معروف عالم دین اور تبلیغی جماعت کے اہم ذمہ دارمولانا غزالی خطیب ندوی انتقال کرگئے

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 9th June 2018, 12:43 AM | ساحلی خبریں | ملکی خبریں |

بھٹکل 8/جون (ایس او نیوز) معروف عالم دین و داعی اور دہلی نظام الدین تبلیغی مرکز کے اہم ذمہ دار مولانا غزالی خطیب ندوی آج   جمعہ 23 رمضان المبارک کی صبح فجر کی نماز سے قبل بھٹکل اپنی رہائش گاہ میں انتقال کرگئے۔ انا للہ و اناالیہ راجعون۔ اُن کی عمر 74 سال تھی۔

ذرائع سے ملی اطلاع کے مطابق قریب دیڑھ ماہ قبل  مولانا دہلی کے نظام الدین مرکز سے بھٹکل آئے تھے، انہیں ایک پیر میں تکلیف تھی،  مگر وہ بالکل صحت مندتھے۔رمضان کی 23 ویں رات  انہوں نے مکمل  عبادت میں گذاری، پھر سحری کرکے فجر کی اذان کے بعد نماز کے لئے مسجد جانے کی تیاری میں تھے کہ ملک الموت  اللہ کا بلاوا لے کر پہنچ گیا۔ بتایا گیا ہے کہ مولانا  الھم اغفر لی کا ورد کرتے کرتے  اس دنیا سے چل بسے۔

حادثے کی اطلاع ملتے ہی کثیر تعداد میں لوگ موگلی ہونڈا  میں واقع ان کے مکان پر جمع ہونا شروع ہوگئے۔  بعد نماز عصر بھٹکل جامع مسجد میں  نماز جنازہ ادا کی گئی اور پرانے قبرستان میں ان کی تدفین عمل میں آئی۔

 بھٹکل کے  معروف عالم دین اور بھٹکل کے سابق چیف قاضی  مرحوم مولانا ابوبکر خطیبی عرف اوپا خلفو   کے چشم چراغ  مولانا غزالی کی پیدائش سن 1944 میں ہوئی ، انہوں نے اسلامیہ اینگلو اُردو ہائی اسکول سے میٹرک مکمل کیا پھر جامعہ اسلامیہ  میں داخلہ لیا، وہاں سے وہ لکھنو ندوۃ العلماء سے  عالمیت نیز فضیلت  کی ڈگری حاصل کی، پھر وہ اسلام کی دعوت کے کام میں  تبلیغی جماعت سے جڑ گئے۔  وہ قریب 45 سالوں تک نظام الدین مرکز میں رہے اور اپنی پوری زندگی  دعوت و تبلیغ میں لگائی۔  اُنہیں اردو، عربی اور انگریزی پر عبور حاصل تھا، اس بنا پر وہ  مرکز نظام الدین  میں اکثر عربوں کی جماعتوں کے بیانات کا اُردو ترجمہ پیش کرتے تھے۔ مرحوم انگریزی تقریروں کا بھی اُردو میں ترجمہ  پیش کرتے تھے۔

خیال رہے کہ ان کے والد  مولانا ابوبکر خطیبی کا انتقال  بھی رمضان کی مبارک ساعتوں میں سن 1974 میں ہوا تھا۔ مولانا کو سات فرزند اور دو بیٹیاں ہیں اور ان کے گھرانے کے چشم و چراغ علمِ دین سے آراستہ ہیں۔ مولانا غزالی کے سات فرزندان میں چھ عالم دین کے ساتھ حافظ قران ہیں تو   ایک فرزند عالم دین ہے، جبکہ ان کی دونوں بیٹیاں بھی عالمہ و حافظہ ہیں، یہاں تک  کہ  ان  کے دونوں داماد بھی حافظ قران ہیں۔

مولانا کے انتقال پر پورے بھٹکل میں رنج و غم کی فضا چھاگئی۔ اللہ کی رحمت بھی بارش کی شکل میں وقفے سے وقفے سے جاری ہوگئی۔ سوشیل میڈیا کے ذریعے ملی اطلاع کے مطابق  مولانا کے انتقال پر بھٹکل کے حضرات نے گلف کے مختلف شہروں کی مسجدوں میں  نماز غائبانہ کا اہتمام کیا تھا۔

مولانا کے انتقال پر بھٹکل کی مختلف جماعتوں کے ذمہ داران نے گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے اہل خانہ  کے ساتھ تعزیت کی ہیں اور مولانا کے حق میں مغفرت کی دعائیں کی ہیں۔  مولانا کے انتقال کی اطلاع ملتے ہی  مجلس اصلاح و تنظیم بھٹکل کے  جنرل سکریٹری محی الدین الطاف کھروری سمیت  دیگر ذمہ داران فجر کی نماز کے فوری بعد ان کے مکان پر پہنچ گئے تھے اور گھروالوں کے ساتھ تعزیت کی۔ الطاف کھروری نے بتایا کہ مولانا نے پوری زندگی  دین کی خدمت کے لئے  وقف کردی تھی، آخری وقت میں بھی وہ اللہ کی عبادت کرتے ہوئے  اور اپنے لئے مغفرت کی دُعا طلب کرتے ہوئے  اپنے خالق حقیقی کے پاس جا پہنچے۔ اللہ ان کی خدمات کو قبول فرمائے اور جنت الفردوس میں اعلیٰ مقام عطا فرمائے۔ آگے بتایا کہ مولانا نہایت عبادت گذار اور اللہ ولی انسان تھے، انہوں نے ہمیشہ خاموش خدمت کی اور کسی بھی عہدہ کو قبول نہیں کیا۔ دبئی سے قائد قوم جناب ایس ایم سید خلیل الرحمن نے بھی ان کی موت پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا  اور کہا کہ مرحوم نہایت صاف گو سیدھے سادے متقی پاکیزہ اوصاف  اورعبادت گزار انسان تھے،  ان کی اچانک رحلت سے ایک اور چراغ علم و عمل اور رشد و ہدایت گل ہو گیا ہے انہوں نے اپنی پوری زندگی اسلام کی سر بلندی اور درس تدریس میں گذاری ،ان کی خدمات کو کبھی بھی فراموش نہیں کیا جا سکتا ۔ اللہ تعالیٰ ان کی بال بال مغفرت فرمائے اور ان کے درجات کو بلند فرمائیں۔ اٰمین

ایک نظر اس پر بھی

کاروار:انکولہ ۔ہبلی ریلوے لائن کی سدراہ بنے ماحولیاتی این جی اوز کو ملنے والی مالی امداد کی جانچ کریں : رکن اسمبلی روپالی نائک کامرکزی ریلوے وزیر سے مطالبہ

ریاست کے ساحلی علاقے سے شمالی کرناٹک  کو جوڑنے والی ’قسمت کی ریکھا‘ انکولہ ۔ ہبلی ریلوے لائن کی تعمیرمیں جو ماحولیاتی اداروں ، این جی اوزاور ماہرین سدراہ بنے ہوئے ہیں دراصل یہ تمام  بیرونی ممالک کی  کروڑوں دولت کے تعاون سے بےبنیاد چیخ وپکار کررہے ہیں کاروار انکولہ کی رکن ...

کاروار میں انکولہ ۔ہبلی ریلوے لائن منصوبےکو جاری کرنےعوامی احتجاج : قومی شاہراہ بند کرنے پر احتجاجی پولس کی تحویل میں

انکولہ۔ ہبلی ریلوے لائن منصوبہ، سرحد علاقہ کاروار میں صنعتوں کا قیام سمیت مختلف مانگوں کو لے کر لندن برج پر قومی شاہراہ کو بند کرتے ہوئے احتجاج کی تیاری میں مصروف کنڑا چلولی واٹال پارٹی کے واٹال ناگراج سمیت 21جہدکاروں کو پولس نے گرفتار کرنے کے بعد رہاکردیا۔

لوک سبھاانتخابات کی تیاری میں مصروف الیکشن کمشن :اتراکنڑا  ضلع میں 11.40 لاکھ رائے دہندگان : 14ہزار ووٹرس آؤٹ تو 12ہزار ووٹرس اِن

الیکشن کمیشن  آئندہ ہونےو الے لوک سبھا انتخابات کی تیاری میں مصروف ہے۔اندراج و اخراج   اور ترمیم کے بعد تشکیل دی گئی  رائے دہندگان کی  فہرست کے مطابق ضلع کے 6ودھان سبھا حلقہ جات میں کل 11،40،316 ووٹر ہیں۔ چونکہ انتخابات کے قریب تک ووٹروں کے اندراج کے لئے موقع دیا گیا ہے تو رائے ...

شرالی میں قومی شاہراہ کی توسیع کو لےکر ہزاروں عوام  شاہراہ روک کیا  احتجاج : مجموعی استعفیٰ کا انتباہ اور الیکشن بائیکاٹ کا اعلان

تعلقہ کے شرالی میں دن بدن قومی شاہراہ کی توسیع کو لےکر معاملہ گرم ہوتا جارہاہے۔ شرالی میں قومی شاہراہ کی توسیع 45میٹر سے کم کرکے 30میٹر کئے جانےکی مخالفت کرتے ہوئے جمعرات کو ہزاروں لوگو ں نے قومی شاہراہ روک کر سخت احتجاج درج کیا۔ اس دوران عوامی مانگوں کو منظوری نہیں دی گئی تو ...

مالیگاؤں 2008ء بم دھماکہ معاملہ، بم دھماکوں میں زخمی ہونے والے دو افراد نے گواہی دی، دفاعی وکلاء عدالت سے غیر حاضر ، جرح اگلے ہفتہ متوقع

مالیگاؤں ۲۰۰۸ء بم دھماکہ معاملے میں سماعت روز بہ روز جاری ہے ، آج اس معاملے میں بم دھماکوں میں زخمی ہونے والے دو افراد کی گواہی عمل میں آئی

مثبت فکر اورتوانائی سے ملک کی ترقی ہوتی ہے:ارون جیٹلی 

مودی حکومت کے ناقدین کو بات بات پر احتجاج کرنے والا بتاتے ہوئے وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے جمعرات کو ان پر جھوٹ گھڑنے اور ایک منتخب حکومت کو کمزور کرکے جمہوریت کو برباد کرنے کا الزام لگایا۔ طبی معائنہ کے لیے امریکہ دورہ پر گئے ارون جیٹلی نے ایک فیس بک پوسٹ میں کہا کہ اظہار رائے کی ...

عد لیہ نے مہاراشٹر میں ڈانس بار پر پابندی لگانے والی کئی تجاویزمستردکیں 

سپریم کورٹ نے مہاراشٹر میں ڈانس بار کے لئے لائسنس اور اس کاروبار پر پابندی لگانے والے کچھ تجاویز جمعرات کومنسوخ کردیئے۔ جسٹس اے کے سیکری کی صدارت والے بنچ نے مہاراشٹر کے ہوٹل، ریستوران اور بار ہاؤس میں فحش رقص پر پابندی اورعورتوں کے وقار کی حفاظت سے متعلق قانون 2016 کے کچھ دفعات ...