سعودی عرب کی ادلب میں کیمیائی حملے کی شدید مذمت;ادلب میں کیمیائی حملہ، اسد رجیم کا سفاک چہرہ بے نقاب

Source: S.O. News Service | Published on 6th April 2017, 4:29 PM | خلیجی خبریں |

ریاض،6اپریل(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)سعودی عرب نے شام کے شمالی شہر ادلب کے نواحی علاقے خان الشیخون میں گذشتہ منگل کے روز کیے گئے کیمیائی گیس کے مہلک حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔سعودی وزارت خارجہ کے ایک اہم عہدیدار نے اپنے بیان میں کہا کہ ادلب میں مہلک کیمیائی گیس کے حملے کے نتیجے میں بے گناہ بچے اور عورتیں جاں بحق ہوئی ہیں۔ اس واقعے نے اسد رجیم کے مکروہ اور سفاک چہرے کو ایک بار پھر دنیا کے سامنے بے نقاب کردیا ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ ادلب میں کیمیائی حملہ شام میں جاری انسانی المیے کی بدترین مثال ہے۔ اس مجرمانہ جارحیت کی ذمہ داری اسد رجیم پرعاید ہوتی ہے جو گذشتہ کئی سال سے اپنے ہی عوام کا قتل عام کررہی ہے۔سعودی عرب کا کہنا ہے کہ اسد رجیم کی طرف سے شہریوں کے خلاف کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال سنگین جرم ہونے کے ساتھ ساتھ عالمی قوانین، بین الاقوامی انسانی ضابطوں، اخلاقی اصولوں اور اقوام متحدہ کی قراردادوں بالخصوص سلامتی کونسل کی قرارداد 2118 اورکیمیائی ہتھیاروں کے استعمال پر پابندی کی قرارداد 2209 کی کھلم کھلا خلاف ورزی ہے۔
 

ایک نظر اس پر بھی

ولی عہد دبئی کی جانب سے’فٹ نس چیلنج‘ میں شرکت کی دعوت

متحدہ عرب امارات کی قیادت بڑے بڑے چیلنجز کا خود مقابلہ کرنے کے ساتھ مملکت کے عوام اور امارات میں مقیم شہریوں کو نئے چیلنجز کا مقابلہ کرنے اور انہیں زندگی کے ہرشعبے میں آگے نکلنے کی صلاحیت پیدا کرنے کے لیے کوشاں ہے۔

اخوانی پروفیسروں پر سعودی یونیورسٹیوں کے دروازے بند،اخوانی نظریات سے دہشت گرد پیدا ہو رہے ہیں: ڈاکٹر سلیمان ابا الخلیل

سعودی عرب کی ایک بڑی دینی درس گاہ جامعہ الامام کے ڈائریکٹر اور سپریم علماء کونسل کے رکن ڈاکٹر سلیمان ابا الخلیل نے کہا ہے کہ یونیورسٹی نے اخوان المسلمون کے افکار سے متاثر تمام شخصیات سے معاہدے ختم کردیے ہیں۔

ولی عہد کا فلاحی تنظیموں کو 50 لاکھ ریال کا عطیہ

سعودی عرب کے ولی عہد، نائب وزیراعظم اور وزیر دفاع شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز نے اپنے ذاتی جیب سے حائل کے علاقے میں فلاحی شعبے میں سرگرم تنظیموں کو پچاس لاکھ ریال کی رقم عطیہ کی ہے۔