بنگلور مِیرر کا سنسی خیز انکشاف؛ 2013 میں ہی ملک کو ہندو راشٹر بنانے کا منصوبہ بنایا گیا تھا!

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 27th August 2018, 12:19 PM | ریاستی خبریں | ملکی خبریں | ساحلی خبریں |

بھٹکل 26؍اگست (ایس او نیوز) ٹائمز گروپ کے اخبار بنگلورو میرر کے تازہ شمارہ میں یہ سنسنی خیز انکشاف کیا گیا ہے کہ سناتن دھرم کے ماننے والوں کے ترجمان اخبار سناتن پربھات نے اپنے 9 جون 2013 کے شمارہ میں اس بات کا تفصیلی خاکہ پیش کیا تھا کہ  ملک کو کس طرح ہندو راشٹر بنایا جائے۔  سناتن پربھات کے متعلقہ  شمارہ کا انگریزی ترجمہ پیش کرتے ہوئے  شروتی گناپتی نے جو خبردی ہے وہ کافی سنسنی خیز ہے۔ 

یادرہے کہ سناتن دھرم کے اس اخبار پر ایک  بار پھر اینٹی ٹیرر ایجنسیوں کی نظر بھی ہے اور وہ اس اخبار کے خلاف جانچ بھی کررہی ہیں سناتن پربھات نامی اس ہندی اخبار نے سناتن دھرم کے قومی گائڈ اور ہندو جاگرن سمیتی کے لیڈر ڈاکٹر چرودتہ پنگالے کی ایک تقریر کا خلاصہ پیش کیا تھا کہ ڈاکٹر چرودتہ نے اس دھرم کے ماننے والوں کو یہ پیغام دیا تھا کہ ملک میں ایک مذہبی جنگ شروع کئے بغیر ملک کو ہندو راشٹر بنایا نہیں جاسکتا۔ 

انہوں نے یہ پیغام دیا تھا کہ اس دھرم کے ماننے والوں کو چاہئے کہ وہ بدلہ لینے کے جذبہ کو زندہ رکھیں وہ اس بات کو نہ بھلائیں کہ پولیس والوں نے ہندؤوں پر بہت مظالم ڈھائے ۔ انہیں چاہئے کہ وہ پہلے ایسے پولیس والوں کی ایک فہرست تیار کریں اور جب یہ تحریک شروع کی جائے تو سب سے پہلے پولیس والوں کو کمزور اور شکست دیں، جس کے  بغیر ملک کو ہندو راشٹر بنایا نہیں جاسکتا جبکہ  دوسرا نشانہ ہندوستانی افواج کو بنانا  ہوگا۔اس مقصد کو پورا کرنے کیلئے4لاکھ مذہبی جنگجوؤں کی ٹیم تیار کرنی ہوگی۔ ایک ہزار مذہبی جنگجو جنہوں نے مذہبی منتر سیکھے ہیں وہ لوگ 10 ہزار تربیت یافتہ فوجیوں پر بھاری پڑسکتے ہیں جو مذہبی منتروں سے ناواقف ہیں ۔ ہم مذہبی لوگ جو سادھنا کرتے ہیں اس کے نتیجہ میں ہمارا بھگوان ہماری حفاظت کریگا۔ ملک میں 8 لاکھ پولیس جوان اور 11 لاکھ فوجی ہیں اور 11 لاکھ نیم فوجی جوان ہیں۔  ان کے مقابلے میں ہمارے پاس اب تک جو تربیت یافتہ 4 لاکھ مذہبی جنگجو ہیں جنہوں نے سادھنا کی ہے یہ لوگ ان پر بھاری پڑسکتے ہیں۔ 

اس تقریر میں چرودتہ نے مزید کہا تھا کہ اقلیتی طبقات اس کام میں ہمارے لئے رکاوٹ بن سکتے ہیں اس لئے  انہیں کمزرو کرنے  کیلئے بھی اقدامات کرنے ضروری ہیں۔سناتن پربھات اخبار نے اس کام کے سلسلے میں اس دھرم کے ماننے والوں کیلئے1999 تا 2023 تک ایک ٹائم ٹیبل بھی پیش کیا تھا۔ اس میں یہ کہا گیا تھا کہ اصلی جنگ 2016 تا 2018 کے درمیان چلائی جائیگی ۔ اس جنگ کو تیسری جنگ عظیم قرار دیا گیا ہے اور کہا گیا ہے کہ اس جنگ میں بڑی تعداد میں لوگ مارے جائینگے اور قدرتی آفات سماوات بھی رونما ہونے سے لوگ مارے جائینگے ۔ 

انگریزی اخبار بنگلور مِرر نے لکھا ہے کہ سناتن پربھات کے ایڈیٹر نے اپنی شائع کردہ اس خبر پر کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے۔ اس خبر کے تعلق سے پنگالے نے دعویٰ کیا ہے کہ اس نے ایسی کوئی تقریر کبھی نہیں کی تھی۔ وہ سناتن پربھات سے اس تعلق سے وضاحت طلب کریگی کہ یہ خبر کیسے شائع ہوئی ہے۔ یادرہے کہ گوری لنکیش کے قتل کی جانچ کے دوران گذشتہ دنوں مہاراشٹرا اے ٹی ایس نے سناتن دھرم سے تعلق رکھنے والے وائسور بھوراوت ، شردکلاسکر اورسدھنوا گوندالکر کو 10 اگست کو گرفتار کیا تھا اور راوت کے مکان سے پستول اور کارتوس بھی ضبط کئے تھے ۔ مہاراشٹرا اے ٹی ایس  نے شبہ ظاہر کیا تھا کہ اس ٹیم نے مہاراشٹرا اور پڑوسی ریاستوں میں دہشت پھیلانے کا منصوبہ بنایا تھا اور یہ شبہ بھی ظاہر کیا تھا کہ یہ لوگ ترقی پسند ادیپ دھابوالکھر، سی پی آئی لیڈر ، گووند پنسارے ، ادیپ کلبرگی اور صحافی گوری لنکیش کے قتل معاملے میں بھی ملوث ہیں۔ 

ایک نظر اس پر بھی

سابق وزیراعظم دیوے گوڈا کا بھٹکل دورہ؛ کہا، جمہوریت خطرے میں ہے، اُسے بچانے کے لئے ہر شہری کو آگے آنا ہوگا

اس بار کے انتخابات سب سے زیادہ اہم اس لئے  ہے کہ مودی کے زیر اقتدار ملک کی جمہوریت کو خطرہ لاحق ہوگیا ہے۔جب سے مودی ملک کے وزیراعظم  بنے ہیں ملک کے سرکاری جمہوری اداروں میں  دخل اندازی سے  عدالت تک محفوظ نہیں ہے، ریزروبینک آف انڈیا  ہو ، انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ ہو، سی بی آئی ...

بنگلور سے شموگہ اور بھدراوتی لے جانے کے دوران دوکروڑ کی رقم ضبط؛ گاڑی کے ایک ٹائر میں چھپا کر رکھی گئی تھی رقم

الیکشن کا ضابطہ اخلاق لاگو ہونے کے بعد انتخابی قوانین کی خلاف ورزیوں پر نظر رکھنے والے دستے نے کرناٹکا میں اب تک غیر محسوب رقم اور دیگر اشیاء جو ضبط کی ہے اس کی مالیت کا اندزاہ 83کروڑ روپے لگایا گیا ہے۔

الیکٹرانک ووٹنگ مشینیں سخت نگرانی میں اسٹرانگ رومس منتقل

جنوبی کرناٹک کے 14 پارلیمانی حلقوں میں کل پہلے مرحلے کی پولنگ کے دوران ڈالے گئے ووٹ الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں میں قید ہیں ، اور ان الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں کو مرکزی دستوں کی سیکورٹی کے تحت اسٹارنگ رومس میں قید کردیا گیا ہے۔

ملک میں بی جے پی کی لہر اور جال بالکل نہیں ہے مودی انتظامیہ کارپورٹ کارڈ فیل ہوگیا : دنیش گنڈو راؤ

ملک کے کسی بھی علاقہ میں وزیر اعظم نریندر مودی کی کوئی لہر بالکل نہیں ہے ۔مودی لہر کا جھانسہ دے کر عوام کو جال میں پھانسنے کی کوشش بی جے پی کر رہی ہے ۔یہ باتیں کے پی سی سی کے صدر دنیش گنڈو راؤ نے کہی ہیں ۔آ

میں عہدۂ وزیر اعلیٰ کا دعویدار ضرور ہوں ، لیکن اب نہیں : سدرامیا

 سابق وزیر اعلیٰ اور ریاست میں حکمران اتحاد کی رابطہ کمیٹی کے چیرمین سدرامیا نے دوبارہ وزیر اعلیٰ بننے کے متعلق ا پنے بیان کا دفاع کیا اور کہا ہے کہ وہ سرگرم سیاست کا حصہ ہیں کوئی سنیاسی نہیں۔ سیاسی امنگوں کا اظہار کرنے سے انہیں کوئی روک نہیں سکتا۔

یوگی حکومت کے کابینہ وزیر اوم پرکاش راج بھر نے اکھلیش کو بتایا عظیم لیڈر

بی جے پی سے بغاوت کرکے سہیل دیو بھارتیہ سماج پارٹی کے قومی صدر اور یوگی حکومت میں کابینہ وزیر اوم پرکاش راج بھر نے اتوار کو سلیم پور سے اپنی انتخابی مہم کا آغاز کر دیا ہے۔اس سے پہلے بلیا میں صحافیوں سے مخاطب ہوئے راج بھر نے طنز کستے ہوئے کہا کہ بی جے پی یوپی میں 80 سیٹیں جیتنے جا ...

کانگریس امیدوار ملند دیوڑا کے خلاف ایف آئی آر درج، مذہب کی بنیاد پر ووٹ مانگنے کا الزام،بی جے پی لیڈروں کے بیانات پرتماشائی

بی جے پی لیڈران مسلسل متنازعہ بیانات دے رہے ہیں لیکن الیکشن کمیشن سادھوی،امت شاہ جیسے لوگوں پرکارروائی تونہیں کررہاہے وہ تماشائی بناہواہے لیکن اپوزیشن کے لیڈران پرفوراََنوٹس لے لیاجارہاہے۔

کرکرے کے بعد بابری مسجد پر بیان: پرگیہ ٹھاکر کو الیکشن کمیشن کا ایک اور نوٹس جاری

دہشت گردانہ حملے میں شہید ہونے والے مہاراشٹر پولس کے سینئر افسر ہیمنت کرکرے کے بارے میں دیئے گئے بیان کے بعد بھوپال پارلیمانی سیٹ سے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی امیدوار پرگیہ سنگھ ٹھاکر اب ایودھیا کے بابری مسجد-رام مندر مسئلے پر دیئے گئے بیان کو لے کر زیر بحث آ گئی ہے۔

سابق وزیراعظم دیوے گوڈا کا بھٹکل دورہ؛ کہا، جمہوریت خطرے میں ہے، اُسے بچانے کے لئے ہر شہری کو آگے آنا ہوگا

اس بار کے انتخابات سب سے زیادہ اہم اس لئے  ہے کہ مودی کے زیر اقتدار ملک کی جمہوریت کو خطرہ لاحق ہوگیا ہے۔جب سے مودی ملک کے وزیراعظم  بنے ہیں ملک کے سرکاری جمہوری اداروں میں  دخل اندازی سے  عدالت تک محفوظ نہیں ہے، ریزروبینک آف انڈیا  ہو ، انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ ہو، سی بی آئی ...

ہلیال میں جے ڈی ایس لیڈر کے گھر پر انتخابی افسران کا چھاپہ ۔تلاشی کے بعد خالی ہاتھ واپس لوٹے افسران؛ کیا بی جےپی کو شکست کا خوف ہے؟

پارلیمانی انتخابات کے پیش نظر چیک پوسٹس پر تلاشی مہم کے علاوہ ہلیال شہر کے گوداموں، شراب کی دکانوں، موٹر گاڑیوں کی بھی مسلسل تلاشیاں لے رہے ہیں۔

لوک سبھا انتخابات؛ اُترکنڑا میں کیا آنند، آننت کو پچھاڑ پائیں گے ؟ نامدھاری، اقلیت، مراٹھا اور پچھڑی ذات کے ووٹ نہایت فیصلہ کن

اُترکنڑا میں لوک سبھا انتخابات  کے دن جیسے جیسے قریب آتے جارہے ہیں   نامدھاری، مراٹھا، پچھڑی ذات  اور اقلیت ایک دوسرے کے قریب تر آنے کے آثار نظر آرہے ہیں،  اگر ایسا ہوا تو  اس بار کے انتخابات  نہایت فیصلہ کن ثابت ہوسکتےہیں بشرطیکہ اقلیتی ووٹرس  پورے جوش و خروش کے ساتھ  ...

بھٹکل میں بی کے ہری پرساد کا بی جے پی اور مودی پر راست حملہ، کہا؛ پسماندہ طبقات کومزید کمزور کرنے کی سازش رچی جارہی ہے

بی جے پی بھلے ہی اپنے آپ کو اقلیت مخالف پارٹی کے طور پر پیش کرتی ہو، مگر  دیکھا جائے تو یہ پارٹی حقیقتاً پسماندہ طبقات، دلت اور ادیواسیوں کو  مزید  کمزور کرنے کی سازش میں لگی ہوئی ہے اور صرف ایک طبقہ کو برسراقتدار پر لانے میں کوشاں ہے۔ یہ بات  آل انڈیا کانگریس کمیٹی (اے آئی ...