سعودی عرب اور اسپین میں تعلیم ، دفاع اور ٹیکنالوجی میں دوطرفہ تعاون کے 6 معاہدے

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th April 2018, 12:57 PM | عالمی خبریں |

ریاض13اپریل (ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا)سعودی عرب اور اسپین کے درمیان دفاع ، فضائی ٹرانسپورٹ ، تعلیم ،ثقافت اور ٹیکنالوجی کے شعبوں میں دوطرفہ تعاون کے فروغ سے متعلق چھے سمجھوتے اور معاہدے طے پائے ہیں۔سعودی ولی عہد اور وزیر دفاع شہزادہ محمد بن سلمان کے اسپین کے دورے کے موقع پر جمعرات کو میڈرڈ میں دونوں ملکوں کے حکام نے ان معاہدوں ، سمجھوتوں اور مفاہمت کی یاد داشتوں پر دستخط کیے ہیں۔بن سلمان نے ہسپانوی وزیراعظم ماریانو رخوئے بیری اور دوسرے اعلیٰ عہدے داروں سے ملاقات کی ہے۔انھوں نے دوطرفہ تعلقات کا جائزہ لیا اور سعودی عرب اور اسپین کے درمیان مختلف شعبوں میں دوطرفہ شراکت داری اور اس کو مزید فروغ دینے کے طریقوں پر تبادلہ خیال کیا۔شہزادہ محمد نے ہسپانوی وزیر دفاع ماریہ ڈولوریس کاسپیڈال گارشیا کے ساتھ دفاعی شعبے میں تعاون کے فروغ سے متعلق ایک سمجھوتے پر دستخط کیے ہیں جس کے تحت اسپین کی کمپنی ناونطیا سعودی عرب کو جہاز تیار کرکے دے گی۔سعودی ولی عہد کی موجودگی میں دونوں ملکوں میں فضائی ٹرانسپورٹ میں تعاون سے متعلق سمجھوتا بھی طے پایا ہے۔اس سمجھوتے پر سعودی وزیر تجارت اور سرمایہ کاری ڈاکٹر ماجد القصبی اور اسپین کے ٹرانسپورٹ کے وزیر انڈیگو ڈی لا سرنا نے دستخط کیے۔ثقافت کے شعبے میں تعاون سے متعلق سمجھوتے پر سعودی عرب کے وزیر ثقافت اور اطلاعات ڈاکٹر عواد العواد اور اسپین کے وزیر تعلیم ، ثقافت اور کھیل انڈیگو مینڈیز ڈی ویگو نے دستخط کیے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

نیویارک کے مرکزی علاقے میں زیر زمین بھاپ پائپ لائن پھٹنے سے دھماکے

نیویارک شہر کے فائر ڈپارٹمنٹ نے کہا ہے کہ مین ہیٹن کی گلیوں میں زیر زمین گزرنے والا ایک ہائی پریشر بھاپ کا پائپ پھٹ گیا جس کے نتیجے میں ففتھ ایونیو کے مرکز میں واقع ایک سوراخ سے بھاپ نکل کر ہوا میں پھیلنا شروع ہو گئی۔

ترک بچوں اور خواتین کا جنسی استحصال کرنے والا خود ساختہ مذہبی رہنما گرفتار

استنبول کی ایک عدالت نے بزعم خود ایک اسلامی فرقے کے رہنما اور ٹی وی پر تبلیغ کرنے والی شخصیت عدنان اوکتار کو 115 دیگر پیروکاروں سمیت مختلف الزامات کی مزید تفتیش کے لئے پولیس کے حوالے کر دیا ہے۔ عدنان اوکتار پر جرائم پیشہ گینگ قائم کرنے، دھوکادہی اور جنسی استحصال کے الزامات ہیں۔

مقتدیٰ الصدر نے مظاہرین کی حمایت کردی ،نئی حکومت کی تشکیل مُوَخَّر کرنے کا مطالبہ

عراق کے سرکردہ شیعہ لیڈر مقتدیٰ الصدر نے ملک کے جنوبی صوبوں میں احتجاج کرنے والے مظاہرین کی حمایت کردی ہے او ر تمام متعلقہ سیاست دانوں پر زور دیا ہے کہ وہ مظاہرین کے بہتری شہری خدما ت کی فراہمی کے مطالبات پورے ہونے تک نئی حکومت کی تشکیل کے لیے مذاکرات کا سلسلہ معطل کردیں ۔