معروف عالم دین اور تبلیغی جماعت کے اہم ذمہ دارمولانا غزالی خطیب ندوی انتقال کرگئے

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 9th June 2018, 12:43 AM | ساحلی خبریں | ملکی خبریں |

بھٹکل 8/جون (ایس او نیوز) معروف عالم دین و داعی اور دہلی نظام الدین تبلیغی مرکز کے اہم ذمہ دار مولانا غزالی خطیب ندوی آج   جمعہ 23 رمضان المبارک کی صبح فجر کی نماز سے قبل بھٹکل اپنی رہائش گاہ میں انتقال کرگئے۔ انا للہ و اناالیہ راجعون۔ اُن کی عمر 74 سال تھی۔

ذرائع سے ملی اطلاع کے مطابق قریب دیڑھ ماہ قبل  مولانا دہلی کے نظام الدین مرکز سے بھٹکل آئے تھے، انہیں ایک پیر میں تکلیف تھی،  مگر وہ بالکل صحت مندتھے۔رمضان کی 23 ویں رات  انہوں نے مکمل  عبادت میں گذاری، پھر سحری کرکے فجر کی اذان کے بعد نماز کے لئے مسجد جانے کی تیاری میں تھے کہ ملک الموت  اللہ کا بلاوا لے کر پہنچ گیا۔ بتایا گیا ہے کہ مولانا  الھم اغفر لی کا ورد کرتے کرتے  اس دنیا سے چل بسے۔

حادثے کی اطلاع ملتے ہی کثیر تعداد میں لوگ موگلی ہونڈا  میں واقع ان کے مکان پر جمع ہونا شروع ہوگئے۔  بعد نماز عصر بھٹکل جامع مسجد میں  نماز جنازہ ادا کی گئی اور پرانے قبرستان میں ان کی تدفین عمل میں آئی۔

 بھٹکل کے  معروف عالم دین اور بھٹکل کے سابق چیف قاضی  مرحوم مولانا ابوبکر خطیبی عرف اوپا خلفو   کے چشم چراغ  مولانا غزالی کی پیدائش سن 1944 میں ہوئی ، انہوں نے اسلامیہ اینگلو اُردو ہائی اسکول سے میٹرک مکمل کیا پھر جامعہ اسلامیہ  میں داخلہ لیا، وہاں سے وہ لکھنو ندوۃ العلماء سے  عالمیت نیز فضیلت  کی ڈگری حاصل کی، پھر وہ اسلام کی دعوت کے کام میں  تبلیغی جماعت سے جڑ گئے۔  وہ قریب 45 سالوں تک نظام الدین مرکز میں رہے اور اپنی پوری زندگی  دعوت و تبلیغ میں لگائی۔  اُنہیں اردو، عربی اور انگریزی پر عبور حاصل تھا، اس بنا پر وہ  مرکز نظام الدین  میں اکثر عربوں کی جماعتوں کے بیانات کا اُردو ترجمہ پیش کرتے تھے۔ مرحوم انگریزی تقریروں کا بھی اُردو میں ترجمہ  پیش کرتے تھے۔

خیال رہے کہ ان کے والد  مولانا ابوبکر خطیبی کا انتقال  بھی رمضان کی مبارک ساعتوں میں سن 1974 میں ہوا تھا۔ مولانا کو سات فرزند اور دو بیٹیاں ہیں اور ان کے گھرانے کے چشم و چراغ علمِ دین سے آراستہ ہیں۔ مولانا غزالی کے سات فرزندان میں چھ عالم دین کے ساتھ حافظ قران ہیں تو   ایک فرزند عالم دین ہے، جبکہ ان کی دونوں بیٹیاں بھی عالمہ و حافظہ ہیں، یہاں تک  کہ  ان  کے دونوں داماد بھی حافظ قران ہیں۔

مولانا کے انتقال پر پورے بھٹکل میں رنج و غم کی فضا چھاگئی۔ اللہ کی رحمت بھی بارش کی شکل میں وقفے سے وقفے سے جاری ہوگئی۔ سوشیل میڈیا کے ذریعے ملی اطلاع کے مطابق  مولانا کے انتقال پر بھٹکل کے حضرات نے گلف کے مختلف شہروں کی مسجدوں میں  نماز غائبانہ کا اہتمام کیا تھا۔

مولانا کے انتقال پر بھٹکل کی مختلف جماعتوں کے ذمہ داران نے گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے اہل خانہ  کے ساتھ تعزیت کی ہیں اور مولانا کے حق میں مغفرت کی دعائیں کی ہیں۔  مولانا کے انتقال کی اطلاع ملتے ہی  مجلس اصلاح و تنظیم بھٹکل کے  جنرل سکریٹری محی الدین الطاف کھروری سمیت  دیگر ذمہ داران فجر کی نماز کے فوری بعد ان کے مکان پر پہنچ گئے تھے اور گھروالوں کے ساتھ تعزیت کی۔ الطاف کھروری نے بتایا کہ مولانا نے پوری زندگی  دین کی خدمت کے لئے  وقف کردی تھی، آخری وقت میں بھی وہ اللہ کی عبادت کرتے ہوئے  اور اپنے لئے مغفرت کی دُعا طلب کرتے ہوئے  اپنے خالق حقیقی کے پاس جا پہنچے۔ اللہ ان کی خدمات کو قبول فرمائے اور جنت الفردوس میں اعلیٰ مقام عطا فرمائے۔ آگے بتایا کہ مولانا نہایت عبادت گذار اور اللہ ولی انسان تھے، انہوں نے ہمیشہ خاموش خدمت کی اور کسی بھی عہدہ کو قبول نہیں کیا۔ دبئی سے قائد قوم جناب ایس ایم سید خلیل الرحمن نے بھی ان کی موت پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا  اور کہا کہ مرحوم نہایت صاف گو سیدھے سادے متقی پاکیزہ اوصاف  اورعبادت گزار انسان تھے،  ان کی اچانک رحلت سے ایک اور چراغ علم و عمل اور رشد و ہدایت گل ہو گیا ہے انہوں نے اپنی پوری زندگی اسلام کی سر بلندی اور درس تدریس میں گذاری ،ان کی خدمات کو کبھی بھی فراموش نہیں کیا جا سکتا ۔ اللہ تعالیٰ ان کی بال بال مغفرت فرمائے اور ان کے درجات کو بلند فرمائیں۔ اٰمین

ایک نظر اس پر بھی

دبئی کے قریب عجمان میں شروع ہورہا ہے نوائط پرئمیر لیگ کا شاندار کرکٹ ٹورنامنٹ؛ پہلے نام درج کرنے والی چھ ٹیموں کو ملے گا ٹورنامنٹ میں موقع

متحدہ عرب امارات کے شہر عجمان میں جنوری 2019 کو نوائط پرئمیر لیگ (این پی ایل) کاشاندار کرکٹ ٹورنامنٹ منعقد کیا جارہا ہے ، جس  میں دبئی یا متحدہ عرب امارات کے شہروں میں مقیم  بھٹکل، شرالی، مرڈیشور اور منکی کے کھلاڑی اپنے جوہر دکھلا سکیں گے۔ اس بات کی اطلاع  این پی ایل کے کنوینر ...

ہوناور:پریش میستاکی پراسرار موت کے معاملے میں نیا خلاصہ۔ واردات سے پہلے بند کردیا گیا تھا سی سی کیمرہ !

ہوناور میں فرقہ وارانہ کشیدگی کے دوران پریش میستانامی نوجوان کی پراسرار موت کو سنگھ پریوار کی طرف سے فرقہ وارانہ قتل قرار دیا جارہا تھا۔لیکن سی بی آئی کی تحقیقات دوران اس معاملے نے اب ایک نیا رخ لے لیا ہے۔

بھٹکل میں تنظیم میڈیا ورکشاپ کا شاندار اختتامی اجلاس۔ میڈیا کی معتبر شخصیات اور علماء کا خطاب۔ ورکشاپ کے شرکاء کو انعامات اور اسناد کی تقسیم

صحافت کے پیشے میں دلچسپی رکھنے والوں کے لئے مجلس اصلاح وتنظیم کی میڈیا واچ کمیٹی کی نگرانی میں منعقد ہونے والے ہونے پانچ روزہ ورکشاپ کے اختتام پر ایک شاندار اختتامی اجلاس بندر روڈ سیکنڈ کراس پر واقع المدینہ ہال میں منعقد ہوا۔

ملک کے مفادمیں متحد رہنے کانگریس جے ڈی ایس قائدین کا فیصلہ،14سال بعد دیوے گوڈا اور سدرامیا کی ایک ساتھ اخباری کانفرنس

آنے والے لوک سبھا انتخابات میں سیکولر سیاسی طاقتوں کو مضبوط کرنے کی غیر معمولی پہل کرتے ہوئے آج کانگریس اور جے ڈی ایس قیادت نے اتحاد کا غیر معمولی پیغام دیا۔

حکومت یونیورسیٹیوں میں اساتذہ کی اظہاررائے کی آزادی پربندش نہیں لگائے گی

فروغ انسانی وسائل کے مرکزی وزیرپرکاش جاویڈیکر نے دہلی یونیورسٹی میں لازمی خدمات فراہمی ایکٹ ( ا یسما) لگانے کے الزامات پر صفائی دیتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت کا ارادہ اساتذہ کے اظہار رائے کی آزادی کو روکنے کا نہیں ہے۔