ڈرائیونگ کی اجازت پر سعودی خواتین پہلے سفر میں کہاں جائیں گی ؟

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 19th May 2018, 11:48 AM | خلیجی خبریں |

ریاض 18مئی (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا ) سعودی عرب میں خواتین کے گاڑی چلانے کا وقت یعنی 10 شوّال کا دن قریب آ رہا ہے۔ خواتین کی ایک بڑی تعداد اس حوالے سے منصوبہ بندی کر رکھی ہے۔ ان میں بعض تو ڈرائیونگ لائسنس کے حصول کے لیے تربیت حاصل کر رہی ہیں جب کہ بعض نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ تماشائی بن کر معاشرے میں اس نئے تجربے کے نتائج کا جائزہ لیں گی جس کا خواتین کو ایک طویل عرصے سے انتظار تھا۔سعودی عرب میں خواتین کو ڈرائیونگ سکھانے والی ایک تربیت کار کا کہنا ہے کہ "تربیت حاصل کرنے کے لیے آنے والی زیادہ تر خواتین کی عمر 60 برس کے لگ بھگ ہے۔ اس کے مقابل یونی ورسٹی طالبات اور نوجوان لڑکیوں کی توجہ کافی حد تک کم ہے جس کی بنیادی وجہ ان کے اہل خانہ کا ڈرائیوروں پر انحصار کرنا ہے۔ دوسری وجہ یہ ہے کہ ان لڑکیوں کے کم عمر ہونے کے سبب ان کے اہل خانہ نے گاڑی چلانے کی اجازت دینے سے انکار کر دیا ہے۔ البتہ ملازمت پیشہ یا کام کرنے والی خواتین کی صورت حال مخلتف ہے کیوں کہ وہ اپنی رائے میں زیادہ خود مختاری رکھتی ہے۔ بڑی عمر کی خواتین تربیت میں زیادہ تھکا دیتی ہیں جب کہ ان میں بہت سی خواتین ڈائیونگ ٹیسٹ میں کامیاب نہیں ہو سکیں ۔کئی خواتین سے جب یہ پوچھا گیا کہ ڈرائیونگ کی اجازت کا دن آنے پر ان کا پہلا سفر کہاں کا ہو گا اور وہ کس چیز سے سب سے زیادہ خائف ہیں، تو ان کے مختلف جوابات سامنے آئے۔سعودی خاتون شیرین باوزیر کے مطابق وہ پہلے سفر میں سْپر مارکیٹ جائیں گے جب کہ انہیں سب سے زیادہ ڈر بعض افراد کی جانب سے تیز رفتاری کا ہے۔فاطمہ آل تیسان کہتی ہیں کہ وہ پہلے سفر میں اپنے رشتے داروں سے ملنے جائیں گی جن کے بارے میں ان کو اعتماد ہے کہ وہ اس دن فاطمہ کی خوشی میں شریک ہوں گے۔ فاطمہ کے مطابق آڑے ترچھے راستے اور گاڑیوں میں اچانک تعطّل ان کے لیے خوف اور تشویش کا باعث ہے۔امانی السلیمی کا کہنا ہے کہ پہلے سفر میں وہ اپنے کام پر جائیں گی تا کہ ڈرائیور کے انتظار کے بغیر جانے اور آنے کے احساس سے لطف اندوز ہو سکیں۔ وہ ٹریفک کے رش اور حادثات سے خوف زدہ ہیں۔ادھر خلود الحارثی نے پر اعتماد لہجے میں بتایا کہ پہلے سفر میں وہ اپنے اہل خانہ سے ملنے جائیں گی اور انہیں آگاہ کریں گی کہ آخرکار اب وہ سفر کے لیے کسی کی محتاج نہیں رہیں۔ تاہم خلود کو یہ ڈر ہے کہ وہ گاڑی چلانے کے دوران سو نہ جائیں ۔ایک دوسری خاتون خلود البراہیم کا کہنا ہے کہ بہت سے ڈرائیوروں کی جانب سے گاڑی چلانے سے متعلق ہدایات پر عمل نہ کرنا ان کے لیے بہت زیادہ خوف کا باعث ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل کے ہونہار طالب العلم صلاح الدین ایوب سدی باپا نے لی پیرس سے ماسٹر ڈگری

بھٹکل انجمن انجینرنگ کالج سے ڈگری حاصل کرنے والے صلاح الدین ابن ایوب سدی باپا نے فرانس کے مشہور شہر  پیرس سے  ماسٹر آف ڈگری حاصل کرتے ہوئے  قوم و ملت کا نام روشن کردیا ہے۔ موصوف معروف قومی سماجی  خدمت گار  مرحوم ظفر علی  معلم کے  نواسے اور مسقط  سرکاری اسپتال کی ڈاکٹر ...

سعودی عربیہ کو الوداع کہہ کر وطن لوٹنے کے بعدساحلی علاقے میں ICSE اور انگریزی میڈیم اسکولوں میں بڑھ گئے بچوں کے داخلے 

سعودی عربیہ میں غیر وطنی باشندوں اور ملازمین کے تعلق سے نئے اور سخت قوانین سے پریشان ہو کر غیر رہائشی ہندوستانیوں کے وطن واپس لوٹنے کے بعد ان کے بچوں کو اسکولوں میں داخل کرانے  کا مسئلہ بھی کافی سنگین ہوگیا ہے۔ مسئلہ یہ ہے کہ ریاست کرناٹک کے کسی بھی اسکول میں داخل  کرنے کی ...

سعودی کے نئے قانون سے ہندوستانی عوام سخت پریشان؛ 15 ماہ میں 7.2 لاکھ غیر ملکی ملازمین نے سعودی عربیہ کو کیا گُڈ بائی؛ بھٹکل کے سینکڑوں لوگ بھی ملک واپس جانے پر مجبور

سعودی عرب میں ویز ے کے متعلق نئے قانون کا نفاذ ہوتے ہی بھٹکل کے ہزاروں لو گ اپنی صنعت کاری، تجارت اور ملازمت کو الوداع کہتے ہوئے وطن واپس لوٹنے پر مجبورہوگئے  ہیں۔ اترکنڑا ضلع کے اس خوب صورت شہر بھٹکل کے  قریب 5000 لوگ سعودی عربیہ میں برسر روزگار تھے جن میں سے کئی لوگ واپس بھٹکل ...

بھٹکل مسلم جماعت بحرین کا خوبصورت عید ملین پروگرام 

بھٹکل مسلم جماعت بحرین نے 28/جون 2018ء کو عید ملن کی تقریب مشہور ڈپلومیٹ ریڈیشن بلو(Diplomat  Radssion  Blu) فائیو اسٹار ہوٹل میں بنایا۔ محفل کاآغاز تقریباً رات 10بجے عزیزم محمد اسعدابن محمدالطاف مصباح کی خوبصورت قرآن سے ہوا۔ محمد عاکف ابن محمد الطاف مصباح نے قرآن کاانگریزی ترجمہ پیش ...

بھٹکل :صحافتی میدان کے بے لوث اورمخلص خادم  ساحل آن لائن کے مینجنگ ایڈیٹر  ایوارڈ کے لئے منتخب

اترکنڑا ضلع ورکنگ جرنالسٹ اسوسی ایشن کی طرف سے دئیے جانےو الےمعروف ’’جی ایس ہیگڈے  اجِّبل ‘‘ ایوارڈ کے لئے اپنی جوانی کی ابتدائی  عمر سے ہی سوشیل میڈیا کے ذریعے صحافت کی دنیا میں قدم رکھتے ہوئے ایمانداری کے ساتھ قوم وملت کی بے لوث اور مخلصانہ خدمات انجام دینے والے ساحل آن ...

سعودی عرب میں خواتین کی ڈرائیونگ پر پابندی ختم

سعودی خواتین پر لگی ڈرائیونگ  کی پابندی ختم ہوتے ہی خواتین رات کے بارہ بجتے ہی جشن مناتے ہوئے  سڑکوں پر نکل آئیں اور کار میں بلند آواز میں میوزک چلاکر  شہروں کا چکر لگاتے ہوئے اس پابندی کے خاتمے کا خیر مقدم کیا۔