سعودی علماء کونسل نے مصر میں بم دھماکوں کی مذمت کردی;اللہ اور روزِ قیامت پر ایمان رکھنے والے مسلمانوں کا ان بم دھماکوں سے کوئی تعلق نہیں: بیان

Source: S.O. News Service | Published on 10th April 2017, 9:54 PM | خلیجی خبریں |

ریاض،10اپریل(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)سعودی عرب کے اعلیٰ مذہبی ادارے ”سینئر علماء کونسل“ نے مصر کے دو شہروں میں قبطی عیسائیوں کے گرجا گھروں میں بم دھماکوں کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے اور کہا ہے کہ یہ بم حملے ایک مجرمانہ کارروائی ہیں اور اسلامی اجماع میں ان کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔سینئر علماء کونسل نے اتوار کو طنطا اور اسکندریہ میں دو گرجا گھروں میں بم دھماکوں کے بعد ٹویٹر پر ایک بیان جاری کیا ہے اور اس میں کہا ہے کہ ”یہ بم دھماکے اسلام کی متعدد تعلیمات کے منافی ہیں۔یہ بغاوت،گناہ اور جارحیت کے زمرے میں آتے ہیں“۔ ان دونوں بم دھماکوں میں چوالیس افراد ہلاک اور ایک سو سے زیادہ زخمی ہوگئے ہیں۔سخت گیر جنگجو گروپ داعش نے ان بم حملوں کی ذمے داری قبول کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ اللہ اور روزِ قیامت پر ایمان رکھنے والے ہر مسلمان کا ان بم حملوں سے کوئی تعلق نہیں ہے،سوائے ان کے جنھوں نے اپنے عقیدے اور نظریے سے انحراف کرتے ہوئے اس گناہ کا ارتکاب کیا ہے“۔واضح رہے کہ سعودی عرب کے سینئر (کبار) علماء کی کونسل مملکت کا سب سے اعلیٰ مذہبی ادارہ ہے اور یہی کونسل شاہ کو مذہبی امور سے متعلق مشورے دیتی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

شارجہ میں ابناء علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی خوبصورت تقریب؛ یونیورسٹی میں میڈیکل تعلیم صرف 60 ہزار میں ممکن!

علی گڈھ مسلم یونیورسٹی جسے بابائے قوم مرحوم سر سید احمد خان نے دو سو سال قبل قائم کیا تھا آج تناور درخت کی شکل میں ملک میں تعلیم کی روشنی عام کررہا ہے۔اس یونیورسٹی میں میڈیکل کے طلبا کے لئے پانچ سال کی تعلیمی فیس صرف 60,000 روپئے ہے، حالانکہ دوسری یونیورسیٹیوں میں میڈیکل کے طلبا ...

متحدہ عرب امارات میں حفظ قرآن جرم، حکومت کی منظوری کے بغیر کوئی شخص قرآن حفظ نہیں کرسکتا، مساجد میں مذہبی تعلیم اور اجتماع پر بھی پابندی

مشرقی وسطیٰ کے مختلف ممالک میں داخل اندازی اور عرب کی اسلامی تنظیموں کو دہشت گرد قرار دینے کے بعد متحدہ عرب امارات قانون کے ایسے مسودہ پر کام کررہا ہے جس کی رو سے حکومت کی منظوری کے بغیر قرآن شریف کا حفظ بھی غیرقانونی ہوگا۔