اعلیٰ ذات کو ریزرویشن انتخابی شعبدہ بازی: کرناٹک کے سابق وزیراعلیٰ سدرامیا کا بیان

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 10th January 2019, 11:32 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو۔9؍جنوری(ایس او  نیوز) سابق وزیر اعلیٰ سدرامیا نے مرکزی حکومت کی طرف سے اعلیٰ ذات سے وابستہ دس فیصد لوگوں کو ریزرویشن دینے کے فیصلے کو انتخابی حکمت عملی سے تعبیر کیا۔ اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ اعلیٰ ذات کے غریب طبقے سے وابستہ دس فیصد لوگوں کو ریزرویشن دینے کے لئے پارلیمنٹ میں قانون لانے کی کسی نے مخالفت نہیں کی ، لیکن بی جے پی اس مرحلے میں یہ قانون اس لئے لارہی ہے کہ لوک سبھا انتخابات سے قبل انتخابی سیاسی شعبدہ بازی کرے۔

انہوں نے کہاکہ انتخابات میں اس طبقے کے ووٹروں کو رجھانے کے مقصد سے یہ قانون پارلیمان میں پیش کیاگیا ہے، اس میں حکومت اگر دیانتدار ہوتی تو بہت پہلے ہی قانون کو منظور کرانے کی کوشش کرتی۔ سرکاری بورڈز اور کارپوریشنوں کے لئے چیرمینوں کے تقرر پر وزیر برائے تعمیرات عامہ ایچ ڈی ریونا کے بیان پر ناراض ہوتے ہوئے سدرامیا نے کہاکہ اگلے ہفتے ہونے والی رابطہ کمیٹی میٹنگ میں ریونا کا یہ بیان زیر بحث ضرورآئے گا۔ مہنگائی اور دیگر مسائل کو لے کر دوروزہ بھارت بند کے دوسرے دن ریاست بھر میں زبردست ردعمل کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے سدرامیا نے کہاکہ بی جے پی حکومت کے خلاف عوام نے اپنے شدید غم وغصے کا اظہار کیا ہے۔ خاص طور پر آج دوسرے دن ریاست بھر میں بند جس طرح موثر رہا اس سے یہ پیغام مرکزی حکومت کو جاچکا ہے کہ عوام اب اس سے ناراض ہیں۔ سوائے بی جے پی کی حمایت والی چند تنظیموں کے ملک بھر کی تمام مزدور یونینوں ، تاجروں اور عوام نے بند کی تائید کی ہے۔ انہوں نے کہاکہ جن مطالبات کو لے کر بند کیاگیا ہے وہ اپنی جگہ درست ہیں ، مرکزی حکومت پچھلے ساڑھے چار سال کے دوران ان مطالبوں پر توجہ دینے میں پوری طرح ناکام رہی ہے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

ہندو لیڈر سورج نائک سونی نے اننت کمار ہیگڈے کو کہا،مودی حکومت کا داغدار وزیر؛ اُس کی مخالفت میں کام کرنے کے لئے نوجوانوں کی ٹیم تیار

ضلع شمالی کینرا میں ایک نوجوان ہندو لیڈر کے طور پر اپنی پہچان رکھنے والے کمٹہ کے سورج نائک سونی نے اخباری کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ’’ وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت میں چل رہی مرکزی حکومت میں اننت کمار ہیگڈے کی حیثیت ایک داغداروزیر کی ہے۔ اور ایسا لگتا ہے کہ انہیں ...

کرناٹک میں نوٹیفکیشن کے پہلے دن 6؍امیداروں کی نامزدگیاں داخل 

ریاست میں لوک سبھا الیکشن کے پہلے مرحلہ میں 14؍سیٹوں پر 18؍اپریل کو ہونے والے الیکشن کے لئے پرچہ نامزدگی کرنے کا آغاز ہوگیا ۔ پہلے دن چار حلقوں میں6؍ امیدواروں کی جانب سے 11؍ مزدگیاں داخل کئیں۔ یہ اطلاع ریاستی الیکشن افسر سنجیو کمار نے دی۔

بنگلورو کے تینوں پارلیمانی حلقوں میں ڈی سی پیز کی زیرنگرانی سخت بندوست لائسنس یافتہ 7؍ہزار ہتھیارات تحویل میں :پولیس کمشنر ٹی۔ سنیل کمار

پولیس کمشنر ٹی۔ سنیل کمار نے بتایا کہ بنگلور سنٹرل ،بنگلور نارتھ اور بنگلور ساؤتھ لوک سبھا حلقوں میں ہونے والے پارلیمانی انتخابات کے لئے ڈپٹی کمشنر آف پولیس (ڈی سی پی) سطح کے پولیس افسروں کی نگرانی میں پولیس کا سخت بندوبست کیاگیا ہے۔

کرناٹک میں انتخابات متحد ہوکر لڑنے کانگریس جے ڈی ایس کا فیصلہ 

اگلے لوک سبھا انتخابات کی تیاریوں کے درمیان کانگریس اور جے ڈی ایس کو مقامی سطحوں پر جن مشکلوں کاسامنا کرنا پڑرہاہے ان سے نپٹنے اور متحد ہوکر انتخابات لڑنے کے ساتھ ریاست میں زیادہ سے زیادہ سیٹوں پر کامیابی حاصل کرنے کے لیے آج کانگریس اور جے ڈی ایس قائدین کااعلیٰ سطحی اجلاس ہوا۔ ...

دھارواڑمیں زیر تعمیر عمارت گر گئی ، 2افراد ہلاک ، کئی زخمی 

دھارواڑ میں زیر تعمیر 5منزلہ عمارت بیٹھ گئی جس کے سبب 2افراد ہلاک اورکئی افراد کے زخمی ہونے کی اطلاع ملی ہے ۔ اس حادثے میں سلیم مکاندار (28)ہلاک ہوگئے ہیں ۔ دھارواڑ کے کمار میشورنگر میں زیر تعمیر کامپلکس گرگیا۔ ملبے کے نیچے دبے ہوئے افراد کو باہر نکالنے کے لیے محکمۂ پولیس ، فارئر ...