سعودی عربیہ کو الوداع کہہ کر وطن لوٹنے کے بعدساحلی علاقے میں ICSE اور انگریزی میڈیم اسکولوں میں بڑھ گئے بچوں کے داخلے 

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 22nd July 2018, 8:39 PM | ساحلی خبریں | خلیجی خبریں | ریاستی خبریں |

بھٹکل 22؍جولائی (ایس او نیوز) سعودی عربیہ میں غیر وطنی باشندوں اور ملازمین کے تعلق سے نئے اور سخت قوانین سے پریشان ہو کر غیر رہائشی ہندوستانیوں کے وطن واپس لوٹنے کے بعد ان کے بچوں کو اسکولوں میں داخل کرانے  کا مسئلہ بھی کافی سنگین ہوگیا ہے۔ مسئلہ یہ ہے کہ ریاست کرناٹک کے کسی بھی اسکول میں داخل  کرنے کی صورت میں کنڑا سبجیکٹ لینا لازمی  ہے۔ جو طلبا پرائمری اسکولوں میں داخلہ لیتے ہیں  تو اُن کے لئے زیادہ مسئلہ نہیں ہوگا، البتہ  ہائی اسکولوں میں داخلہ لینے والے  بچوں کو کنڑا معلوم نہ ہونے سے سنگین مسئلہ پیدا ہوگیا ہے۔

سعودی عربیہ کے شہروں میں  کاروبار یا ملازمت کے سلسلے میں جو ہندوستانی باشندے رہائش پذیر تھے ان میں زیادہ تعداد ساحلی کرناٹکا کی ہے اور اس میں سے ضلع جنوبی کینرا کے بعد بھٹکل  کے افراد کی کثیر تعداد  ہے۔ ایک اندازے کے مطابق ایک سال کے اندر ساحلی علاقوں  کے تقریباً ایک ہزار سے زائد   خاندان اب تک اپنے اپنے شہروں کو واپس ہوئے ہیں۔ سعودی عربیہ کو الوداع کہہ کر بڑی تعداد میں لوگوں کے  لوٹنے کا ایک اثر یہ ہوا ہے کہ ساحلی علاقے کے انگلش میڈیم کے  سی بی ایس سی اور  آئی سی ایس ای  نصاب والے اسکولوں میں طلبہ کے داخلوں میں اضافہ نظر آرہا ہے، وہیں کچھ بچوں نے مدرسوں کا بھی رُخ کیا ہے۔ ایسے میں اس بات کی بھی اطلاع ملی ہے کہ کچھ بچوں نے کنڑا کو ترک کرنے کے لئے گوا کے اسکولوں میں بھی داخلہ لیا ہے۔

بھٹکل کے معروف شمس انگلش میڈیم اسکول کے سکریٹری طلحہ سدی باپا نے بتایا کہ  سعودی عربیہ میں زندگی کی مشکلات سے تنگ آکرجو لوگ وہاں سے اپنے بیوی بچوں کو وطن واپس بھیج رہے ہیں اس کی وجہ سے مقامی اسکولوں میں داخلے بڑھ گئے ہیں۔ حالیہ دنوں میں ہمارے اسکول میں سعودی سے آنے والے  55 طلبا کا داخلہ ہوا ہے۔  انہوں نے بتایا کہ ان کے اسکول میں آئی سی ایس ای نصاب کے تحت تعلیم دی جاتی ہے اور اس نصاب میں  آٹھویں اور نویں میں کنڑا زبان لازمی  ہے، لیکن  میٹرک میں کنڑا ضروری نہیں ہے۔ اسکول کے ٹیچر  محمد رضا مانوی نے بتایا کہ  پرائمری بچوں کو کنڑا پڑھانا کوئی مشکل بات نہیں ہے، مگر   ہائی اسکولوں کے بچوں کو کنڑا سکھانا آسان نہیں ہے، البتہ انہوں نے بتایا کہ اسکول میں بچوں کو کنڑا کی تعلیم دینے  الگ سے کوچنگ کا انتظام کیا گیا ہے۔

کئی سالوں سے سو فیصد کامیابی درج کرنے والے بھٹکل کے نونہال سینٹرل اسکول میں ویسے تو ریاستی نصاب تعلیم  دی جاتی ہے اور کنڑا لازمی ہے، مگر ان سب کے بائوجود یہاں  بیس طلبا نے داخلہ لیا ہے۔ نونہال کی پرنسپل محترمہ  گل آفروز کولا نے بتایا کہ چونکہ سعودی عربیہ سے لوٹ کر آنے والےطلبا کنڑا سے بالکل ناواقف ہیں، لہٰذا اُنہیں کنڑا کے لئے الگ سے کلاسس شروع کئے گئے ہیں ۔

قومی تعلیمی ادارہ انجمن حامئی مسلمین بھٹکل کے  ماتحت  سبھی اسکولوں میں حالانکہ ریاستی نصاب تعلیم  ہے، 21 بچوں نے داخلہ لیا ہے جس میں سات بچے ہائی اسکولوں میں اور 14 پرائمری اسکولوں میں زیر تعلیم ہیں۔ اسی طرح سعودی سے لوٹنے والے  14 طلبا  کالجوں میں بھی داخل ہوئے ہیں۔

انجمن کے ایڈیشنل سکریٹری جناب اسحاق شاہ بندری نے بتایا کہ پرائمری اور ہائی اسکولوں سمیت انجمن کالج  میں بھی بچوں کو کنڑا سکھانے کے لئے خصوصی کوچنگ کا انتظام کیا گیا ہے اور ہر طرح کی سہولیات فراہم کی گئی ہے۔

اسی طرح کی  صورتحال شہر کے دوسرے معروف اور معتبر اسکولوں کی بھی ہے، جہاں سعودی سے واپس لوٹنے والے بچوں نے داخلہ لیا ہے۔  اس بات کی بھی اطلاع ملی ہے کہ سعودی سے لوٹنے والی کچھ لڑکیوں نے جامعات الصالحات میں بھی داخلہ لیا ہے۔

اُدھر مینگلور سے ملی اطلاع کے مطابق اس بار تقریباً 200افراد نے سعودی عربیہ کے اسکولوں سے اپنے بچوں کے ٹرانسفر سرٹفکیٹ نکال لیے ہیں۔ وہ سب وطن واپس لوٹ کر مینگلور  کے نجی اسکولوں میں اپنے بچوں کا داخلہ کروارہے ہیں۔ جس کی وجہ سے مینگلور کے اسکولوں میں بھی این آر آئی طلبہ کی تعداد میں اضافہ ہوجائے گا۔‘‘

منگلورو کے اینا پویا اسکول کے نمائندے نے بتایا کہ حالیہ دنوں میں ہمارے اسکول میں 20سے زائد  این آر آئی طلبہ کا داخلہ ہوا ہے۔‘‘

سعودی عربیہ سے واپس لوٹنے  والے بچوں کو  کنڑا سے ناواقفیت کے تعلق سے  پیش آنے والے  مسئلہ  سے  جب ریاست کے  وزیرتعلیم برائے ثانوی ایم رمیش کو واقف کرایا گیا تو انہوں نے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے بتایا کہ   ریاست کے لئے درپیش تعلیمی میدان میں یہ ایک نیا مسئلہ ہے، انہوں نے کہا کہ  میں اس وقت دہلی میں ہوں، پیر کو بنگلور لوٹتے ہی تعلیمی کمشنر سے اس مسئلہ پر گفتگو کروں گا اور متعلقہ اضلاع کی کمیٹیوں کی طرف سے حل ڈھوندھنے کی کوشش کروں گا۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں قربانی کے جانوروں کی ہڈیوں اور اوجھڑی کو لے جانے کی تنظیم نے پھر سونپی الہلال اسوسی ایشن کو ذمہ داری؛ فیڈریشن نے بھی کی عوام سے تعائون کی اپیل

قربانی کے جانوروں کی  ہڈیاں، اوجھڑی وغیرہ  کو گھر گھر جاکر لے جانے کی ذمہ داری مجلس اصلاح و تنظیم نے پھر ایک بار الہلال اسوسی ایشن کو سونپی ہے۔ جس کے نوجوان فون موصول ہوتے ہی متعلقہ مقام پر پہنچ کر ہڈیاں اور اوجھڑی وغیرہ  اپنے آٹو پر لاد  کر لے جائیں گے۔

منگلورو:ریلوے اوور برڈج سے چلتی کار پرگری وزنی لوہے کی سلاخ

منگلورو کے ماراوور علاقے میں انٹرنیشنل ایئر پورٹ کے پاس موجود ریلوے اوور برڈج سے ٹوٹی ہوئی ایک بہت ہی وزنی لوہے کی سلاخ اچانک نیچے سے گزرتی ہوئی کار پر گر گئی۔ خوش قسمتی سے کار میں موجود مسافروں کو کوئی نقصان نہیں پہنچا۔

منگلورو:بچہ چور سمجھ کر پٹائی کرنے کے معاملے میں 6 ملزمین گرفتار

دو روز قبل بچہ چور ہونے کا شک کرتے ہوئے کچھ لوگوں نے گرو کمبلامیں کنکن ناڈی کے رہنے والے حمزہ نامی شخص کی پٹائی کی تھی۔حملے کے شکار حمزہ کی شکایت پر کارروائی کرتے ہوئے بچپے پولیس نے 6ملزمین کو گرفتار کرلیا ہے۔

یلاپور: شارٹ سرکٹ سے اسپتال کے دستاویزات سمیت کئی اشیاء جل کر خاک

تعلقہ کے وجرلی پرائمری صحت عامہ مرکز ( اسپتال) میں پیر کی شام شارٹ سرکٹ  سے آگ لگی تو  اسپتال کے اہم دستاویزات،سامان  آگ کی نذر ہونے کا واقعہ پیش آیا ہے۔ حادثے کے وقت اسپتال میں کوئی بھی موجود نہیں ہونے کی وجہ سے کوئی جانی نقصان نہیں ہواہے۔

انکولہ میونسپالٹی کا صحن گندگی کا مرکز : سارے جہاں کاجائزہ،اپنے جہاں سے  بے خبر

شہر کے بلدیہ کا صحن اور ترکاری مارکیٹ گندگی کا گھر ہوگئے ہیں۔ سارے شہر کو پاکیزہ اور صاف ستھرارکھنے  کےلئے ہر طرف سوچھ بھارت منصوبے کا اعلان کرنے والی بلدیہ کا صحن بھی سب سے زیادہ گندگی  اور بدبو کا مرکز  بن گیا ہے۔

مناسک حج کی ادائیگی کے دوران اردنی خاتون نے بچے کو جنم دے دیا

مزدلفہ میں شب قیام کے بعد حجاج کرام پہلے دن کی رمی کے لئے منیٰ پہنچ گئے ہیں اورقربانی کے بعد حجاج کرام کاسرمنڈوا کر احرام کھولنے کاعمل بھی جاری ہے اورمناسک حج کی ادائیگی کے دوران اردنی خاتون نے بچے کو جنم دے دیا۔

فرش سے عرش تک لبیک اللھم کی صدائیں،مناسک حج کا آغاز؛ عرفات پہنچنے والے لاکھوں افراد میں 175025 ہندوستانی عازمین بھی شامل

دنیا بھر سے ہر قوم و نسل کے تقریبا 30 لاکھ عازمین حج جس میں ہندوستان کے 175025 عازمین بھی شام ل ہیں،  بیت اللہ کیلئے مکہ مکرمہ میں ہیں جو عمرے کی ادائیگی کے بعد رات سے ہی بسوں اور دیگر گاڑیوں میں سوار ہوکر اور پیدل منیٰ پہنچ رہے ہیں۔

بھٹکل کے ہونہار طالب العلم صلاح الدین ایوب سدی باپا نے لی پیرس سے ماسٹر ڈگری

بھٹکل انجمن انجینرنگ کالج سے ڈگری حاصل کرنے والے صلاح الدین ابن ایوب سدی باپا نے فرانس کے مشہور شہر  پیرس سے  ماسٹر آف ڈگری حاصل کرتے ہوئے  قوم و ملت کا نام روشن کردیا ہے۔ موصوف معروف قومی سماجی  خدمت گار  مرحوم ظفر علی  معلم کے  نواسے اور مسقط  سرکاری اسپتال کی ڈاکٹر ...

کرناٹک میں آج عید قرباں! سیلاب کی تباہی کے متاثرین کو امداد فراہم کرنےعید کی نماز کے موقع پر بیشتر جمعہ مساجد سے چندہ اکٹھا کرنے کی توقع

ریاست بھر میں آج سے  انتہائی تزک واحتشام سے عید قرباں منائی جارہی ہے۔ عید قرباں کے لئے جہاں تمام تیاریاں مکمل کرلی گئی ہیں وہیں پر ریاست کے کورگ ، ساحلی علاقوں اور ملناڈ میں تباہ کن سیلاب اور طوفانی بارش سے مچی تباہی کے متاثرین سے ہمدردی بھی شامل ہے۔ ریاست بھر کے مخیر اداروں ، ...

جانوروں کی نقل وحمل روکنے اقدامات جاری، ہائی کورٹ میں ریاستی حکومت کی طرف سے حلف نامہ

ریاستی حکومت کی طرف سے ہائی کورٹ میں حلف نامہ دائر کرکے یہ اقرار کیاگیا ہے کہ ریاست بھر میں مویشیوں کی غیر قانونی تجارت اور نقل وحمل کے علاوہ ذبیحہ پر پابندی کے لئے تمام قدم اٹھائے گئے ہیں۔

زرعی قرضوں کی معافی کے ضوابط میں ترمیم جلد: بینڈپا قاسم پور

ریاستی وزیر کوآپریشن بینڈپا قاسم پور نے کہا ہے کہ ریاست میں کسانوں کے قرضوں کی معافی کے متعلق طے کردہ ضوابط میں ترمیم لائی جائے گی اور ایک لاکھ روپیوں تک کا قرضہ ایک خاندان کے ایک ہی فرد کو معاف کرنے کی پابندی ہٹادی جائے گی۔

کرناٹکا میں سیلاب اور بارش سے مچی تباہ کاریوں کی رپورٹ پیش کرنے وزیراعظم مودی نے دی ہدایت؛ سیلاب متاثرین سے کی اظہار ہمدردی

ریاست میں سیلاب اور بارش کی صورتحال سے متاثر کورگ ، ہاسن ، چکمگلور اور ساحلی کرناٹک کے مختلف علاقوں میں مچی تباہی جانی ومالی نقصان اور دیگر تمام تفصیلات یکجا کرکے رپورٹ پیش کرنے وزیراعظم نریندر مودی نے کرناٹک کے اراکین پارلیمان کو ہدایت دی ہے۔