سردارپٹیل نے کہا تھا کہ مسلمان اس ملک کا اٹوٹ حصہ ہیں اور ہم اگر یہ احساس نہ دلائیں تو ہم ملک کی وراثت کے لائق نہیں

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 4th December 2018, 1:00 PM | ملکی خبریں | ریاستی خبریں |

بنگلورو،4؍دسمبر (ایس او نیوز؍ایجنسی)  سنگھ پریوار سے جڑی تنظیمیں بشمول بی جے پی نے سردار ولبھ بھائی پٹیل کو اپنا رہبراور رہنما بتایا ہے اور دنیا کا سب سے اونچا مجسمہ نصب کرکے اس کے اظہارکی کوشش کی ہے جبکہ سردار پٹیل کے آر ایس ایس سے متعلق کیا خیالات تھے اس کا انکشاف ممتاز مصنف وپن چندرا کی لکھی ایک کتاب میں ہوتا ہے ۔

انہوں نے لکھا ہے کہ 1949 میں سردار پٹیل نے ایک ہندوراشٹر بنانے کے  آر ایس ایس کے منصوبوں کو  پاگل پن قرار دیا تھا اوریہ کہاتھاکہ ہندوستان ہر مذہب کے ماننے والوں کا ہے اور یہاں ہر مسلمان کو یہ محسوس ہونا چاہئے کہ وہ اس ملک کا اٹوٹ حصہ ہیں  اوراس کا اس ملک پرپورااختیار ہے اوراگر ہم مسلمانوں کو یہ احساس دلانہیں پاتے تو پھر ہم اس ملک کی وراثت کے لائق بھی نہیں ہوں گے ۔

علاوہ ازیں انہوں نے آر ایس ایس کے خطرناک ارادوں کے پیش نظر ایک وزیر داخلہ کے ناطے اس پر پابندی بھی عائد کردی تھی ۔ پابندی کیوں عائد کی گئی اس سلسلہ میں انہوں نے ایک مکتوب بھی آر ایس ایس کے رہنما گولوالکر کو لکھا تھا ۔

انہوں نے لکھا تھاکہ ان کی تنظیم نے جو خطرناک راستہ اپنایا اس کا اختتام مہاتماگاندھی کے قتل پر ہوا تھا۔ آر ایس ایس کے نظریات سے حکومت اتفاق نہیں کرتی ۔ آر ایس ایس کے خلاف حکومت اس وقت اور سخت ہوگئی جب اس کے کارکنوں نے گاندھی جی کی موت پر خوشیاں منائی تھیں اور مٹھائی تقسیم کی تھی اس لئے ان کے پاس اس پر پابندی عائد کرنے کے سواء کوئی اورچارہ نہیں تھا۔یہ پابندی اس وقت ہٹائی گئی جب آر ایس ایس نے تحریری طورپر یہ وعدہ کیا تھاکہ وہ کسی بھی سیاسی سرگرمیوں میں حصہ نہیں لے گی فقط ایک سماجی ادارہ کی حیثیت سے کام کرے گی۔

ایک نظر اس پر بھی

سرمائی سیشن میں رافیل اور آر بی آئی کی خودمختاری کامسئلہ اٹھایاجائے گا:غلام نبی آزاد

کانگریس کے سینئر لیڈر غلام نبی آزاد نے پیر کو کہا کہ پارلیمنٹ کے سرمائی اجلاس میں رافیل طیارے سودے کی تحقیقات کے لئے مشترکہ پارلیمانی کمیٹی (جے پی سی)کے قیام کا مطالبہ اور ریزرو بینک کی خود مختاری اور جانچ ایجنسیوں کے مبینہ غلط استعمال سمیت کئی دیگر مسائل اٹھائے جائیں گے ۔

مودی حکومت غیر قانونی طریقے سے سوچھ توانائی کے پیسے کوکہیں اورلگارہی ہے: سیتا رام یچوری

کمیونسٹ پارٹی (سی پی ایم)کے سیکریٹری جنرل سیتا رام یچوری نے پیر کو الزام لگایا کہ مرکز کی بی جے پی حکومت ریاستوں کو جی ایس ٹی میں ان کے حصے کی ادائیگی کے لئے سوچھ توانائی فنڈ کی رقم غیر قانونی طور پر استعمال کر رہی ہے۔

اقلیتی تعلیمی پروگرام میں آندھرا پولیس کے ذریعہ زیادتی کی پاپولر فرنٹ نے کی مذمت

پاپولر فرنٹ آف انڈیا کے جنرل سکریٹری ایم محمد علی جناح نے آندھرا پردیش میں پاپولر فرنٹ کے ایک تقسیمِ اسکالرشپ پروگرام میں کچھ پولیس افسران کی خلل اندازی اور جھوٹے الزامات میں تنظیم کے زونل سکریٹری و دیگر ضلعی لیڈران کی من مانی گرفتاری اور انہیں زدوکوب کرنے کے طریقے کی سخت ...

توہم پرستی کے مخالفین کومذہب دشمن قراردیاجارہاہے: ملیکارجن کھرگے

پارلیمان میں کانگریسی رہنما ملیکارجن کھرگے نے کہاکہ آج سماج میں توہم پرستی کی مخالفت کرنے والوں کومذہب کے دشمن کے طورپر پیش کیاجارہاہے ،یہاں کونڈجی بسپاہال میں اکھل بھارت شرن ساہتیہ پریشد اورماچی دیواسمیتی کی جانب سے اشوک دوملور کی تین مختلف زبانوں میں تحریرکردہ کتابوں ...

22دسمبر کو کابینہ میں ضرور توسیع ہوگی: دنیش گنڈو راؤ

پردیش کانگریس کمیٹی ( کے پی سی سی ) صدر دنیش گنڈو راؤ نے بتایا کہ 22دسمبر کوریاستی کابینہ میں توسیع ضرور ہوگی۔کے پی سی سی دفتر میں نامہ نگاروں سے انہوں نے کہا کہ کابینہ میں توسیع سے متعلق وزیراعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی ،نائب وزیراعلیٰ ڈاکٹر جی پرمیشور سمیت دونوں پارٹیوں کے لیڈروں ...

بی جے پی الزام عائد کرنے سے پہلے سی اے جی رپورٹ کاجائزہ لے: سدرشن

کے پی سی سی نائب صدر قانون سازکونسل کے سابق چیرمین وی آر سدرشن نے کہاکہ بی جے پی رہنما ؤں کو سابق وزیراعلیٰ سدارامیا کے دورمیں 35ہزار کروڑ روپئے کاگھپلہ ہونے کالزام لگانے سے پہلے سی اے جی رپورٹ کاجائزہ لینا چاہئے ۔

بلگام :پروفیسر خواجہ فرازؔبادامی کو  کرناٹکا یونیورسٹی دھارواڑ سے فن عروض کے موضوع پر پی ایچ ڈی کی سند تفویض  

گوکاک  جے ایس ایس ڈگری کالج کے شعبہ اردو کے صدر پروفیسر خواجہ بندہ نواز انڈیکر فرازؔبادامی کو کرناٹکا یونیورسٹی دھارواڑ کی طرف سے  ’’اردو عروض اور ہندی پنگل کا تقابلی مطالعہ ‘‘کے موضوع پر ڈاکٹر آف فلاسفی (پی ایچ ڈی ) کی سند تفویض کی گئی ہے۔

بنگلور میں منعقدہ APCR کارگاہ میں دہشت گردی کے نام پر بے گناہوں کی گرفتاریوں پر سخت تشویش؛سابق چیف جسٹس اور معروف وُکلا نے کی، یو اے پی اے کی سخت مخالفت

اسوسی ایشن فور پروٹیکشن آف سیول رائٹس (اے پی سی آر) کرناٹک چاپٹر کے زیراہتمام ریاستی سطح کے ورکشاپ میں دہشت گردی کے نام پر بے گناہ مسلمانوں کی گرفتاریوں پر سخت تشویش کااظہار کیا گیا اور سابق چیف جسٹس آف انڈیا مسٹر وینکٹ چلیّا سمیت معروف وُکلاء نے یو اے پی اے اسپیشل قانون کی سخت ...