معمولی جرائم میں قید مسلم قیدیوں کی رہائی کی کوششیں تیز،آر ٹی آئی کے ذریعہ جمعیۃ علماء نے مختلف جیلوں سے تفصیلات طلب کیں

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th June 2018, 11:54 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

ممبئی12جون(ایس او نیوزپریس ریلیز)ایک سروے کے مطابق ہندوستان کی مشہور جیلوں میں مسلمانوں کا تناسب ان کی آبادی کے تناسب سے بھی زیادہ ہے اور ا س جانب خصوصی توجہ دینے کی ضرروت ہے ، جیلوں میں مقید مسلمانوں کی ایک بڑی تعداد مبینہ معمولی جرائم انجام دینے کے الزامات کے تحت سزائیں مکمل ہوجانے کے باجود بھی قید ہیں کیونکہ ان کی رہائی کے دستاویزات تیار کرانے کے لیئے ان کے پاس وکلا کو فیس ادا کرنے کے پیسے نہیں ہیں ، اسی طرح قیدیوں کی ایک بڑی تعداد ایسی بھی ہے جنہیں ضمانت پر رہائی مل گئی ہے لیکن ضمانت کی رقم ادا نہ کرنے کی صورت میں انہیں قید و بند کی صعوبتیں برداشت کرنا پڑ رہی ہے ۔ان کے علاہ ایسے بھی مسلم نوجوان جیل کی سلاخوں کے پیچھے مقید ہیں جنہوں نے سزائیں مکمل کرلی ہیں لیکن جرمانے کی رقم ادا نہ کرپانے کے بنا پر وہ ابھی تک مقید ہیں۔

ملک میں دہشت گردی کے الزامات کے تحت مسلم نوجوانوں کے مقدمات کی پیروی کرنے والی تنظیم جمعیۃ علماء مہاراشٹر (ارشد مدنی) نے اس جانب پہل شروع کردی ہے اور پہلے مرحلہ میں مہاراشٹر کی مختلف جیلوں سے بذریعہ حق معلومات قانون ایسے قیدیوں کی تفصیلات طلب کی گئیں ہیں جو معمولی جرائم کرنے کی پاداش میں جیل کی صعوبتیں برداشت کررہے ہیں ۔

اس سلسلہ میں جمعیۃ علماء مہاراشٹر کے وکیل شاہد ندیم نے بتایا کہ سیکریٹری قانونی امداد کمیٹی گلزاراعظمی کی ہدایت پر آج آرتھر روڈ جیل، تلوجہ جیل، بائیکلہ جیل، تھانے جیل اور ناشک سینٹرل جیل کو آر ٹی آئی کے تحت عرضداشتیں روانہ کی گئیں ہیں ۔

ایڈوکیٹ شاہد ندیم نے بتایا کہ آر ٹی آئی کے ذریعہ جیل حکام سے ایسے قیدیوں کی فہرست طلب کی گئیں ہیں جو معمولی جرائم کرنے کی پاداش میں جیل کی سلاخوں کے پیچھے مقید ہیں اور اگر ان کی ضمانت یا جرمانے کی رقم بھر دی جائے تو ان کی جیل سے رہائی ممکن ہے ۔

ایڈوکیٹ شاہد نے بتایا کہ فی الحال ان کا فوکس ایسے قیدیوں پر ہے جو عادی مجرم نہیں ہیں بلکہ کسی وجہ سے پہلا جرم کرنے کی صورت میں وہ جیل میں پہنچا دیئے گئے اور اب وہ کسمپرسی کی حالت میں جیل سے رہائی کی امید لگائے بیٹھے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ حال ہی میں تلوجہ جیل سے انہیں ایسے دس قیدیوں کی فہرست دستیاب ہوئی تھی جو ضمانت کی رقم نہیں بھر پانے کی صورت میں جیل کی چہار دیواری میں مقید تھے ، قیدیوں کی تفصیلات موصول ہونے کے بعد جمعیۃ علماء نے ان کی ضمانت کی رقم بھرنے کا بندوبست کیا اور اس تعلق سے کاغذی کارروائی شروع کردی گئی، قیدیو ں میں دو غیر مسلم قیدی بھی ہیں جن کی ضمانت کی رقم بھرنے کا بیڑا جمعیۃ علماء نے اٹھایا ہے ۔

ایڈوکیٹ شاہد ندیم نے بتایا کہ حالانکہ ان کی اولیت دہشت گردی کے جھوٹے الزامات کے تحت گرفتار ملزمین کی قانونی امداد ہی رہے گی لیکن وقتاً فوقتاً مخیر حضرات کے تعاون سے جمعیۃ علماء نے اس کار خیر کو بھی انجام دینے کا فیصلہ کیا ہے جسکی شروعات جمعیۃ علماء نئی ممبئی کے ذریعہ ایک صاحب خیر کے تعاون سے تلوجہ جیل سے کی جارہی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

گذشتہ دس سالوں سے جیل میں مقید مسلم نوجوان کو قانونی کی تعلیم جاری رکھنے کی اجازت، جمعیۃ علماء نے قانونی امداد کے ساتھ ساتھ تعلیمی وظیفہ بھی دیا، پہلے مرحلہ کا نتیجہ اطمنان بخش: گلزار اعظمی

ممبئی کی خصوصی مکوکا(این آئی اے) عدالت نے جھوٹے دہشت گردانہ معاملے کا سامنا کررہے ایک مسلم نوجوان کو قانون کی تعلیم جاری رکھنے اور اسے امتحان میں شرکت کرنے کی مشروط اجازت دی۔13-7 ممبئی سلسلہ وار بم دھماکہ معاملے کا سامنا کررہے ملزم ندیم اختر کو ایل ایل بی پہلے سال کے دوسرے مرحلہ ...

مرکز نے سپریم کورٹ سے کہا، رافیل معاہدہ میں پی ایم اوکادخل نہیں، تمام عرضیاں ہوں مسترد

لوک سبھا انتخابات میں اپوزیشن نے رافیل لڑاکا طیارے معاہدے میں بے ضابطگیوں کا الزام لگاتے ہوئے اسے سب سے بڑا مسئلہ بنایا۔کانگریس صدر راہل گاندھی نے اس معاہدے کے لئے براہ راست طور پر وزیر اعظم نریندر مودی کو ذمہ دار بتایا۔

جب تک کجریوال ہیں، دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ دینے کی نہیں سوچ سکتے:ہرش وردھن

دہلی کی چاندنی چوک سیٹ سے تقریباََ228000 ووٹوں سے جیت کر دوبارہ ایم پی بنے مرکزی وزیر ڈاکٹر ہرش وردھن نے بات کی۔دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ دینے کے معاملے پر انہوں نے کہا کہ جب تک اروند کجریوال وزیر اعلی ہیں، اس وقت تک اس کے بارے میں سوچا بھی نہیں جا سکتا۔

اسمرتی ایرانی کے قریبی سابق پردھان کا گولی مار کر قتل ، علاقہ میں کشیدگی

اترپردیش کے امیٹھی میں ہفتہ دیر رات اسمرتی ایرانی کے قریبی سابق پردھان کا گولی مار کر قتل کردیا گیا ۔ اطلاعات کے مطابق جامو تھانہ حلقہ کے برولیا گاوں کے سابق پردھان سریندر سنگھ کو نامعلوم بدمعاشوں نے گولی مار کر موت کے گھاٹ اتار دیا ۔ بدمعاشوں نے واقعہ کو اس وقت انجام دیا جب ...

مسلمانوں کے خلاف اشتعال انگیز بیانات دینے والوں کی بھاری اکثریت کے ساتھ جیت

مسلمانوں کے خلاف ہمیشہ اشتعال انگیز بیانات دینے والوں کو اس مرتبہ لوک سبھا انتخابات میں بھاری اکثریت کے ساتھ کامیابی حاصل ہوئی ہے۔ اترکنڑا لوک سبھا حلقے کے بی جے پی اُمیدوار اننت کمار ہیگڈے جنہوں نے کہا تھا کہ جب تک اسلام رہے گا دہشت گردی رہے گی،اسی طرح انہوں نے  دستور کی ...