اعلیٰ ذات کو ریزرویشن انتخابی شعبدہ بازی: کرناٹک کے سابق وزیراعلیٰ سدرامیا کا بیان

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 10th January 2019, 11:32 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو۔9؍جنوری(ایس او  نیوز) سابق وزیر اعلیٰ سدرامیا نے مرکزی حکومت کی طرف سے اعلیٰ ذات سے وابستہ دس فیصد لوگوں کو ریزرویشن دینے کے فیصلے کو انتخابی حکمت عملی سے تعبیر کیا۔ اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ اعلیٰ ذات کے غریب طبقے سے وابستہ دس فیصد لوگوں کو ریزرویشن دینے کے لئے پارلیمنٹ میں قانون لانے کی کسی نے مخالفت نہیں کی ، لیکن بی جے پی اس مرحلے میں یہ قانون اس لئے لارہی ہے کہ لوک سبھا انتخابات سے قبل انتخابی سیاسی شعبدہ بازی کرے۔

انہوں نے کہاکہ انتخابات میں اس طبقے کے ووٹروں کو رجھانے کے مقصد سے یہ قانون پارلیمان میں پیش کیاگیا ہے، اس میں حکومت اگر دیانتدار ہوتی تو بہت پہلے ہی قانون کو منظور کرانے کی کوشش کرتی۔ سرکاری بورڈز اور کارپوریشنوں کے لئے چیرمینوں کے تقرر پر وزیر برائے تعمیرات عامہ ایچ ڈی ریونا کے بیان پر ناراض ہوتے ہوئے سدرامیا نے کہاکہ اگلے ہفتے ہونے والی رابطہ کمیٹی میٹنگ میں ریونا کا یہ بیان زیر بحث ضرورآئے گا۔ مہنگائی اور دیگر مسائل کو لے کر دوروزہ بھارت بند کے دوسرے دن ریاست بھر میں زبردست ردعمل کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے سدرامیا نے کہاکہ بی جے پی حکومت کے خلاف عوام نے اپنے شدید غم وغصے کا اظہار کیا ہے۔ خاص طور پر آج دوسرے دن ریاست بھر میں بند جس طرح موثر رہا اس سے یہ پیغام مرکزی حکومت کو جاچکا ہے کہ عوام اب اس سے ناراض ہیں۔ سوائے بی جے پی کی حمایت والی چند تنظیموں کے ملک بھر کی تمام مزدور یونینوں ، تاجروں اور عوام نے بند کی تائید کی ہے۔ انہوں نے کہاکہ جن مطالبات کو لے کر بند کیاگیا ہے وہ اپنی جگہ درست ہیں ، مرکزی حکومت پچھلے ساڑھے چار سال کے دوران ان مطالبوں پر توجہ دینے میں پوری طرح ناکام رہی ہے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک سدھ گنگا مٹھ کے سوامی شیو کمارکا 111 سال کی عمر میں انتقال؛ ریاست بھر میں ماتم؛ کل منگل کو اسکولوں میں چھٹی

ریاست کرناٹک کے معروف سوامی اور سدھ گنگا پیٹھ کے سربراہ 111سالہ شیو کمار سوامی جی آج پیر کو  انتقال کرگئے۔ ان کے انتقال پر پوری ریاست میں ماتم چھا گیا اور  وزیر اعلی ایچ ڈی کمارسوامی نے کل منگل کو  سبھی اسکولوں اور کالجوں میں چھٹی  کا اعلان کیا۔

ہم بے قصور تھے، مگر وہ ہماری زبان سمجھنے سے قاصر تھے، ایرانی حراست سے رہا ہونے کے بعد ماہی گیروں کا بھٹکل میں والہانہ استقبال

دبئی سمندر میں ماہی گیر ی کے دوران ایرانی پولیس کی تحویل میں رہنے کے بعد واپس لوٹنے والے کمٹہ اور بھٹکل کے ماہی گیروں کا کہنا ہے کہ ان کے لئے سب سے بڑا مسئلہ زبان کا تھا۔ ایرانی افسران ان کی زبان سمجھ نہیں رہے تھے ۔ اور ایرانی سمندری سرحد پار نہ کرنے کا یقین دلانے کے باوجود وہ لوگ ...

کاروار: بیچ سمندر میں کشتی اُلٹ گئی؛ دس سے زائد ہلاک ؛ راحت اور بچاو کا کام جاری، 25 سے زائد لوگ تھے کشتی پر سوار

کاروار میں کورم گڑھ جاترا کے لئے نکلی ایک کشتی بیچ سمندر میں ڈوب جانے سے کشتی پر سوار چھ لوگوں کی موت واقع ہونے کی اطلاع موصول ہوئی ہے، بتایا گیا ہے کہ مرنے والوں کی تعداد میں اضافہ ہونے کا خدشہ ہے کیونکہ کشتی پر موجود 25 سے زائد لوگوں میں دو چار لوگوں کو ہی بچانے کی خبر ملی  ہے، ...

ناگور جمعہ مسجد میں خنزیر کے اجزاء پھینکے جانے کا معاملہ؛ بیندور پولس نے کیا 5 ملزمین کو گرفتار

ایک ہفتے قبل رات کے اندھیرے میں ناگور کی نور جمعہ مسجد کے کمپاؤنڈ میں شرپسندوں نے خنزیر کے کٹے ہوئے اجزاء پھینک کر فرقہ وارانہ کشیدگی پیدا کرنے کی کوشش کی تھی ، اس سلسلے میں بیندور پولیس نے 5ملزمین کو گرفتار کرلیا ہے۔

ہائی کمان کہے تو وزارت چھوڑ نے کیلئے بھی تیار : ڈی کے شیو کمار

ریاست میں سیاسی گہما گہمی کا فی تیز ہونے لگی ہے ۔ ایک طرف جہاں کانگریس اور جنتادل( سکیولر) اپنی مخلوط حکومت کو بچانے میں لگے ہیں وہیں بھارتیہ جنتا پارٹی ( بی جے پی ) نے آپریشن کنول کے ذریعہ دیگر پارٹیوں کے اراکین اسمبلی کو خریدکر برسر اقتدار آنے کے حربے جاری رکھے ہیں۔