بھٹکل میں ایندھن اور ماحولیاتی تحفظ بیداری پیدا کرنے سکشم سائیکلو تھیا ن سائیکل ریلی

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 10th February 2019, 9:09 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل:10؍فروری (ایس او نیوز)رفعت ایجنسی ، رنجن انڈین اور گاڈوین سائیکل ٹریڈنگ کمپنی بھٹکل کے اشتراک سے ایندھن کے  استعمال اور ماحولیاتی تحفظ کے متعلق عوام میں بیداری پید اکرنے کے مقصد سے 10فروری کوبعنوان’ سکشم سائیکلوتھیان‘ سائیکل  ریلی کامیاب کے ساتھ انعقاد کی گئی ۔

شہر کے پولس پریڈ میدان میں سائیکل جاتھا کا افتتاح کرنےکے بعد خطاب کرتے ہوئے رنجن انڈین کی مالکن شیوانی شانتا رام نے کہاکہ ایندھن اور ماحولیاتی تحفظ،پٹرولیم کے پروڈکٹس کا صحیح استعمال کئے جانے کا مقصد لے کر یہ جاتھا منعقد کیاگیا ہے۔ بھٹکل پولس سرکل انسپکٹر کے ایل گنیش نے سائیکل جاتھا تو ہری جھنڈی دکھا کر روانہ کیا۔ بھٹکل شہری پولس تھانہ ایس آئی کوسومادھار موجود تھے۔

سائیکل جاتھا پولس پریڈ میدان سے نکل کر شمس الدین سرکل، حنیف آباد روڈ، نوائط کالونی ، جالی روڈ سے ہوتے ہوئے پولس پریڈ میدان پہنچ کر اختتام ہوا۔ جاتھا میں 300سے زائد طلبا و طالبات سمیت عوام نے شرکت کی ۔ریلی کے  بعد لکی ڈرا کے ذریعے بیلکے ہائی اسکول کے نویں جماعت میں زیر تعلیم ششانک نائک کو سائیکل انعام میں ملی۔ رفعت ایجنسی کے نابط دامداموجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل  رکن اسمبلی نے ریلوے اسٹیشن سڑک تعمیر کی سنگ بنیاد رکھی

تعلقہ کے مٹھلی گرام پنچایت کوبھٹکل  ریلوے اسٹیشن  سے جوڑنے والی سڑک کی تعمیر کے لئے رکن اسمبلی سنیل نائک نے پوجا پاٹ کے ساتھ سنگ بنیاد رکھا۔ اس موقع پر کرشنانائک، شیوانی شانتارام، چندرہاس، آنند نائک وغیرہ موجود تھے۔

بھٹکل میونسپالٹی کی عام میٹنگ میں نئی مچھلی مارکیٹ کے لئے دوبارہ نیلامی کا فیصلہ : کئی دیگر مسائل پر بھی بحث

بھٹکل میونسپالٹی میں منعقدہ عام میٹنگ میں پرانی اور نئی مچھلی مارکیٹ  کے مچھلی بیوپاریوں کو لےکر کافی بحث ہوئی ، بعد میں  اس بات کا فیصلہ لیا  گیا کہ اگلے دو دن کے اندرنئی مچھلی مارکٹ   کی نیلامی کا اعلامیہ شائع کرتے ہوئے  ایک ہفتہ کے اندر  بولی کی  کارروائی انجام دی جائے۔

منگلورو: زیر سماعت قیدیوں نے ڈسٹرکٹ جیل میں سیکیوریٹی اسٹاف پر کیا حملہ

ڈسٹرکٹ جیل میں زیر سماعت قیدیوں کی طرف سے دو سیکیوریٹی اسٹاف پر حملہ کیے جانے کا حیرت انگیز واقعہ پیش آیا ہے۔ موصولہ رپورٹ کے مطابق قتل کے الزام میں قید مشتاق اور اس کے دیگر ساتھیوں نے مل کر سیکیوریٹی اسٹاف پر حملہ کیا ہے۔