مودی اپنی تنخواہ سے اٹھاتے ہیں اپنے کپڑوں کے اخراجات، آرٹی آئی میں ہواخلاصہ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 13th January 2018, 12:50 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی، 12جنوری(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)نریندر مودی کے وزیر اعظم بنتے ہی حزب اختلاف کی جماعتوں نے اکثر ان کے کپڑے اور سوٹ کولے کر نشانہ بنایا ہے لیکن اب ان کے کپڑے پر خرچ کی جانے والی رقم کولے کرایک بڑی بات سامنے آئی ہے۔ایک آر ٹی آئی کے جواب میں پی ایم او دفتر کی جانب سے کہاگیا ہے کہ وزیراعظم کے ذاتی کپڑوں پرہونے والاخرچ مودی اپنی تنخواہ سے اٹھاتے ہیں۔اس کے لئے حکومت کی جانب سے کوئی رقم خرچ نہیں کی جاتی ہے۔ٹائم آف انڈیا کی خبر کے مطابق آر ٹی آئی کارکن روہت سبروال نے آرٹی آئی ایکٹ کے تحت یہ معلومات مانگی تھی،وہ ایک طویل عرصے سے آرٹی آئی ڈالتے رہے ہیں۔رپورٹ کے مطابق اس سے قبل انہوں نے اٹل بہاری واجپئی اور منموہن سنگھ کے ذاتی اخراجات سے متعلق بھی آر ٹی آئی ڈالا تھا۔روہت سببروال نے اٹل بہاری واجپئی کے دور( 19مارچ 1998سے 22مئی 2004کے درمیان)ہر سال واجپئی کے لباس پر ہونے والے خرچ کی تفصیلات بھی طلب کی تھی۔اسی طرح منموہن سنگھ کے دور اقتدار( 22مئی 2004سے 26مئی 2014)میں سنگھ کے لباس پر ہوئے خرچ کا بھی حساب حق اطلاعات کے ذریعے مانگا تھا۔روہت سببروال نے نریندر مودی کے عہدہ سنبھالنے کے بعدسے ہر سال خرچ کئے جانے والے اخراجات کی تفصیلات بھی مانگی ہے۔جواب میں پی ایم اوو کے دفتر نے بتایا کہ وزیراعظم مودی کے کپڑے پرہوئے اخراجات کی ادائیگی سرکاری پیسہ سے نہیں کر رہے ہیں، مودی اپنی تنخواہ سے اپنے کپڑوں پر خرچ کرتے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

آپ کے20ممبران اسمبلی کی رکنیت منسوخ، الیکشن کمیشن نے دیا فیصلہ

الیکشن کمیشن نے منفعت بخش عہدہ معاملے میں دہلی میں حکمران عام آدمی پارٹی کے 20ممبران اسمبلی کو نااہل قرار دیا ہے۔کمیشن اپنی رپورٹ صدر رام ناتھ کووند کو بھیجے گا۔اب سب کی نظریں صدر لگی ہوئی ہیں، جو اس معاملے پر حتمی مہر لگائیں گے۔

پروین توگڑیا کاوشوہندوپریشد سے کوئی تعلق نہیں، سنت سمیلن میں رام مندرپر نہیں آئے گی تجویز: سوامی چنمیانند

وی ایچ پی کے صدر پروین توگڑیا کی طرف سے حکومت پر ان کے خلاف سازش کرنے اور انکاؤنٹر کر نے کی سازش جیسے الزامات کے بعد نہ صرف آر ایس ایس بلکہ وی ایچ پی نے بھی پورے تنازعہ سے خود کو الگ کر لیاہے

مہاتما گاندھی کو’’راشٹریہ پتا‘‘ کہناغلط،شنکرآچاریہ سروپانند کی زبان بے لگام 

اپنے متنازع بیانات کے لئے جانے جانے والے شنکرآچاریہ سوامی سوروپانندنے پھر ایک بار متنازعہ بیان دے کر ایک تنازعہ کو جنم دے دیا ہے۔انہوں نے مہاتما گاندھی کو بابائے قوم کہے جانے پراعتراض کیا ہے۔

حج کا معاملہ مسلمانوں پر چھوڑ دیا جائے،صرف حج سبسڈی روکناامتیازی سلوک،امرناتھ اورکیلاش میں بھی دی جانے والی سبسڈی ختم کی جائے: پاپولر فرنٹ آف انڈیا

مرکزی حکومت کے ذریعہ حج سبسڈی ختم کیے جانے پر، پاپولر فرنٹ آف انڈیا کی سینٹرل سیکریٹریٹ نے ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کو چاہئے کہ وہ مذہبی معاملات کو ان کے ماننے والوں پر چھوڑ دے اور ملک و بیرون ملک مختلف مذہبی اعمال پر دی جانے والی تمام مراعات کو ختم کرے۔