سعودیہ پر حملوں کے بعد ایرانی میزائل خطرات کا انسداد ناگزیر ہوچکا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 8th November 2017, 12:00 PM | خلیجی خبریں | عالمی خبریں |

تہران 7نومبر(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)متحدہ عرب امارات کے وزیر مملکت برائے خارجہ امور ڈاکٹر انور قرقاش نے کہا ہے کہ سعودی عرب کے دارالحکومت الریاض پر یمن کے حوثی باغیوں کی طرف سے بیلسٹک میزائل کی ناکام کوشش کے بعد ایران کا میزائل پروگرام زیادہ اہمیت اختیار کرگیا ہے۔ ان حملوں کے بعد یہ ثابت ہوگیا ہے کہ ایران کی طرف سے بڑھتے خطرات کو روکنا اولین چیلنج ہے۔ تمام عرب ممالک کو ایرانی خطرات کی روک تھام کے لیے ایرانی خطرے کو پہلی ترجیح قرار دینا چاہیے۔ ’ٹویٹر‘ پر پوسٹ کی گئی متعدد ٹویٹس میں ایران کی مدد سے یمن کے حوثی ہمارے لیے ایک نئی حزب اللہ بن رہے ہیں۔ ہمارے لیے حوثیوں سے نمٹنا اہم چیلنج ہے۔ حوثی باغیوں کو ایران کی طرف سے ملنے والی معاونت اور مدد انہیں راہ راست پر لانے میں رکاوٹ ہے۔ حوثی باغیوں نے یمن کے مسئلے کے سیاسی حل کی تمام کوششیں مسترد کیں جس کے بعد یہ واضح ہوا کہ ان کے ساتھ لچک دکھانے کا کوئی جواز نہیں۔

اماراتی وزیر مملکت کا کہنا تھا کہ ریاض پرحوثیوں کے بیلسٹک میزائل حملوں نے ایرانی بیلسٹک پروگرام کی روک تھام کو اولین اور فوری حل طلب مسئلہ بنا دیا ہے۔ ہم ایران کے میزائل پروگرام کے خطرات سے دوچار ہوچکے ہیں۔ عرب ممالک کو ایرانی خطرے کے انسداد کے لیے فوری اقدامات کرنا ہوں گے۔القرقاش کا کہنا تھا کہ ایرانی خطرے کے خلاف خلیجی ممالک کو یکساں اور مضبوط موقف اختیار کرنا ہوگا۔ ایران کے حوالے سے غیر جانب دار رہنے کا وقت گذر گیا۔

ایک نظر اس پر بھی

سعودیہ میں مقیم غیر قانونی تارکین وطن میں سب سے زیادہ تعداد پاکستانیوں کی نکلی

سعودی عرب کی وزارت داخلہ کے ترجمان میجر جنرل منصور الترکی نے واضح کیا ہے کہ اقامہ و محنت قوانین اور سرحدی سلامتی کے ضوابط کی خلاف ورزی کرنے والے 140 مما لک کے 758570 غیر ملکیوں نے شاہی مہلت سے فائدہ اٹھایا۔

چین علاقائی بے یقینی کے تناظر میں سعودی عرب کے ساتھ ہے:صدر ڑی جن پنگ

چین، سعودی عرب میں بڑے پیمانے پر ترقی کے عمل اور قومی سالمیت کی کوششوں کی مکمل حمایت کرتا ہے۔ علاقائی سطح پر سعودی عرب، ایران، لبنان اور یمن میں کشیدگی کے تناظر میں یہ یقین دہانی چینی صدر ڑی جن پنگ نے سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کو گذشتہ روز ٹیلی فون پر کرائی۔

امریکا: کانگریس نے عراقی ملیشیا ’النجباء‘ کو دہشت گرد قرار دیا

امریکی کانگریس نے عراق کی شیعہ ملیشیا الحشد الشعبی میں شامل ایک عسکری گروپ ’حرکۃالنجباء‘ کو دہشت گرد قرار دیتے ہوئے صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اس گروپ سے وابستہ شخصیات پر 90 دن کے اندر اندر پابندیاں عاید کرنے کے احکامات جاری کریں۔