ماہ صفر مظفر اور بد شگونی ......... بقلم: محمد حارث اکرمی ندوی

Source: S.O. News Service | By Staff Correspondent | Published on 14th October 2018, 11:09 AM | اسلام | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

فَإِذَا جَاءَتْهُمُ الْحَسَنَةُ قَالُوا لَنَا هَٰذِهِ ۖ وَإِن تُصِبْهُمْ سَيِّئَةٌ يَطَّيَّرُوا بِمُوسَىٰ وَمَن مَّعَهُ ۗ أَلَا إِنَّمَا طَائِرُهُمْ عِندَ اللَّهِ وَلَٰكِنَّ أَكْثَرَهُمْ لَا يَعْلَمُونَ ( الأعراف 131)
بس جب ان کو خوشحالی پیش آتی تھی تو کہتے تھے یہ تو ہی ہمارے لیے اور جب بدحالی کا سامنا ہوتاہے تو موسی اور اسکے ساتھیوں کی نہوست بتاتے ہیں۔ سورہ اعراف ایت 131

يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُوا اجْتَنِبُوا كَثِيرًا مِّنَ الظَّنِّ إِنَّ بَعْضَ الظَّنِّ إِثْمٌ ۖ وَلَا تَجَسَّسُوا وَلَا يَغْتَب بَّعْضُكُم بَعْضًا ۚ أَيُحِبُّ أَحَدُكُمْ أَن يَأْكُلَ لَحْمَ أَخِيهِ مَيْتًا فَكَرِهْتُمُوهُ ۚ وَاتَّقُوا اللَّهَ ۚ إِنَّ اللَّهَ تَوَّابٌ رَّحِيمٌ ( الحجرات 12)
اے ایمان والو! اکثر گمانوں سے بچو، بیشک بعض گمان گناہ ہوتے ہیں اور نہ ٹوہ میں رہو اور نہ ایک دوسرے کے پیٹھ پیچھے برائی کرو، تم میں سے کون یہ پسند کرےگا اپنے مردہ بھائی کا گوشت کھائے اس سے تم گھن کروگے، اور اللہ سے ڈرتے رہو ، بلاشبہ اللہ توبہ قبول فرماتا ہے۔

صفر المظفر اسلامی سال کا دوسرا مہینہ ہے، اسلامی مہینے میں اسے انفرادیت حاصل ہے، اس کے متعلق خرافات کی ہمارے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے نفی فرمائی ہے، گمان کی بنیاد وہ نحوست تھی جو فتنوں، وباؤوں ، امراض ، مصیبتوں اور حوادث کی شکل میں کبھی اس مہینے میں پیش آئی تھی۔ اس بنیاد پر یہ عقیدہ قائم کیا گیا تھا کہ صفر کا مہینہ نحوست اور الم کا مہینہ ہے۔ زمانہ جاھلیت میں لوگ اس مہینہ میں خوشی کی تقریبات یعنی شادی بیاہ، ختنہ وغیرہ کی تقریبات قائم کرنا منحوس سمجھتے تھے۔ اور قابل افسوس بات یہ ہے کہ آج بھی اس ترقی یافتہ دور میں بھی بعض علاقوں کے بعض لوگوں میں یہ عقیدہ نسل در نسل منتقل ہو رہاہے، حالانکہ سرکار دوعالم صلی اللہ علیہ وسلم نے بہت ہی صاف اور واضح الفاظ میں اس مہینے اور اسکے علاوہ پائے جانے والی توہمات اور باطل نظریات کی تردید فرمائی ہے، اور اعلی الاعلان ارشاد فرمایا کہ ایک شخص کی بیماری دوسرے شخص کو لگنے کا عقیدہ، ماہ صفر کی نحوست کا عقیدہ، پرندے کی بدشگونی کا عقیدہ یہ سب بے حقیقت ہےاور ارشاد فرمایا کہ ( لا صفر ولا عدوی ولا اھامه) چھووت چھات اور صفر کی کچھ حقیقت نہیں ہے۔

مذکورہ حدیث سے ثابت ہوتا ہے کہ اسلام اس قسم کی باطل نظریات کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم ان نظریات کو اپنے پیروں تلے روند چکے ہیں، جاہلیت نے سفر کو نامرادی اور ناکامی کا پیش خیمہ بتایا تھا، اسلام نے صفر المظفر کو مسعود گردانا ہے اس مہینے کے نام کے ساتھ ہی مظفر کی صفت جوڑ دی گئی ہے، جو اس بات کی طرف اشارہ ہے کہ یہ ایام کامیابی اور سعادت کے حصول کے ہیں ‌۔

صفر کے متعلق یہ بھی عقیدہ پایا جاتا ہے کہ وہ ایک قسم کا سانپ ہے، جو انسان کے معدہ میں پرورش پاتا ہے، اور بھوک کی شدت میں جو تکلیف محسوس ہوتی ہے یہ وہی سانپ ہے جو ڈستا ہے ، ان سب چیزوں کی نفی حضرت نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے ( لاصفر) کے ذریعے ایک چھوٹے سے جملہ سے فرمائی۔ بعض گمراہ لوگوں نے ماہ صفر کے متعلق ایک من گھڑت ایک من گھڑت روایت بیان کی ہے اور اسے اپ صلی اللہ علیہ وسلم کی طرف منسوب کیا ہے ( من بشرنی بخروج صفر بشرته با الجنه) جو مجھے صفر کا مہینہ ختم ہونے کی خوشخبری دے اسے میں جنت کی بشارت دیتا ہوں ( نعوذباللہ). نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی طرف اسکی نسبت کرنا جائز نہیں ہے۔ علماء حدیث نے اس حدیث کو موضوع قرار دیا ہے۔ ہمارے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی ان عقیدوں کی اتنی مخالفت کے باوجود آج بھی بعض مسلمانوں میں جاھلیت کی بہت سی رسومات پائی جاتی ہیں، اس کا لحاظ اس درجہ رکھا جاتا ہے کہ جاھلیت بھی شرما جائے۔ عام طور پر یہ سب خرافات مردوں کے مقابلوں میں عورتوں میں زیادہ پائی جاتی ہے، اور انکے دماغ میں ایسے حاوی ہے کہ ہر حال میں لازمی سمجھی جاتی ہے، اللہ ہم سبھوں کو ایسے عقائد اور خرافات سے حفاظت فرمائے۔  امین

ایک نظر اس پر بھی

ملک کے موجودہ حالات اور دینی سرحدوں کی حفاظت ....... بقلم : محمد حارث اکرمی ندوی

   ملک کے موجودہ حالات ملت اسلامیہ ھندیہ کےلیے کچھ نئے حالات نہیں ہیں بلکہ اس سے بھی زیادہ صبر آزما حالات اس ملک اور خاص کر ملت اسلامیہ ھندیہ پر آچکے ہیں . افسوس اس بات پر ہے اتنے سنگین حالات کے باوجود ہم کچھ سبق حاصل نہیں کر رہے ہیں یہ سوچنے کی بات ہے. آج ہمارے سامنے اسلام کی بقا ...

اسلام میں عورت کے حقوق ...............آز: گل افشاں تحسین

صدیوں سے انسانی سماج اور معاشرہ میں عورت کے مقام ومرتبہ کو لیکر گفتگو ہوتی آئی ہے ان کے حقوق کے نام پر بحثیں ہوتی آئی ہیں لیکن گذشتہ چند دہائیوں سے عورت کے حقوق کے نام پرمختلف تحریکیں اور تنظیمیں وجود میں آئی ہیں اور صنف نازک کے مقام ومرتبہ کی بحثوں نے سنجیدہ رخ اختیار کیا ...

انقلابی سیرت سے ہم کیوں محروم ہیں؟ .................آز: مولانا سید احمد ومیض ندوی

سیرتِ رسول آج کے مسلمانوں کے پاس بھی پوری طرح محفوظ ہے، لیکن ان کی زندگیوں میں کسی طرح کے انقلابی اثرات نظر نہیں آتے، آخر وجہ کیا ہے؟ موجودہ دور کے ہم مسلمان صرف سیرت کے سننے اور جاننے پر اکتفاء کرتے ہیں، سیرتِ رسول سے ہمارا تعلق ظاہری اور بیرنی نوعیت کا ہے۔حالانکہ س سیرت کی ...

حضرت علی بن ابی طالب کرّم اللہ وجہہ : ایک سنی نقطۂ نظر ..... تحریر: ڈاکٹر ظفرالاسلام خان

حضرت علی بن ابی طالب کرم اللہ وجہہ الشریف جامع کمالات تھے۔وہ نوجوانوں اور مردوں میں سب سے پہلے ایمان لانے والے تھے ۔ حضرت انس بن مالکؓ کی روایت کے مطابق حضور پاکؐ کی بعثت پیر کے روز ہوئی اور حضرت علی صرف ایک دن بعد یعنی منگل کو ایمان لائے ۔اس وقت آپ کی عمر مشکل سے آٹھ یا دس سال ...

سدنہ بیت اللہ اور کلید کعبہ کا قصہ!

سدنہ بیت اللہ وہ قدیم پیشہ اور مقدس فریضہ ہے جس میں خانہ کعبہ کی دیکھ بحال، اسے کھولنے اور بند کرنے، اللہ کے گھر کو غسل دینے، اس کا غلاف تیار کرنے اور حسب ضرورت غلاف کعبہ کی مرمت کرنے جیسے امور انجام دیے جاتے ہیں۔سدانہ کعبہ کا شرف صدیوں سے الشیبی خاندان کے پاس چلا آرہا ہے۔

حج 2019 : بحری جہاز سے سفر ممکن : مختار عباس نقوی

مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور او رحج مختار عباس نقوی نے حج 2019 کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ مذکورہ سیزن میں بحری جہاز سے بھی سفر ممکن ہوگا ۔انہوں نے اس موقع پر حج ہاؤس کے صدر دفتر کی فلک بوس عمارت پر قومی پرچم لہرایا جو کہ زمین سے 350فٹ کی بلندی پر ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حج کمیٹی جی ایس ٹی ...

اجودھیا تنازع : عدالت کے باہر اگر کوئی قانون بنے گا تو اس کو مسلمان نہیں کرے گا تسلیم : اقبال انصاری

ناگپور میں آر ایس ایس سربراہ موہن بھاگوت کے جمعرات کو رام مندر کے معاملہ پر دئے گئے بیان پر مختلف فریقوں کا رد عمل سامنے آرہا ہے ۔ جہاں آل انڈیا مسلم پرسنل بورڈ کے رکن مولانا خالد رشید فرنگی محلی نے موہن بھاگوت کے بیان کو سیاسی قرار دیا ہے ،

بیلتھنگڈی: گاڑی میں غیر قانونی دھماکہ خیز مادہ لے جانے والے سے رشوت لینے کے الزام میں 2پولیس اہلکار معطل

پونجلا کٹّے پولیس اسٹیشن سے وابستہ ایک اے ایس آئی لکشمن اور ہیڈکانسٹیبل ابراہیم کو اس الزام کے تحت معطل کردیا گیا ہے کہ انہوں نے غیر قانونی طور پر موٹر بائک میں دھماکہ خیز اشیاء لے جانے والے چنّا سوامی سے 24ستمبر کو رشوت لی تھی۔

اُترکنڑا میں زائد پرائمری ٹیچروں کا تبادلہ؛ اردو اسکولوں کے ساتھ ناانصافی۔نارتھ کینرا مسلم یونائیٹد فورم کو تشویش

محکمہ تعلیمات کی طرف سے پرائمری اسکولوں میں جہاں طلبہ کی تعداد مقررہ معیارسے کم ہے وہاں سے زائد ٹیچروں کا تبادلہ کرنے کی جو پالیسی اپنائی ہے اس پر اپنا ردعمل ظاہر کرتے ہوئے نارتھ کینرا مسلم یونائٹیڈ فورم کے جنرل سکریٹری جناب محسن قاضی نے کہا ہے اس سے اردو اسکولوں کے ساتھ بڑی ...