جرمنی سے افغان مہاجرین کا ایک اور گروہ ڈی پورٹ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 16th August 2018, 12:06 PM | عالمی خبریں |

برلن ،16اگست (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)جرمنی سے ڈی پورٹ کیے گئے چھیالیس مزید افغان مہاجرین وطن واپس پہنچ گئے ہیں۔ افغان حکام نے بتایا ہے کہ یہ مہاجرین ایک طیارے کے ذریعے بدھ کے دن کابل ایئر پورٹ پہنچے۔ افغان مہاجرین کی وطن واپسی پر تنقید بھی کی جا رہی ہے۔

ذرائع کے مطابق افغان مہاجرین کا ایک اور گروپ واپس پہنچ گیا ہے۔ جرمنی کابل حکومت کے ساتھ ایک ڈیل کے تحت ایسے مہاجرین کو افغانستان واپس روانہ کر رہا ہے، جن کی پناہ کی درخواستیں مسترد ہو چکی ہیں۔ ایسے مہاجرین اور تارکین وطن کی واپسی کا سلسلہ دسمبر سن دو ہزار سولہ میں شروع کیا گیا تھا۔ذرائع نے بتایا کہ بدھ کے دن کابل پہنچے والے مہاجرین کا یہ پندرہواں گروپ تھا۔ اب تک ایسے تقریبا ساڑھے تین سو افغان مہاجرین کو زبردستی واپس بھیجا جا چکا ہے، جو جرمنی میں پناہ کے حق دار قرار نہیں دیے گئے تھے۔

تاہم انسانی حقوق کے سرگرم کارکنان کا کہنا ہے کہ افغانستان میں امن کی صورتحال خستہ ہے اور ان حالات میں افغان مہاجرین کو وطن واپس روانہ کرنا مناسب نہیں ہے۔ طالبان کی باغی تحریک کے علاوہ اب افغانستان میں جہادی گروہ اسلامک اسٹیٹ بھی فعال ہو چکا ہے، جو گزشتہ کچھ عرصے سے کئی حملے کر چکا ہے۔افغانستان میں طالبان کے حالیہ حملوں کی وجہ سے امن کی صورتحال مزید خراب ہو گئی ہے۔ طالبان باغیوں نے صوبہ غزنی اور فریاب میں نئے حملے کیے ہیں، جن کے نتیجے میں درجنوں افراد ہلاک بھی ہوئے ہیں۔

اس صورتحال میں انسانی حقوق کے کارکنان نے مطالبہ کیا ہے کہ افغان مہاجرین کی واپسی کا عمل روک دیا جائے۔گزشتہ ماہ جرمنی سے واپس بھیجے جانے والے ایک افغان مہاجر نے خودکشی کر لی تھی۔ وہ آٹھ برس تک جرمنی میں مقیم رہا تھا تاہم قانونی تقاضے پورے نہ کرنے کی وجہ سے اسے زبردستی واپس افغانستان روانہ کر دیا گیا تھا۔ ایسے خدشات ہیں کہ جرمنی سے ملک بدر کیے جانے والے افغان مہاجرین ملک پہنچ کر نئی مشکلات میں گھر سکتے ہیں۔ناقدین کا کہنا ہیکہ افغانستان کا زیادہ تر حصہ اب بھی افراتفری اور تشدد کی زد میں ہے اور اس معاہدے کے نتیجے میں واپس بھیجے جانے والے افغان مہاجرین کی زندگیوں کو لاحق خطرات کا خیال نہیں رکھا گیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

چین پر امریکی محصولات کا سب سے بڑا پیکج نافذ العمل

امریکا میں چین سے درآمد کی جانے والی 200 ارب ڈالر کی اشیا پر 10% ٹیکس لاگو ہو گیا ہے۔ اس کے نتیجے میں عالمی نمو کے لیے خطرات میں اضافہ ہو گا۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ نے اس ٹیکس کو پیر کے روز عائد کیا۔ توقع ہے کہ چین فوری جواب کے طور پر امریکا سے ہر سال درآمد کی جانے والی 60 ...

ایران نواز ملیشیائیں اسرائیل کی سرحد سے محفوظ مسافت پر ہیں: روس

روس کی وزارت دفاع نے انکشاف کیا ہے کہ ایران کی ہمنوا فورسز اپنے بھاری ہتھیاروں کے ساتھ گولان کے پہاڑی علاقے سے اْتر کر شام کے اندر مشرق میں 140 کلومیٹر کی دْوری پر چلی گئی ہیں۔وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ تقریبا 1050 عسکری اہل کار مذکورہ علاقے سے انخلا کے بعد اتنی مسافت پر چلے گئے ہیں ...

ترکی اور روس ادلب میں غیر فوجی علاقے سے باہر رہنے والوں کا تعین کریں گے : اردوغان

ترکی کے صدر رجب طیب ایردوآن کا کہنا ہے کہ انقرہ اور ماسکو مل کر شام میں اْن شدت پسند گروپوں کا تعیّن کریں گے جن کو اِدلب صوبے میں غیر فوجی علاقے سے باہر کیا جائے گا۔روسی اخبار Kommersant میں تحریر کیے گئے اپنے ایک مضمون میں ایردوآن نے کہا کہ سمجھوتے کے تحت شامی اپوزیشن اْن علاقوں کو ...

سودی نظام کا خاتمہ آئینی تقاضا ہے، چیف جسٹس شریعت کورٹ

چیف جسٹس وفاقی شرعی عدالت شیخ نجم الحسن نے ریمارکس دیے ہیں کہ سود کا خاتمہ آئینی تقاضا ہے۔ وفاقی شرعی عدالت میں سود کے خاتمے کے لیے کیس کی سماعت ہوئی۔ چیف جسٹس شیخ نجم الحسن کی سربراہی میں پانچ رکنی لارجر بینچ نے کیس کی سماعت کی۔

عمران خان صرف غریبوں پر ٹیکس لگانے کے لیے اقتدارمیں آئے ہیں: خورشید شاہ

پیپلزپارٹی کے رہنما سید خورشید شاہ کا کہنا ہے کہ منی بجٹ دیکھ کر لگتا ہے کہ عمران خان صرف غریبوں پر ٹیکس لگانے کے لیے برسر اقتدار آئے ہیں۔ پارلیمنٹ ہاؤس میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے سابق اپوزیشن لیڈر سید خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ عمران خان نے عوام کوسہانے خواب دکھائے کہ دودھ کی ...