپورٹ کرنے والے عرب اتحاد کے لڑاکا طیاروں نے تعز شہر کے مشرقی حصّے میں جاسوسی کے ایک مرکز کو نشانہ بنایا۔ اس مرکز میں ایرانی ماہرین بھی موجود ہوتے ہیں جو باغی حوثی ملیشیا کے لیے کام کرتے ہیں۔

شاہ سلمان اور صدر السیسی کے درمیان ٹیلیفونک رابطہ

سعودی عرب کے فرمانروا خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود اور مصری صدر عبدالفتاح السیسی کے درمیان ٹیلیفون پر رابطہ ہوا ہے۔ اس موقع پر شاہ سلمان نے مصر کی سلامتی اور استحکام کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔

ایران میں رواں سال تین کم سن بچوں کو پھانسی پر لٹکا دیا گیا:یو این

ایران میں کم عمر افراد کو سزائے موت دیے جانے اور ان سزاؤں پر عمل درآمد میں ماضی کی نسبت اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔ اقوام متحدہ کی طرف سے جاری کردہ ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ رواں سال 2018 کے پہلے ڈیرھ ماہ میں ایران میں تین کم عمر افراد کو پھانسی دے کر موت سے ہم کنار کردیا گیا۔